فہرست شاہان آل محمد علی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
شاہان مصر و سوڈان
سابقہ بادشاہت
Coat of Arms of the Sultan of Egypt.svg
خديويت مصر آل محمد علی قومی نشان
Mohammed Ali family tree.jpg
آل محمد علی
اولین بادشاہ/ملکہ محمد علی پاشا
آخری بادشاہ/ملکہ شاہ فواد دوم
انداز والی (1805–1867)
خدیو (1867–1914)
سلطان مصر (1914–1922)
شاہ مصر (1922–1951)
شاہ مصر و سوڈان (1951–1953)
سرکاری رہائش گاہ قلعہ صلاح الدین ایوبی (1805–1874)[1]
عابدین محل (1874–1952)[2]
بادشاہت کا آغاز 18 جون 1805
بادشاہت کا آختتام 18 جون 1953
موجودہ مدعی شاہ فواد دوم

شاہان آل محمد علی نے مصر پر 1805 سے 1953 تک حکمرانی کی۔ اس دور اقتدار کے بیشتر وقت میں سوڈان، سرزمین شام اور حجاز بھی شامل رہے۔[3]

آل محمد علی کی بنیاد محمد علی پاشا نے رکھی۔ محمد علی پاشا مصر پر اپنے اختیار کو مستحکم کرنے میں کامیاب ہوا اور بطور شاہ خدیو کا لقب اپنایا۔

فہرست شاہان (1805–1953)[ترمیم]

ولایت/غیر تسلیم شدہ خديويت[ترمیم]

والی تصویر پیشرو سے رشتہ آغاز دور اختتام دور قسمت
محمد علی پاشا
(Muhammad Ali of Egypt)
محمد علي باشا
ModernEgypt, Muhammad Ali by Auguste Couder, BAP 17996.jpg  — 18 جون 1805 20 جولائی 1848
ریجنسی کونسل[c]
والی محمد علی پاشا کے اختیارات سنبھالے
(15 اپریل 1848 – 20 جولائی 1848)
ابراہیم پاشا
(Ibrahim Pasha of Egypt)
إبراهيم باشا
Portrait d'Ibrahim Pacha 2.JPG بیٹا خیال کیا جاتا[d] 20 جولائی 1848 10 نومبر 1848
  • اپنی وفات تک بر سر اقتدار[5]
عباس حلمی اول
(Abbas I of Egypt)
عباس حلمي باشـا
Abbas Helmy Pasha I.JPG بھتیجا 10 نومبر 1848 13 جولائی 1854
  • اپنی وفات تک بر سر اقتدار[;[6]
  • غیر واضح حالات میں قتل[e]
محمد سعید پاشا
(Sa'id of Egypt)
محمد سعيد باشا
Muhammad Said Pascha 1855 Nadar.jpg نصف چچا 14 جولائی 1854 18 جنوری 1863
  • اپنی وفات تک بر سر اقتدار[7]
اسماعیل پاشا
(Isma'il Pasha)
إسماعيل باشا
Isma'il Pasha.jpg نصف بھتیجا 19 جنوری 1863 8 جون 1867
  • قیام خديويت[8]

خديويت مصر (1867–1914)[ترمیم]

خدیو تصوہر پیشرو سے رشتہ آغاز دور اختتام دور قسمت
اسماعیل پاشا
(Isma'il Pasha)
إسماعيل باشا
Isma'il Pasha.jpg اوپر دیکھیے 8 جون 1867 26 جون 1879
  • برطانیہ اور فرانس کی طرف سے معزول – رسمی طور پر عثمانی سلطان عبدالحمید دوم کی طرف سے معزول ;
  • استنبول 1895 میں جلاوطنی میں انتقال کر گئے[8]
توفیق پاشا
(Tewfik Pasha)
محمد توفيق باشا
MohamedTewfik.jpg بیٹا 26 جون 1879 7 جنوری 1892
  • اپنی وفات تک بر سر اقتدار[9]
عباس حلمی دوم
(Abbas II of Egypt)
عباس حلمي باشـا
Abbas Hilmi II.JPG بیٹا 8 جنوری 1892 19 دسمبر 1914
  • پہلی جنگ عظیم کے پھیلنے کے بعد برطانیہ کی جانب سے معزول;[10]
  • 1931 میں دستبردار ;[f]
  • جنیوا میں 1944 میں جلاوطنی میں انتقال کر گئے

سلطنت مصر (1914–1922)[ترمیم]

