مندرجات کا رخ کریں

پاکستان میں قلعوں کی فہرست

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(پاکستان میں قلعے سے رجوع مکرر)

یہ پاکستان میں قلعوں کی فہرست (انگریزی: List of forts in Pakistan) ہے۔

نام مقام صوبہ/علاقہ تاریخ تکمیل مالک / بانی تصویر نوٹس
قلعہ شاردہ[1] شاردہ، وادی نیلم آزاد کشمیر رم
Throtchi Castle ضلع کوٹلی آزاد کشمیر 1460
قلعہ باغسر[2] Samahni Valley، بھمبر آزاد کشمیر مغلیہ سلطنت[3] [4]
قلعہ رام کوٹ میرپور،آزاد کشمیر آزاد کشمیر 16–17th Century گکھڑ
Karjai Fort
کھوئی رٹہ، ضلع کوٹلی آزاد کشمیر [5][6]
لال قلعہ، مظفرآباد مظفر آباد آزاد کشمیر 1646 سلطان مظفر خان [7]
قلعہ ژوب[8] ژوب بلوچستان 1867 برطانوی راج [9]
قلعہ قلات[10] قلات بلوچستان [11]
Punno Fort[12] تربت بلوچستان [13]Also known as "Meeri Kalaat"۔ مقام 26°2′2″N 63°00′46″E / 26.03389°N 63.01278°E / 26.03389; 63.01278
فورٹ منرو ڈیرہ غازی خان پنجاب 1800 John Munro, 9th of Teaninich Damis Lake, Fort Munro [14]
قلعہ سبی[15] سبی بلوچستان
بلتت قلعہ ہنزہ گلگت بلتستان [16]
قلعہ سکردو سکردو گلگت بلتستان
قلعہ التیت Altit, ہنزہ گلگت بلتستان 11th Century
قلعہ شگر شگر گلگت بلتستان 17th Century Amacha Dynasty [17]
تھوقسی کھر خپلو، ضلع گانچھے گلگت بلتستان [18]
Kalam Darchi Fort Misgar Valley, وادی گوجال گلگت بلتستان 1933 برطانوی راج [19][20]
قلعہ بالا حصار پشاور خیبر پختونخوا [21]
قلعہ چترال[22] چترال خیبر پختونخوا 35°51′19″N 71°47′30″E / 35.85528°N 71.79167°E / 35.85528; 71.79167
قلعہ مستوج[23] مستوج خیبر پختونخوا
Drosh Fort چترال خیبر پختونخوا
قلعہ چکدرہ[24] ضلع دیر زیریں خیبر پختونخوا 1586 مغلیہ سلطنت [25] 34°38′50″N 72°01′42″E / 34.64722°N 72.02833°E / 34.64722; 72.02833
درہ مالاکنڈ ضلع مالاکنڈ خیبر پختونخوا
ہینڈی سائیڈ فورٹ کوہاٹ خیبر پختونخوا برطانوی راج
قلعہ اٹک اٹک خورد، اٹک پنجاب 1583 مغل شہنشاہ جلال الدین اکبر [26]
قلعہ روہتاس جہلم پنجاب 16th Century شیر شاہ سوری
قلعہ دراوڑ بہاولپور پنجاب راجپوت
قلعہ لاہور لاہور پنجاب 1605 مغلیہ سلطنت کے حکمرانوں کی فہرست جلال الدین اکبر
Malot Fort چکوال پنجاب 1527 مغلیہ سلطنت کے حکمرانوں کی فہرست ظہیر الدین محمد بابر
نور محل بہاولپور پنجاب 1875 نواب صدیق محمد خان
صادق گڑھ محل[27] بہاولپور پنجاب

دربار محل[28] بہاولپور پنجاب
قلعہ پھروالہ راولپنڈی پنجاب 15th Century گکھڑ
قلعہ شیخوپورہ[29] شیخوپورہ پنجاب 1607 مغلیہ سلطنت کے حکمرانوں کی فہرست نورالدین جہانگیر
قلعہ ملتان ملتان پنجاب 800 – 1000 BC [30]
قلعہ منکیرہ منكيرہ، ضلع بھکر پنجاب 31°23′09″N 71°26′19″E / 31.385741°N 71.438642°E / 31.385741; 71.438642
قلعہ میر گڑھ میر گڑھ پنجاب 29°10′26″N 72°37′15″E / 29.17389°N 72.62083°E / 29.17389; 72.62083
Marot Fort مروٹ پنجاب [31] [32] 29°10′37″N 72°26′00″E / 29.17694°N 72.43333°E / 29.17694; 72.43333
فورٹ عباس فورٹ عباس، بہاولنگر ضلع پنجاب
Bavaani Fort ساہیوال پنجاب
قلعہ شجاع آباد شجاع آباد پنجاب
قلعہ نندنہ چکوال پنجاب [33][34]
ستگھرہ ضلع اوکاڑہ پنجاب [35] میرچاکر خان رند بلوچ (1468–1565)۔
کوٹ ڈیجی قلعہ کوٹ ڈیجی، ضلع خیرپور سندھ 1795 میر سہراب خان تالپور
رانی کوٹ ضلع جامشورو سندھ 17th Century [36] 26 کلومیٹر (85,000 فٹ)۔[37] Since 1993, it has been on the tentative list of یونیسکو عالمی ثقافتی ورثہ۔[38]
قلعہ نوکوٹ ضلع تھرپارکر سندھ
قلعہ نوکوٹ نوکوٹ سندھ 24°50′42″N 69°26′59″E / 24.84500°N 69.44972°E / 24.84500; 69.44972
Bhakar Fort سکھر سندھ 27°41′46″N 68°53′3″E / 27.69611°N 68.88417°E / 27.69611; 68.88417
قلعہ سیہون سیہون شریف سندھ
موہٹہ پیلس کراچی سندھ 1927 Shivratan Chandraratan Mohatta
فیض محل خیرپور سندھ 1798 تالپور
قاسم فورٹ کراچی سندھ 18th Century CE تالپور خاندان
پکا قلعہ حیدرآباد، سندھ سندھ 1768 Mian Ghulam Shah Kalhoro
قلعہ عمرکوٹ عمرکوٹ سندھ راجپوت
Kadiro Fort سندھ
قلعہ روات اسلام آباد ترلائی گکھڑ
قلعہ جمرود جمرود، ضلع خیبر قبائلی علاقہ جات 1836 ہری سنگھ نلوہ
قلعہ میران شاہ میران شاہ، ضلع شمالی وزیرستان قبائلی علاقہ جات تیموری سلطنت
قلعہ وانا وانا، ضلع جنوبی وزیرستان قبائلی علاقہ جات تیموری سلطنت
علی مسجد فورٹ ضلع خیبر قبائلی علاقہ جات 1837 دوست محمد خان
قلعہ اسلام گڑھ خان پور، ضلع رحیم یار خان پنجاب 1665 Raja Rawal Siri Bheem Singh [39]
موج گڑھ فورٹ
قلعہ بجنوٹ صحرائے چولستان، ضلع بہاولپور پنجاب، پاکستان
قلعہ دین گڑھ [40]
قلعہ خیر گڑھ
قلعہ نواں کوٹ
قلعہ جام گڑھ
قلعہ خان گڑھ

