مندرجات کا رخ کریں

مستقل افسردگی کا عارضہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
مستقل افسردگی کا عارضہ
مترادفڈستھائمیا، ڈستھائمک ڈس آرڈر، دائمی ڈپریشن
تلفظ
اختصاصنفسیات
علاماتاداسی، کھانے یا سونے میں تبدیلی، کم توانائی، کمزور خود اعتمادی، توجہ مرکوز کرنے میں پریشانی[1]
مضاعفاتمنشیات کا غلط استعمال، خودکشی[2][3]
عمومی حملہبچپن یا نوعمری[2]
دورانیہطویل المدتی[3]
خطرہ عنصروالدین کا جدائی، خاندانی تاریخ[2]
تشخیصی طریقہدیگر ممکنہ وجوہات کو مسترد کرنے کے بعد علامات کی بنیاد پر[2]
مماثل کیفیتہائپوتھائیرائیڈزم، منشیات کا غلط استعمال[2]
علاجسائیکو تھراپی،مشاورت, سلیکٹیو سیروٹونن ری اپٹیک انحیبیٹر،SSRIs[1]
تعدد3فیصد (2015 تک 104 ملین)[3][4]

مستقل افسردگی کا عارضہ، پرسسٹنٹ ڈپریشن ڈس آرڈر ( PDD )، جو پہلے ڈستھائمیا اور دائمی میجر ڈپریشن کے نام سے جانا جاتا تھا، ایک طویل افسردگی کا مزاج ہے۔ [1] [3] عارضہ کی دیگر علامات میں کھانے یا سونے میں تبدیلی، کم توانائی، کمزور خود اعتمادی اور توجہ مرکوز کرنے میں پریشانی شامل ہو سکتی ہے۔ [1] یہ علامات اس حد تک ہوتی ہیں کہ ان سے کوئی بڑی تکلیف یا خرابی ہو سکتی ہے۔ [1] ڈائمی افسردگی کا خرابی یا خودکشی جیسے واقعات پیش آ سکتے ہیں۔ [5] [3]

عارضہ کی وجوہات یا خطرے کے عوامل میں کم عمری میں والدین کا کھو جانا اور خاندانی تاریخ شامل ہے۔ [2] تشخیص دیگر ممکنہ وجوہات کو مسترد کرنے کے بعد علامات پر مبنی ہوتی ہے۔ [2] تشخیص کے لیے ضروری ہے کہ علامات بالغوں میں کم از کم دو سال اور بچوں میں ایک سال تک موجود رہیں۔ [2] DSM-5 میں، ڈستھائمیا اور دائمی افسردگی کو ملا کر مستقل افسردگی کی خرابی کا نام دیا گیا ہے۔ [2]

اس کا علاج ،دائمی ڈپریشن کی خرابی کی طرح مشاورت اور ادویات جیسے یس ایس آر آئی (SSRIs) کااستعمال ہے۔ تقریباً 1 سے 6 فیصد آبادی اس عارضہ سے کسی نہ کسی وقت متاثر ہوتی ہے۔ 2015 میں دنیا بھر میں تقریباً 104 ملین افراد متاثر ہوئے۔ [4] آغاز عام طور پر بچپن یا ابتدائی جوانی میں ہوتا ہے۔ [2] فلیمنگ کے ذریعہ 1844 میں نفسیاتی علاج کے میدان میں "ڈسٹھمیا" کی اصطلاح استعمال ہوئی ۔ [1] یہ سب سے پہلے DSM-II میں ایک شخصیت کی خرابی کے طور پر متعارف کرایا گیا تھا اور بعد میں DSM-III میں بیماری کی حالت کے طور پر تصور کیا گیا تھا۔ [1]

حوالہ جات:[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج RK Patel، GM Rose (January 2020)۔ "Persistent Depressive Disorder"۔ PMID 31082096 
  2. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج چ ح خ Diagnostic and Statistical Manual of Mental Disorders (Fifth ایڈیشن)۔ American Psychiatric Association۔ 2013۔ صفحہ: 168-171۔ ISBN 978-0-89042-555-8۔ doi:10.1176/appi.books.9780890425596.156852 
  3. ^ ا ب پ ت ٹ E Schramm، DN Klein، M Elsaesser، TA Furukawa، K Domschke (September 2020)۔ "Review of dysthymia and persistent depressive disorder: history, correlates, and clinical implications."۔ The lancet. Psychiatry۔ 7 (9): 801–812۔ PMID 32828168 تأكد من صحة قيمة |pmid= (معاونت)۔ doi:10.1016/S2215-0366(20)30099-7 
  4. ^ ا ب Collaborators. GBD 2015 Disease and Injury Incidence and Prevalence (8 October 2016)۔ "Global, regional, and national incidence, prevalence, and years lived with disability for 310 diseases and injuries, 1990-2015: a systematic analysis for the Global Burden of Disease Study 2015."۔ Lancet۔ 388 (10053): 1545–1602۔ PMC 5055577Freely accessible۔ PMID 27733282۔ doi:10.1016/S0140-6736(16)31678-6 
  5. "Depression"۔ NIMH۔ May 2016۔ 05 اگست 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 جولا‎ئی 2016