محمد یوسف لدھیانوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
محمد یوسف لدھیانوی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1932  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لدھیانہ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 18 مئی 2000 (67–68 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کراچی  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات قتل  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
صدر (2 )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
در اقرأ روضۃ الاطفال ٹرسٹ 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png مفتی ولی حسن ٹونکیؒ 
نفیس الحسینی نفیس رقم  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
عملی زندگی
تلمیذ خاص مفتی منیر احمد اخون  ویکی ڈیٹا پر (P802) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ عالم،  مصنف،  محدث  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ملازمت جامعہ العلوم الاسلامیہ بنوری ٹاؤن  ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تحریک عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت  ویکی ڈیٹا پر (P135) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

محمد یوسف لدھیانویؒ (1932ء تا 2000ء) ایک عالم، احراری رہنما، عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے نائب امیر اور ایک عظیم مذہبی اسکالر تھے- آپ عیسیٰ پور، لدھیانہ مشرقی پنجاب ، ہندوستان میں1932 میں پیدا ہوئے اور تقسیم کے بعد آپ پاکستان منتقل ہو گئے۔ آپ کو 18 مئی سنہ2000 میں کراچی میں اپنے دفتر جاتے ہوئے شہید کر دیا گیا۔ آپ نے اپنی زندگی دین اسلام کی سربلندی کے لیے وقف کر رکھی تھی- شہید اسلام نے بہت سے باطل فرقوں کا تعاقب کیا اور ان کی سرکوبی کے لیے اپنی زبان اور قلم کا استعمال کیا-آپ 100 سے زائد کتب کے مصنف بھی تھے-

آپ مولانا یوسف بنوریؒ کے قریبی ساتھیوں میں سے تھے، آپ ایک انتہائی قابل احترام عالم اور شفیق استاد کا درجہ رکھتے تھے اور آپ ایک عرصے تک دار العلوم بنوری ٹاؤن کراچی میں دینی تعلیم و تدریس سے وابستہ رہے، آپ ایک دہائی سے زیادہ عرصے تک روزنامہ جنگ سے بھی وابستہ رہے جہاں آپ کا مشہور سوال و جواب کا مضمون "آپ کے مسائل اور اُنکا حل"روزنامہ جنگ میں شائع ہوتا رہا، ان مضامین کے مجموعے بھی کتابی شکل میں شائع ہوچکے ہیں۔

تصانیف[ترمیم]

  1. "آپ کے مسائل اور ان کا حل"،
  2. "اختلاف امت اور صراط مستقیم"،
  3. "شیعہ سنی اختلافات اور صراط مستقیم
  4. "تحفہ قادیانیت"
  5. قادیانیت علامہ اقبالؒ کی نظر میں،
  6. قادیانیوں کو دعوت اسلام،
  7. ربوہ سے تل ابیب تک ،
  8. مرزا کا اقرار،
  9. مراقی نبی،
  10. مرزائی تعمیر مسجد ،
  11. سر ظفراللہ خان کو دعوت اسلام،
  12. قادیانی جنازہ،
  13. قادیانی مردہ،
  14. قادیانی کلمہ،
  15. قادیانی ذبیحہ،
  16. مرزا قادیانی اپنی تحریروں کے آئینہ میں ،
  17. غدار پاکستان ڈاکٹر عبد السلام قادیانی ،
  18. آپ کے مسائل اور ان کا حل (9۔جلدیں)
  19. رجم کی شرعی حیثیت ،
  20. اصلاحی مواعظ،
  21. حسنِ یوسف (3۔ جلدیں) ،
  22. رسائل یوسفی ،
  23. آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمودات