ضیائی تالیف

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
پتوں میں سبز رنگ کے رنگیزے (pigments) ہوتے ہیں جنہیں سبزینہ کہاجاتا ہے. یہ رنگیزے ضیائی تالیف کیلئے مرکزی حیثیت رکھتے ہیں. اِس رنگیزے کے بغیر ضیائی تالیف ممکن نہیں

ضیائ تالیف (انگریزی: Photosynthesis) وُہ عمل ہے جس میں کچھ جاندار سورج کی روشنی کی توانائی کو جذب کر کے اسے کیمیائی توانائی میں تبدیل کر دیتے ہیں. یہ عمل بڑے پیمانے پر پودوں کی پتیوں میں انجام پاتا ہے اور اس کے لیے پتیوں میں موجود سبز مادہ سبزینہ (chlorophyll) نہایت ضروری ہے۔ بودوں کے علاوہ کچھ جراثیموں اور الجی (algae) میں بھی یہ عمل ہوتا ہے۔ یہی وہ عمل ہے جو دنیا کی تقریبا ہر مخلوق کی زندگی کو سہارا دیتا ہے۔


ضیائی تالیف پانی کو توڑ کر آکسیجن کو آزاد کردیتا ہے، اور کاربن ڈائی آکسائیڈ کو شوگر میں جما دیتا ہے.

اِس عمل میں سورج کی توانائی، پانی اور کاربن ڈائی آکسائیڈ خرچ ہوتے ہیں اور شوگر ( گلوکوز، فروکٹوز) اور آکسیجن حاصل ہوتے ہیں۔



کیمیائی مساوات[ترمیم]

ضیائی تالیف کو کیمیائی مساوات (Chemical Equation) میں اس طرح ظاہر کرتے ہیں۔ اس دوران سبزینہ ایک عمل انگیز (catalyst) کا کام کرتا ہے۔

6 CO2(g) + 12 H2O(l) + photonsC6H12O6(aq) + 6 O2(g) + 6 H2O(l)


پانی + آکسیجن + گلوکوزروشنی کی توانائی + پانی + کاربن ڈائی آکسائڈ


مزید دیکھیۓ[ترمیم]