قلعہ خیر گڑھ

خان پور، ضلع رحیم یار خان پنجاب

قلعہ سیالکوٹسیالکوٹ شہر https://ur.wikipedia.org/wiki/%D9%82%D9%84%D8%B9%DB%81_%D8%B3%DB%8C%D8%A7%D9%84%DA%A9%D9%88%D9%B9?wprov=sfla1

مزید دیکھیے[ترمیم]

قلعہ کرجائی

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Sharda Castle, Azad Kashmir"۔ 12 اگست 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  2. "SAMAHNI VALLEY BHIMBER AZAD KASHMIR"۔ 16 فروری 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  3. Pakistan and the Karakoram Highway، صفحہ: 186 
  4. Currently closed to visitors, due to it being right beside لائن آف کنٹرول between Pakistan and India.
  5. Also spelled as Karjai Fort.
  6. Also spelled as Karjai Fort.
  7. Locally, it is known as the "Rutta Qila" or just "qila"۔
  8. "Quetta"۔ 04 مارچ 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  9. Also known as Sandeman Fort.
  10. "Kalat Fort"۔ 24 ستمبر 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  11. The town of Kalat is said to have been founded by and named Qalat-e Sewa (Sewa's Fort)، after Sewa, a legendary hero of the بلوچ قوم۔
  12. Pannu Fort Balochistan, Pakistan
  13. Also known as "Meeri Kalaat"۔
  14. Locally, it is known as the "South Punjab Murree"۔
  15. "The Historic Sibi Fort"۔ 02 نومبر 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  16. Since 2004, it has been on the UNESCO World Heritage Tentative list.
  17. The Shigar Fort means The Fort on Rock.
  18. It is locally known as Yabgo Khar، meaning "The fort on the roof"۔
  19. This fort was named after a naked saint and was built by British soldiers during 1932–33 to check the invasion and inflow of people from China and USSR through Wahkan corridor. It remained the abode of Gilgit Scouts.
  20. "Forts of Gilgit-Baltistan"۔ 23 مئی 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  21. also known as Qila Balahisar
  22. "Chitral Fort" 
  23. "آرکائیو کاپی"۔ 16 فروری 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  24. "Forts of Pashtunkhwa"۔ 16 فروری 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  25. The Mughals built a fort here in 1586, occupied in 1895 by the British, who built the present fort in 1896.
  26. Attock Fort was built at Attock Khurd during the reign of Akbar the Great from 1581 to 1583 under the supervision of Khawaja Shamsuddin Khawafi to protect the passage of the دریائے سندھ۔
  27. "My Bahawalpur" 
  28. "The Bahawalpur Photo Gallery"۔ 08 جون 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  29. "Sheikhupura Fort"۔ 02 مئی 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  30. The fort was destroyed by British forces.
  31. http://pk.worldmapz.com/photo/16204_fr.htm
  32. A ruined fortress town.
  33. Al-Beruni (973-1053 AD)، the celebrated traveler, historian, philosopher, mathematician, astronomer and scientist, came to the subcontinent in the period of Mehmood of Ghazni during the 11th century. It was at Nandana, that he measured the circumference of the earth.
  34. "Nandana Fort"۔ 24 اپریل 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2020 
  35. It is also believed to be the location of the tomb of Baloch king,
  36. Ranikot Fort is also known as The Great Wall of Sindh and is believed to be the world's largest قلعہ بندی with a circumference of approximately
  37. Christopher Ondaatje (May 1996)۔ Sindh revisited: a journey in the footsteps of Captain Sir Richard Burton : 1842–1849, the India years۔ HarperCollins Publishers۔ صفحہ: 265۔ ISBN 978-0-00-255436-7 
  38. "Ranikot Fort"۔ UNESCO۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 نومبر 2013 
  39. Shahid Iqbal (28 مارچ 2002)۔ "Islam Garh Fort out of sorts"۔ DAWN.COM (بزبان انگریزی)۔ RAHIM YAR KHAN۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 مئی 2017 
  40. "Documentry on Qila Deen Garh"۔ Radio Pakistan۔ 30 مئی 2016۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 مئی 2017  [مردہ ربط]