جہلم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Jhelum
جہلم
—  شہر  —
اوپر سے گھڑی وار: میجر اکرم شہید میموریل ، تحریک جہلم کتاب کور, کینٹ چوک ، سی ایم ایچ مسجد جہلم اور ضمیر جعفری کرکٹ اسٹیڈیم
عرفیت: شہرِ افواج
شہیدوں اور جنگجوؤں کی سرزمین
Jhelum جہلم is located in پاکستان
Jhelum
جہلم
پاکستان میں واقع
متناسقات: 32°56′00″N 73°44′00″E / 32.933333°N 73.733333°E / 32.933333; 73.733333[1]
ملک پاکستان
صوبہ پنجاب
Union Council 7 UC
حکومت
 - منتظم
رقبہ
 - کُل 22.5 کلومیٹر2 (8.7 میل2)
بلندی 250 میٹر (825 فٹ)
آبادی (1998)
 - کُل 145,847
 - تخمینہ (2010) 174,679
 کثافتِ آبادی خطاء تعبیری: غیر تسلیم شدہ محرفی تنقیط ","۔/کلومیٹر2 (خطاء تعبیری: غیر متوقع < مشتغل۔/میل2)
منطقۂ وقت PST (یو ٹی سی+5)
رمزِ ڈاک 49600
رمزِ شمارگیری 0544
ویب سائٹ [2]

پاکستان کے صوبہ پنجاب کا ایک اہم شہر ہے۔ جہلم دریائے جہلم اور جی ٹی روڈ کے سنگم پر واقع ہے۔ دریا کے دوسرى طرف سرائے عالمگير نام کا قصبہ واقع ہے جہاں ملٹری کالج جہلم واقع ہے۔ جی ٹی روڈ ان دونوں آبادیوں سے گذرتا ہے۔ جہلم کی اہم مقامات میں تاریخی قلعہ رہتاس اور منگلہ باندھ ہیں۔ یہاں ایک گولف کھیلنے کا میدان بھی ہے جہاں قومی گولف ٹورنامنٹ منعقد ہوتے ہیں۔ جہلم کے لوگ فوج کی ملازمت کو ترجیح دیتے ہیں۔

ضمیر جعفری کرنل محمد خان کی کتاب بجنگ آمد کے دیباچے میں لکھتے ہیں کہ اگر گھروں کے اوپر شعار لکھنے کا رواج ہوتا تو جہلم کے ہر گھر کے دروازے پر نضیری کا یہ مصرع ضرور کندہ ہوتا:

کسے کے کشتہ نہ شد از قبیلہ مانیست

(جس نے کسی کو قتل نہیں کیا اسکا میرے قبیلے سے کوئی تعلق نہیں)

جہلم برطانوی عہد میں[ترمیم]

1849 میں برطانوی فوج پنجاب میں داخل ہوئی اور یوں جہلم ان کی عمل داری میں آگیا۔ برطانوی دور میں جہلم میں وسیع پیمانے پر تبدیلیاں کیں گئی یہاں ایک بہت بڑی چھاونی تعمیر کی گئی۔ اس کے ساتھ ایک بہت بڑا ہسپتال بھی تھا۔ 1873 میں تاریخی ریلوے پل دریائے جہلم پر بنایا گیا، مختلف گرجا گھر بنائے گئے۔

قیام پاکستان کے بعد[ترمیم]

قیام پاکستان کے بعد شہر کی ہندو آبادی بھارت چلی گئی اور مہاجرین ان کی جگہ آباد ہوگئے۔

1971 کی جنگ جہلم اور ضلع جہلم کے لیے ایک دکھ بھرا واقع تھا۔ جہلم کے ہزاروں جوان مشرقی پاکستان میں شہید ہو گئے اور ہزاروں کی تعداد میں جنگی قیدی بھی یں میں شامل تھے۔ مارشل لاء حکمرانوں کے غیر جمہوری فیصلوں نے نا صرف مشرقی پاکستان کو ہم سے علیحدہ کر دیا بلکہ جہلم کو بھی غمگین اور اشک بار کر دیا۔ ماؤں کے بیٹے، بہنوں کے بھائی، بیویوں کے شوہر اور بچوں کے باپ ہمیشہ کےلیے ان سے دور ہو گئے۔ ان کے گھروں میں لگی ان کی تصویریں اور انکے عزیزوں کے دلوں میں انکی یادیں انھیں اداس کرتی رہیں گی۔

1992 میں دریائے جہلم میں آیا سیلاب بھی جہلم کے لوگوں کے لیے ایک المیہ تھا۔

آب و ہوا[ترمیم]

گرمیوں میں جہلم کا درجہ حرارت سخت گرم ہوتا ہے۔ سالانہ بارش کی مقدار 35 انچ سالانہ ہے۔

مزید[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ Location of Jhelum – Falling Rain Genomics. Fallingrain.com. Retrieved on 2012-04-27.
  2. ^ Jhelum Police official website. Jhelumpolice.gov.pk. Retrieved on 2012-04-27.
‘‘http://ur.wikipedia.org/w/index.php?title=جہلم&oldid=919380’’ مستعادہ منجانب