پہلی نیقیہ کونسل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
نیقیہ کونسل
First Council of Nicaea
Young Folks' History of Rome illus350.png
نیقیہ کونسل
تاریخ 20 مئی تا 29 جون، عیسوی 325
ماننے والے
اگلی کونسل
First Council of Constantinople
بلانے والا قسطنطین اعظم
صدر Hosius of Corduba (اور قسطنطین اعظم)[1]
حاضرین 318 (روایتی تعداد)
250–318 (تخمیہ) — مغربی چرچ سے صرف پانچ
موضوعات آریوسیت، مسیح کی حقیقیت، تدفین اور خواجہ سراؤں کو اتوار کے دن ممانعت، اتوار کو عبادت اور ایسٹر سے پینتی کوست تک فسح کی تقریبات (ایسٹر)، درستی بپتسما، بدعتی مسیحیوں کی سزا اور متعدد دیگر امور۔[2]
دستاویزات اور اعلامیے
Original Nicene Creed،[3] 20 مذہبی قوانین،[4] and a synodal epistle[2]
Chronological list of Ecumenical councils

325ء میں قسطنطین اعظم بادشاہ نے مسیحیت کو سرکاری مذہب قرار دیا تو اس وقت اس نے ایک عالمگیر کونسل بلوائی[5] جس کا مقصد انجیل کو مدون و مرتب کرنا، اسی کونسل میں تثلیث کو مسیحیت کا بنیادی عقیدہ قرار دیا گيا۔ یہ کونسل نیقیہ میں منعقد ہوئی جو آج کل ترکی کا حصہ ہے۔ اسی نسبت سے اسے نیقیہ کونسل کہا جاتا ہے۔ کونسل نے آریوس کے عقیدہ کو رد کر کے تثلیث کو قبول کر لیا اور کئی اناجیل کو بھی بدعتی اور غیر مسلمہ قرار دیتے ہوئے ان کو پڑھنے سے منع کر دیا۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Britannica 2014
  2. ^ 2.0 2.1 SEC، صفحات۔ 112–114
  3. SEC، صفحہ۔ 39
  4. SEC، صفحات۔ 44–94
  5. Kieckhefer 1989