مریم میرزاخانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مریم میرزاخانی
(فارسی میں: مریم میرزاخانی خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
First Woman Fields medallist plus daughter (cropped).jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 3 مئی 1977[1][2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
تہران[3][1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 14 جولا‎ئی 2017 (40 سال)[4][2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
اسٹنفرڈ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
وجۂ وفات سرطان پستان[5]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وجۂ وفات (P509) ویکی ڈیٹا پر
رہائش مئیفیلڈ، کیلیفورنیا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Iran.svg ایران  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
رکنیت فرانسیسی اکادمی برائے سائنس،  امریکن فلوسوفیکل سوسائٹی،  امریکی اکادمی برائے سائنس و فنون،  قومی اکادمی برائے سائنس[6]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رکن (P463) ویکی ڈیٹا پر
شوہر جان وندراک[7]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شریک حیات (P26) ویکی ڈیٹا پر
تعداد اولاد 1   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعداد اولاد (P1971) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ ہارورڈ (–2004)[8]
جامعہ شریف برائے ٹیکنالوجی (–1999)[8]
فرزانگان اسکول  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
تعلیمی اسناد پی ایچ ڈی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
ڈاکٹری مشیر کورتیس ٹی میکمولن[8]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں ڈاکٹورل مشیر (P184) ویکی ڈیٹا پر
استاذہ عبادالله محمودیان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں استاد (P1066) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ریاضی دان[9]،  ماہر مقامیات  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان فارسی،  انگریزی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
شعبۂ عمل ہندسہ،  نظریہ ادغام،  پیچیدہ علم ہندسہ[8]،  نظریۂ حرکیہ نظامات[8]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شعبۂ عمل (P101) ویکی ڈیٹا پر
نوکریاں جامعہ سٹنفورڈ[10]،  جامعہ پرنسٹن[11]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں نوکری (P108) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
فیلڈز انعام  (2014)[12]
کلے تحقیقاتی اعزاز (2014)[13]
ساتر اعزاز برائے ریاضی (2013)[14]
بلو مینتھل انعام (2009)[15]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ،  باضابطہ ویب سائٹ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں باضابطہ ویب سائٹ (P856) ویکی ڈیٹا پر
مریم میرزاخانی کو فیلڈز انعام دیا جا رہا ہے۔

مریم میرزاخانی (3 مئی 1977ء تا 15 جولائی 2017ء) ایک ایرانی[16][17] ریاضی دان اور جامعہ سٹنفورڈ میں ریاضیات کی پروفیسر تھیں۔[18][19][20] میرزاخانی کے تحقیقاتی موضوعات میں ٹچ مولر خلا (Teichmüller space)، زائدی ہندسہ (Hyperbolic geometry)، ارگودی نظریہ (Ergodic theory) اور سمپلیکٹ ہندسہ شامل تھیں۔[16]

13 اگست 2014ء کو میرزاخانی کو ریاضی کے میدان میں دنیا کا اعلیٰ ترین اعزاز فیلڈز میڈل دیا گيا۔ ان کو ان کی پیچیدہ جیومیٹری کے لیے اس اعزاز سے نوازا گیا تھا۔ مریم میرزاخانی فیلڈز میڈل اعزاز حاصل کرنے والی دنیا کی پہلی خاتون اور پہلی ایرانی اور مسلمان شخصیت تھیں جس نے یہ اعزاز حاصل کیا۔[21][22] اس اعزاز کا فیصلہ کرنے والی کمیٹی کی رکن اور برطانیہ کی جامعہ اوکسفرڈ کی پروفیسر فرانسز کِروان کا کہنا تھا: مجھے امید ہے کہ اس ایوراڈ سے اس ملک میں اور دنیا بھر میں بہت سی لڑکیوں اور نوجوان خواتین کو اپنی صلاحتیوں پر یقین کرنے اور مستقبل میں فیلڈز میڈل جیتنے کا حوصلہ ملے گا۔

ابتدائی زندگی و تعلیم[ترمیم]

مریم کی پیدائش 3 مئی 1977ء کو تہران، ایران میں ہوئی۔ انھوں نے فرزانگان اسکول میں داخلہ لیا جو ایران کا قومی ادارہ برائے ذہانت کی ترقی کا حصہ ہے۔

