یوسف بنوری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

آپ کا پورا نام مع لقب علامہ سید یوسف بنوری جامعہ العلوم الاسلامیہ کے بانی اور جس جگہ انکا مدرسہ واقع ہے اس جگہ کا نام کا سرکاری طور پر اندراج آپ کے نام نامی پر علامہ بنوری ٹاؤن کیا گیا۔

ولادت[ترمیم]

آپ 4 ربیع الثانی 1326ھ بمطابق 1906ء کو پشاور کے قریب ایک گاؤں بنور میں پیدا ہوئے۔

تعلیم[ترمیم]

ابتدائی تعلیم اپنے والد اور ماموں سے ھاصل کی۔ اس کے بعد کابل کے ایک دینی مکتب میں عربی اور ثانوی تعلیم حاصل کی۔ 1945ء سے 1947ء تک آپ نے مختلف علوم و فنون اور حدیث کی تعلیم دار العلوم دیوبند میں حاصل کی۔

اساتذہ[ترمیم]

آپ کے اساتذہ میں عالم دین علامہ انور شاہ کشمیری اور علامہ شبیر احمد عثمانی جیسے اپنے دور کے نامور علما سے خصوصی استفادہ کا موقع ملا۔

تدریس[ترمیم]

فراغت کے بعد جامعہ اسلامیہ ڈابھیل میں صدر مدرس اور شیخ الحدیث کے منصب پر فائز ہوئے۔ پھر قیام پاکستان کے بعد دار العلوم ٹنڈوالٰہ یار میں شیخ التفسیر کے عہدے پر فائز ہوئے۔ 3سال بعد کراچی تشریف لائے اور ایک مدرسہ عربیہ اسلامیہ یعنی جامعہ علوم اسلامیہ علامہ بنوری ٹاؤن قائم کیا، جس کے بانی و مہتمم آپ تھے۔ جہاں آُ نے 45 سال تک مسند تدریس کو رونق بخشی اور درس حدیث میں مصروف رہے۔

بیعت و اجازت[ترمیم]

آپ اشرف علی تھانوی سے بیعت ہوئے اور انہی سے خلافت حاصل کی۔

تصانیف[ترمیم]

آپ کی تصانیف میں عربی کی 4 بڑی کتابیں اور درجنوں مقدمات شامل ہیں۔ جن میں معارف شرح جامع ترمذی (6 جلدوں میں) ایک علمی اور نفحۃ العنبر فی حیاۃالانور ایک ادبی تالیفات ہیں۔

اہم کارنامے[ترمیم]

  • آپ نے تحفظ ختم نبوتﷺ کے سلسلے میں جو کارنامہ انجام دیا اس کو صدیوں تک مسلمانوں میں یاد رکھا جائے گا۔
  • پاکستان میں قادیانیت کے خلاف جو تحریک اٹھی، آپ کی قیادت میں اس تحریک نے پورے ملک میں جوش و خروش پیدا کی۔
  • انکی تحریک میں اس قدر والہانہ پن اور شدت تھی کہ پاکستان کی قومی اسمبلی نے اس مسئلہ کو متفقہ طور پو منظور کیا اور قادیانی غیر مسلم اقلیت قرار پائے۔

وفات[ترمیم]

17 کتوبر 1977ء بمطابق 3 ذی قعدہ 1397ھ بروز اتوار کو وفات پائی۔

Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