مشتاق احمد يوسفی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
مشتاق احمد یوسفی
مشتاق احمد یوسفی.jpg
پیدائش مشتاق احمد یوسفی (1921-09-04) ستمبر 4، 1921 (عمر 96 سال)ٹونک راجھستان، بھارت
پیشہ بینکاری، اور مزاح نگاری
قومیت پاکستان کا پرچمپاکستانی
نسل راجھستانی
تعلیم ایم اے فلسفہ ـ ایل ایل بی
مادر علمی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی
دور 1961 تا حال
صنف مزاح نگاری
نمایاں کام خاکم بدہن، زرگزشت
آب گم، چراغ تلے، شامِ شعرِ یاراں
اہم اعزازات کمالِ فن ایوارڈ، آدم جی ایوارڈ، بابائے اردو مولوی عبدالحق ایوارڈ، ستارہ امتیاز، ہلال امتیاز حکومتِ پاکستان

مشتاق احمد یوسفی, ستارہ امتیاز، ہلال امتیاز ، ڈی لٹ (اعزازی) کا شمار اردو زبان کے عظیم ترین مزاح نگاروں میں ہوتا ہے۔

ابتدائی حالات[ترمیم]

مشتاق احمد یوسفی کی پیدائش 4 ستمبر، 1921ء ریاست ٹونک، راجھستان، ہندوستان میں ہوئی۔ آپ نے ابتدائی تعلیم راجپوتانہ، ایم-اے (فلسفہ) آگرہ یونیورسٹی، ایل ایل بی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (AMU) سےحاصل کی۔ تقسیم ہند کے بعد کراچی تشریف لے آئے اور مسلم کمرشل بینک میں ملازمت اختیار کی۔

عملی زندگی[ترمیم]

مشتاق احمد یوسفی ایک بلند پایہ طنز و مزاح نگار ہیں۔ 1950 میں مسلم کمرشل بینک میں تعینات ہوئے اور ڈپٹی جنرل منیجر کے عہدے تک پہنچے۔ 1965 میں الائیڈ بینک بطور مینیجنگ ڈائریکٹر جوائن کیا۔ 1974 میں یونائیٹڈ بینک کے صدر بنے۔ 1977 میں پاکستان بینکنگ کونسل کے چیئرمین بنے۔

علمی خدمات[ترمیم]

اب تک ان کی پانچ کتابیں شائع ہوچکی ہیں۔

اعزازات[ترمیم]

آپ کی ادبی خدمات کے پیش نظر حکومت پاکستان نے 1999ء میں ستارہ امتیاز اور ہلال امتیاز کے تمغوں سے نوازا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. بی بی سی اردو، مشتاق احمد یوسفی کی نئی کتاب کی تقریب رونمائی ساتویں اردو عالمی کانفرس، کراچی میں۔16 اکتوبر 2014 ء

بیرونی روابط[ترمیم]

http://ghubar-e-khater.blogspot.com/2009/04/blog-post_26.html