1994ء میں مریم نے بین الاقوامی ریاضیاتی اولمپیاڈ میں طلائی تمغا جیتا۔ یہ پہلی ایرانی لڑکی تھیں جس نے یہ انعام جیتا اور مریم نے 1995ء میں دوبارہ بین الاقوامی ریاضیاتی اولمپیاڈ میں طلائی تمغا جیتا، وہ پہلی ایرانی لڑکی تھی جس نے اس مقابلے میں مکمل اسکور حاصل کیا۔[23][24][25]

ذاتی زندگی[ترمیم]

مریم میرزاخانی کو 2013ء میں چھاتی کا سرطان ہو گیا تھا۔[26] چار سال میں، سرطان اس کی ہڈیوں کے گودے تک پہنچ گیا۔[27] جس کے باعث مریم کی 15 جولائی 2017ء کو وفات ہوئی۔[28] مریم اپنی بیٹی انہتا[29] اور شوہر کے ساتھ رہتی تھیں، ان کے شوہر چیک جمہوریہ سے تعلق رکھتے ہیں اور نظریاتی کمپیوٹر سائنس اور اطلاقی ریاضی کے جامعہ سٹنفورڈ میں ایسوسی ایٹ پروفیسر ہیں۔[30]

اعزازات[ترمیم]

