گنگا رام

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
رائے بہادر سر گنگا رام
Rai Bahadur Sir Ganga Ram
گنگا رام

معلومات شخصیت
پیدائش اپریل 1851
مانگٹاںوالہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 10 جولائی 1927 (عمر 76)
لندن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
رہائش لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
مذہب ہندو مت
عملی زندگی
مادر علمی انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی روڑکی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ انجینئر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
شعبۂ عمل زراعت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شعبۂ عمل (P101) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
کمپینین آف دی آرڈر آف دی انڈین ایمپائر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر

رائے بہادر سر گنگا رام (Rai Bahadur Sir Ganga Ram) (اپریل 1851ء – 10 جولائی 1927ء) ایک معروف سول انجنیئر تھے جو برطانوی ہند کے صوبہ پنجاب کے ایک چھوٹے گاوں مانگٹاں والا جو اب پنجاب، پاکستان کا حصہ ہے میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے تھامسن کالج آف سول انجینرنگ میں تعلیم حاصل کی جو اب انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی روڑکی کے نام سے جانا جاتا ہے۔ انہیں اپنے وقت کے ایک معروف انسان دوست اور زرعی ماہر کے طور پر جابا جاتا ہے۔ مارتیں آج بھی سرگنگارام کی عظمت کی گواہی دے رہی ہیں۔ وہ ایک کہنہ مشق اور ذہین انجینئر، قابل زرعی سائنس دان اور سماجی کارکن تھا۔ ان کے شہر لاہور پر بے شمار احسانات ہیں۔ لاہور میں عجائب گھر، جنرل پوسٹ آفس، ایچی سی کالج، میواسکول آف آرٹس، میو ہسپتال کا سر البرٹ وکٹر ہال اور گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کا کیمسٹری ڈیپارٹمنٹ ان کے ڈیزائن کردہ ہیں۔ جبکہ سرگنگارام ہسپتال، ڈی اے وی کالج (موجودہ اسلامیہ کالج سول لائنز)، سرگنگارام گرلزاسکول (موجودہ لاہور کالج فارویمن)، ادارہ بحالی معذوراں اور دیگر بے شمار فلاحی ادارے اُنھوں نے اپنے ذاتی خرچ سے قائم کیے تھے۔ 1925ء میں انہیں امپیریل بینک آف انڈیا کا صدر بنایا گیا ۔ اسی دوران میں اُنہوں نے گنگارام ٹرسٹ کا آغاز کیا۔ 10 جولائی 1927ء کو وہ اپنی لندن کی رہائش گاہ میں وفات پا گئے۔ ان کا جسم ہندو رسوم کے مطابق راکھ کر دیا گیا جس میں سے نصف راکھ دریائے گنگا میں بہا دی گئی جبکہ باقی ماندہ لاہور میں دریائے راوی کے کنارے ان کی سمادھی مین دفن ہے۔ سر گنگا رام ہسپتال دہلی، گنگا بھون (انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی رُڑکی) اور سر گنگا رام ہیریٹیج فاونڈیشن لاہور اُن کے تعمیری اور خدماتی ورثے کی دیگر یادگاریں ہیں۔ ان کے اعزازات میں رائے بہادر اور سر کے خطاب کے علاوہ ممبر آف رائل وکٹورین آرڈر (MV0) اور کوم پینیئن آف دی انڈین ایمپائر (CIE) کے اعزازات شامل ہیں۔

گنگا رام کے نام پر[ترمیم]

ادارے[ترمیم]

کام[ترمیم]

سر گنگا رام کی ڈیزائن اور تعمیر کردہ چند عمارات

حوالہ جات[ترمیم]