نرجس خاتون

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
نرجس خاتون
Narjis.png
 

معلومات شخصیت
پیدائش 9ویں صدی  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قسطنطنیہ،  بازنطینی سلطنت  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مقام وفات سامراء،  دولت عباسیہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Simple Labarum.svg بازنطینی سلطنت  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شوہر حسن بن علی عسکری  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد محمد بن حسن مہدی  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

نرجس خاتون یا نرگس خاتون ملقب بہ «ریحانہ»، «سوسن» و «صیقل» اور «ورداس» اہل تشیع کے گیارہویں امام حسن بن علی عسکری کی بیوی اور بارہویں امام حجت بن الحسن کی والدہ تھیں۔[1][2][3][4][5][6][7][8]

وہ ایک مسیحی گھرانے میں پیدا ہوئی تھیں۔ ان کے دادا قیصرِ روم تھے جو عیسیٰ کے حواری شمعون زیلوتیس کی نسل سے تھے۔ انہوں نے خواب میں عیسیٰ کی والدہ مریم، فاطمہ زہرا اور پیغمبر اسلام کو دیکھا اور اسلام قبول کر لیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. شیخ مفید، الارشاد، موسسة احیاء التراث، ج 2، ص 346.
  2. شیخ صدوق، اکمال الدین، ص 346.
  3. طبرسی، همان کتاب، ص 418.
  4. مسعودی، اثبات الوصیة، انتشارات انصاریان، ص 248.
  5. fa:فتال نیشابوری، روضة الواعظین، ج 1، ص 283.
  6. طوسی، الغیبه، ص 143.
  7. محمد بن جریر بن رستم طبری، دلائل الامامة، منشورات حیدریه، ص 268.
  8. ابن صباغ، همان کتاب، ص 310.