شعور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

سادہ سے الفاظ میں تو شعور ، اپنے آپ سے اور اپنے ماحول سے باخبر ہونے کو کہا جاتا ہے اور انگریزی میں اسے Consciousness کہتے ہیں۔ طب و نفسیات میں اسکی تعریف یوں کی جاتی ہے کہ؛ شعور اصل میں عقل (mind) کی ایک ایسی کیفیت کو کہا جاتا ہے کہ جسمیں ذاتیت (subjectivity) ، فہم الذاتی (self-awareness) ، ملموسیہ (sentience) ، دانائی (sapience) اور آگاہی (perception) کی خصوصیات پائی جاتی ہوں اور ذاتی (onself) و ماحولی حالتوں میں ایک ربط موجود ہو۔

وسعت[ترمیم]

شعور کا موضوع طبی لحاظ سے بھی بہت اہم ہے اور اگر کوئی شخص اپنا شعور کھو دے تو اسکو صحت کے لحاظ سے بیہوشی کہا جاتا دوسرے الفاظ میں اسکا مطلب یہ ہوا کہ شعور ہی کو اردو میں ہوش اور ہوش و حواس کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ سائنس کے مختلف شعبہ جات میں لفظ شعور کی تعریفیں ملتی ہیں مگر اسکے باوجود دماغ کی اس خاصیت سے مکمل آگاہی ابھی بھی نفسیات، فعلیات عقل، علم الاعصاب اور علم ادراک میں ایک نہایت سرگرم موضوع تحقیق ہے۔

فلسفہ[ترمیم]

فلاسفہ کا ایک گروہ شعور کو مظہری شعور (phenomenal consciousness) اور متاحی شعور (access consciousness) میں تقسیم کرتا ہے۔ مظہری شعور سے مراد اس تجربہ یا کیفیت (شعور) کی ذاتی خصوصیت سے ہوتی ہے اور متاحی شعور سے مراد اس شعور کی (یعنی اس شعور کو اجاگر کرنے والی) کل معلومات کی ہوتی ہے جو کہ عملیتی نظام (مثلا دماغ) کو تجزیہ کرنے کیلیۓ دستیاب ہوئی ہوں۔ ایک شخص مظہری شعور کی حالت میں ہوگا جب کہ وہ سے کیفیت (یعنی اس شعور کی کیفیت) کو محسوس کررہا ہو اور یہ مظہری شعوری حالت ایسی حالت ہوتی ہے کہ جس میں کیفیہ (Qualia) پایا جاتا ہے۔ جبکہ متاحی شعوری حالت اس وقت پیدا ہوتی ہے کہ جب اس کیفیت (یعنی اس شعور کی کیفیت) کے بارے میں دماغ میں موجود معلومات ، مکمل طور پر دستیاب ہوچکی ہوں (جو کہ عصبونات (neurons) اور انکی مدد سے بننے والی یاداشت کے زریعے ہوتا ہے) اور تضبیط رویہ (behavioral control) میں اپنا کردار ادا کرسکتی ہوں۔

طبی و اخلاقی اہمیت[ترمیم]

انسانی دماغ میں شعور کیلیۓ درکار لوازمات (یعنی وہ خصوصیات کہ جن کی موجودگی کو شعور کہا جاسکتا ہے) کا سمجھنا بہت سے انسانی و طبی اخلاقیات کے موضوعات میں مددگار ہی نہیں بلکہ طبی علاج و معالجے میں مریض کی زندگی بچانے کیلیۓ بھی نہایت ضروری ہوتا ہے۔ مثال کے طور پر

  1. ایک انتہائی بیمار اور لاغر شخص میں کس قدر ہوش یعنی شعور باقی ہے؟ یا اگر وہ بیہوش (unconscious) ہے تو کس درجہ کی بیہوشی ہے؟

مزید دیکھیۓ[ترمیم]