مرزا مسرور احمد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مرزا مسرور احمد
Amir al-Mu'min.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 15 ستمبر 1950 (68 سال)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
ربوہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ زرعیہ فیصل آباد  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ الٰہیات دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
دستخط
Unterschrift von Mirza Masrur Ahmad.jpg 

جماعت احمدیہ کے پانچویں خلیفہ مرزا مسرور احمد 15 ستمبر 1950ء کو ربوہ، پاکستان میں پیدا ہوئے۔ آپ بانی جماعت احمدیہ مرزا غلام احمد قادیانی کے پڑپوتے اور مرزا شریف احمد کے پوتے ہیں۔ والد کا نام مرزا منصور احمد جبکہ والدہ کا نام ناصرہ بیگم تھا۔ آپ اپنے بھائیوں مرزا ادریس احمد اور مرزا مغفور احمد اور بہن امتہ القدوس صاحبہ سے عمر میں چھوٹے ہیں۔

مرزا مسرور احمد کی شادی 31 جنوری 1977 کو امتہ السبوح بیگم کے ساتھ ہوئی۔ ان سے ایک بیٹی اور ایک بیٹا، مرزا وقاص احمد، ہیں۔

تعلیم

مرزا مسرور احمد نے تعلیم الاسلام ہائی اسکول ربوہ سے میٹرک کرنے کے بعد تعلیم الاسلام کالج ربوہ سے بی اے کیا۔ 1976ء میں زرعی یونیورسٹی فیصل آباد سے ایم ایس سی کی ڈگری زرعی اقتصادیات میں حاصل کی۔

خدمات

مرزا مسرور احمد نے اپنی زندگی جماعت احمدیہ کے کاموں کے لیے وقف کی اور مختلف شعبہ جات میں خدمات سرانجام دیں۔ آپ کچھ عرصہ جماعت کے سکولوں میں غانا متعین رہے۔ غانا ہی میں پہلی بار گندم اگانے کا کامیاب تجربہ کیا۔ جماعت احمدیہ کی نوجوانوں کی تنظیم خدام الاحمدیہ میں تعلیم کے شعبہ سے بھی وابستہ رہے۔

اسی طرح آپ کو جماعت احمدیہ کی مرکزی تنظیم میں ربوہ کے امیر مقامی اور صدر انجمن احمدیہ میں ناظر اعلیٰ کے طور پر بھی خدمت کا موقع ملا۔

خلافت

جماعت احمدیہ کے چوتھے خلیفہ مرزا طاہر احمد کی وفات کے بعد 22 اپریل 2003ء کو مرزا مسرور احمد جماعت کے بانی مرزا غلام احمد کے پانچویں خلیفہ منتخب ہوئے۔

مصانیف

  1. عالمی بحران اور امن کی راہ
  2. شرائط بیعت اور احمدی کی ذمہ داریاں

حوالہ جات

  1. اجازت نامہ: CC0