  • 1995–99 انسٹی ٹیوٹ فور ریسرچ ان فنڈامنٹل سائنسز مین فیلوشپ[16]
  • 2003ء میں میریٹ فیلو شپ ہارورڈ یونیورسٹی[16]
  • 2003ء میں ہارورڈ جونیئر فیلو شپ ہارورڈ یونیورسٹی[16]
  • 2004ء میں کلے میتھمیٹکس انسٹی ٹیوٹ ریسرچ فیلو[31]
  • 2009ء میں اے ایم ایس بلمنتھل ایوارڈ[32]
  • 2014ء میں کلے ریسرچ ایوارڈ[33]
  • 2014ء میں فیلڈز میڈل[34][35]
  • 2015ء میں فرنچ اکیڈمی آف سائنسس کے لیے منتخب غیر ملکی ایسوسی ایٹ[36]
  • 2015ء میں امریکی فلسفیانہ سوسائٹی کی رکنیت[37]
  • 2016ء میں نیشنل اکیڈمی آف سائنسز، امریکا کی رکنیت[38]
  • 2017ء میں امریکی اکیڈمی آف آرٹس اینڈ سائنسز کی رکنیت[39]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب https://www.britannica.com/biography/Maryam-Mirzakhani
  2. ^ ا ب https://www.britannica.com/biography/Maryam-Mirzakhani — اخذ شدہ بتاریخ: 22 اگست 2017 — خالق: John O'Connor اور Edmund Robertson نقص حوالہ: نادرست <ref> ٹیگ؛ نام "49fdb5fe81b8355b0a67fc010bab1d0476734c67" مختلف مواد کے ساتھ کئی بار استعمال ہوا ہے۔
  3. http://www.cbc.ca/news/technology/maryam-mirzakhani-becomes-1st-woman-to-win-fields-medal-1.2734950
  4. http://news.stanford.edu/2017/07/15/maryam-mirzakhani-stanford-mathematician-and-fields-medal-winner-dies/
  5. http://www.tehrantimes.com/news/415087/Iranian-math-genius-Fields-Medal-winner-Mirzakhani-passes-away
  6. http://www.nasonline.org/member-directory/deceased-members/20022806.html — اخذ شدہ بتاریخ: 25 فروری 2018
  7. Maryam Mirzakhani Is First Woman Fields Medalist — اخذ شدہ بتاریخ: 16 جولا‎ئی 2017
  8. ^ ا ب پ ت ٹ http://www.seattletimes.com/nation-world/maryam-mirzakhani-first-woman-to-win-fields-medal-dies/ — اخذ شدہ بتاریخ: 16 جولا‎ئی 2017
  9. http://www.bloomberg.com/bw/articles/2014-08-13/maryam-mirzakhani-and-fields-medal-how-to-do-math-like-a-genius
  10. https://news.stanford.edu/news/2008/april9/prezreport-040908.html
  11. https://news.stanford.edu/news/2008/april9/prezreport-040908.html — مصنف: مریم میرزاخانی — عنوان : Ergodic Theory of the Earthquake Flow — شائع شدہ از: International Mathematics Research Notices — https://dx.doi.org/10.1093/IMRN/RNM116
  12. http://news.stanford.edu/pr/2014/pr-fields-medal-mirzakhani-081214.html
  13. http://www.claymath.org/events/news/2014-clay-research-awards — اخذ شدہ بتاریخ: 16 جولا‎ئی 2017
  14. http://www.ams.org/notices/201304/rnoti-p489.pdf
  15. http://www.ams.org/news?news_id=339 — اخذ شدہ بتاریخ: 16 جولا‎ئی 2017
  16. ^ ا ب پ ت ٹ نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ mmcv2 نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  17. Maryam Mirzakhani, first woman to win maths' Fields Medal, dies – BBC News
  18. میرزاخانی، مریم (2007). "Weil-Petersson volumes and intersection theory on the moduli space of curves". Journal of the American Mathematical Society 20: 1–23. doi:10.1090/S0894-0347-06-00526-1. http://www.ams.org/journals/jams/2007-20-01/S0894-0347-06-00526-1/S0894-0347-06-00526-1.pdf. 
  19. میرزاخانی، مریم (جنوری 2007). "Simple geodesics and Weil-Petersson volumes of moduli spaces of bordered Riemann surfaces". Inventiones Mathematicae (Springer-Verlag) 167 (1): 179–222. doi:10.1007/s00222-006-0013-2. آئی ایس ایس این 1432-1297. 
  20. "Report of the President to the Board of Trustees"۔ جامعہ سٹنفورڈ۔ 9 اپریل 2008۔ اخذ کردہ بتاریخ 12 اگست 2014۔ 
  21. "President Rouhani Congratulates Iranian Woman for Winning Math Nobel Prize"۔ فارس نیوز ایجنسی۔ 14 اگست 2014۔ اخذ کردہ بتاریخ 14 اگست 2014۔ 
  22. "IMU Prizes 2014"۔ بین الاقوامی ریاضیاتی یونین۔ اخذ کردہ بتاریخ 12 اگست 2014۔ 
  23. "مریم میرزاخانی کے نتائج"۔ بین الاقوامی ریاضیاتی اولمپیاڈ۔ 
  24. "Iranian woman wins maths' top prize"۔ New Scientist۔ 12 اگست 2014۔ اخذ کردہ بتاریخ 13 اگست 2014۔ 
  25. Marissa Newhall (13 ستمبر 2005)۔ "'Brilliant' minds honored: Maryam Mirzakhani"۔ USA Today۔ 
  26. PressTV-Iranian math genius battles cancer at US hospital
  27. Agence France-Presse۔ "Sorrow as Maryam Mirzakhani, the first woman to win mathematics' Fields Medal, dies aged 40"۔ The Telegraph۔ اخذ کردہ بتاریخ 15 جولائی 2017۔ 
  28. "Maryam Mirzakhani "died" (fa زبان میں)۔ Mehr news Agancy۔ 15 جولائی 2017۔ 
  29. "A Tenacious Explorer of Abstract Surfaces"، simonsfoundation.org. Retrieved 13 اپریل 2014.
  30. "Jan Vondrák"۔ Stanford University۔ اخذ کردہ بتاریخ 14 جولائی 2017۔ 
  31. "ریسرچ فیلو مریم میرزاخانی سے گفتگو"۔ جامعہ اوکسفرڈ۔ 2008۔ 
  32. امریکی ریاضیاتی سوسائٹی۔ Retrieved 6 جنوری 2009
  33. "2014 Clay Research Awards"۔ 
  34. "بین الاقوامی ریاضیاتی یونین انعامات 2014"۔ بین الاقوامی ریاضیاتی یونین۔ 
  35. David Larousserie (12 اگست 2014)۔ "Médaille Fields de mathématiques : une femme promue pour la première fois"۔ Le Monde (fr زبان میں)۔ اخذ کردہ بتاریخ 13 اگست 2014۔ 
  36. http://www.academie-sciences.fr/pdf/communique/election_AE_2015.pdf
  37. نئی منتخب شدہ، امریکی فلاسفیکل سوسائٹی، اپریل 2015، اخذ کردہ بتاریخ 2015-08-28 
  38. "National Academy of Sciences Members and Foreign Associates Elected"۔ اخذ کردہ بتاریخ 2016-05-05۔ 
  39. Maryam Mirzakhani elected to American Academy of Arts and Sciences، Department of Mathematics, جامعہ سٹنفورڈ، مئی 2017، اخذ کردہ بتاریخ 2017-05-06 

بیرونی روابط[ترمیم]