صدقیاہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
شاہ یہودا
صدقیاہ
صدقیاہ
صدقیاہ

شاہ یہودا
دور حکومت 597–586 ق۔م
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 617 ق م  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
مقام وفات بابل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
خاندان داؤدی گھرانہ
دیگر معلومات
پیشہ بادشاہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

صدقیاہ (عبرانی: צִדְקִיָּהוּ ؛ خدا میری صداقت) یہودا کا آخری بادشاہ اور یوسیاہ اور حُموطل کا بیٹا تھا۔[1] خدا نے یہودا کی بدکاریوں کی وجہ سے اُنہیں بابلیوں کی غلامی میں دے دیا۔ نبو کد نضر نے یروشلم پر حملہ کیا اور بادشاہ یہویاکین (یکونیاہ) کو اسیر کرکے بابل لے گیا اور اُس کی جگہ متنیاہ کو بادشاہ بنایا۔ اُس نے اُس کا نام بدل کر صدقیاہ رکھا۔ یہودا کے اُمراء کو اسیر کر کے بابل لے جانے کی وجہ سے اُس نے خیال کیا کہ اب باقی یہودی سر نہیں اُٹھائیں گے۔[2] لیکن بعد میں صدقیاہ نے بغاوت کردی۔ نبو کد نضر نے اُسے پکڑ کر قید میں ڈال دیا۔ پھر اُس نے اُس کے بیٹوں کو اُس کی آنکھوں کے سامنے ذبح کردیا اور اُس کی آنکھیں نکال دیں پھر وہ اُسے بابل لے گیا جہاں صدقیاہ مر گیا۔[3] خدا نے صدقیاہ کو اُس کی بدکاری کے باعث صرف 11 برس حکومت کرنے کی اجازت دی۔ اُس کی بدکاریوں کی تفصیل یرمیاہ ابواب 34–37 میں درج ہے۔

حوالہ جات[ترمیم ماخذ]

  1. 2 سلاطین 24:18
  2. حزقی ایل 14–17:11
  3. 2 سلاطین ابواب 24 اور 25