سلطان تصوہر پیشرو سے رشتہ آغاز دور اختتام دور قسمت
حسین کامل
(Hussein Kamel of Egypt)
حسين كامل
Sultan Husayn Kamil - Project Gutenberg eText 18334.jpg نصف چچا 19 دسمبر 1914 9 اکتوبر 1917
  • اپنی وفات تک بر سر اقتدار[11]
شاہ فواد اول
(Fuad I of Egypt)
أحمد فؤاد الأول
Fuad I of Egypt.jpg سوتیلا بھائی 9 اکتوبر 1917 15 مارچ 1922
  • بادشاہ بن گیا[12]

مملکت مصر (1922–1953)[ترمیم]

شاہ تصوہر پیشرو سے رشتہ آغاز دور اختتام دور قسمت
شاہ فواد اول
(Fuad I of Egypt)
أحمد فؤاد الأول
Fuad I of Egypt.jpg اوپر دیکھیے 15 مارچ 1922 28 اپریل 1936
  • اپنی وفات تک بر سر اقتدار[12]
ریجنسی کونسل [g]
شاہ فاروق کے اختیارات سنبھالے
(8 مئی 1936 – 29 جولائی 1937)
عزیز عزت پاشا چیئرمین
شہزادہ محمد علی توفیق
شریف صبری پاشا
شاہ فاروق اول
(Farouk of Egypt)
فاروق الأول
Kingfarouk1948.jpg بیٹا 28 اپریل 1936 26 جولائی 1952
  • 1952 کے انقلاب مصر سے دستبردار ہونے پر مجبور کر دیا;
  • 1965 میں روم میں جلاوطنی میں انتقال کر گئے[13]
انقلاب مصر 1952[b]
کابینہ
شاہ فواد دوم کے اختیارات سنبھالے
(26 جولائی 1952 – 2 اگست 1952)
ریجنسی باڈی
شاہ فواد دوم کے اختیارات سنبھالے
(2 اگست 1952 – 14 اکتوبر 1952)
پرنس ریجنٹ
شاہ فواد دوم کے اختیارات سنبھالے
(14 اکتوبر 1952 – 18 جون 1953)
وزیر اعظم
علي ماہر پاشا
بہا الدین برکات پاشا چیئرمین
پرنس محمد عبد المنعم
رشاد مہنا پرنس محمد عبد المنعم
شاہ فواد دوم
(Fuad II of Egypt)
أحمد فؤاد الثاني
Fuad II of Egypt 1952.jpg بیٹا 26 جولائی 1952 18 جان 1953
  • بادشاہت کا خاتمہ اور جمہوریہ قائم;
  • فی الحال جلاوطنی میں ہے[14]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Lyster، William (1990)۔ The Citadel of Cairo: A History and Guide (snippet view)۔ Cairo: Palm Press۔ صفحہ 79۔ آئی ایس بی این 978-977-5089-02-1۔ او سی ایل سی 231494131۔ اخذ کردہ بتاریخ 2010-07-17۔ "It was the residence of the royal family until 1874, when Khedive Isma'il moved out of the Citadel into the newly built 'Abdin Palace." 
  2. Hassan، Fayza (3 – 9 December 1998). "Party politics". Al-Ahram Weekly (406). http://weekly.ahram.org.eg/1998/406/fo1.htm۔ اخذ کردہ بتاریخ 2010-07-17. "Abdin Palace remained the official residence of the royal family from 1874 until the 1952 Revolution.". 
  3. "Egypt: Muhammad Ali, 1805–48"۔ Country Studies۔ Federal Research Division of the کتب خانہ کانگریس۔ December 1990۔ اصل سے جمع شدہ 2009-01-01 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-25۔ 
  4. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ Muhammad Ali PRE نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  5. "Ibrahim Pasha"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-01۔ 
  6. "Abbas Helmy Tosson I"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-01۔ 
  7. "Mohammad Saiid Pasha"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-02۔ 
  8. ^ 8.0 8.1 "Khedive Ismail"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-02۔ 
  9. "Khedive Tawfik"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-18۔ 
  10. "Abbas Helmy II"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-08-18۔ 
  11. "Sultan Hussein Kamel"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-25 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-07-25۔ 
  12. ^ 12.0 12.1 "King Fuad I"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-30 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-07-25۔ 
  13. "King Farouk I"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-09-29 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-07-25۔ 
  14. "King Ahmad Fuad II"۔ Official website of the Egyptian Presidency۔ اصل سے جمع شدہ 2007-06-30 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 2008-07-27۔