ریاست ٹونک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ریاست ٹونک
टोंक रियासत
Tonk State
نوابی ریاست برطانوی ہند
1806–1949
پرچم نشان
پرچم نشان
Location of Tonk
امپیریل گزٹیر آف انڈیا میں ریاست ٹونک
تاریخ
 -  قیام 1806
 -  آزادی ہند کے بعد 1949
رقبہ
 -  1931 6,512 کلومیٹر2 (2,514 مربع میٹر)
آبادی
 -  1931 317,360 
کثافت 48.7 /کلومیٹر2  (126.2 /مربع میٹر)
آج کا حصہ راجستھان، بھارت

ریاست ٹونک (Tonk, princely state) برطانیہ کی بالا دستی معاہدے کے تحت 1817ء میں ایک نوابی ریاست تھی۔ 1947ء میں تقسیم ہند کے بعد ٹونک نے نئے آزاد ڈومنین بھارت کے ساتھ الحاق کر لیا۔ یہ موجودہ بھارت کے ضلع ٹونک میں واقع تھی۔[1]

تاریخ[ترمیم]

آزادی سے قبل راجستھان میں بہت سی ریاستیں تھیں لیکن ان میں ٹونک واحد مسلم ریاست تھی۔ ٹونک شہر اٹھارہ سو سترہ سے سنہ انیس سو سینتالیس تک ریاست کا دار الحکومت تھا جسے ایک مسلم حکمران نے آباد کیا تھا۔ راجستھان، علوم و فنون، شعر و شاعری اور ارباب فکر و نظر کی سرزمین ٹونک ہر اعتبارسے اپنی ایک نمایاں خصوصیت رکھتا ہے۔ "ٹونک" راجستھان کی ایک چھوٹی سی ریاست تھی مگرمعنوی اعتبار سے گراں قدر تھی۔ اس ریاست نے مفتی عبد اللہ ٹونکی، مفتی محمود الحسن، حافظ شیرانی، مولانا احمد علی سیماب جیسے جید علما اور اختر شیرانی، بسمل سعیدی اور مخمور سعیدی جیسے نامی گرامی اردو زبان و ادب کے شعرا پیدا کیے۔ حقیقت پسندانہ نقطہ نظر سے ٹونک کی ریاست کا جائزہ لیا جائے تو معلوم ہوگا کہ جن ریاستوں نے پچھلی صدی میں مشرقی علوم کی ترقی و ترویج میں حصہ لیا تھا ان میں ٹونک کو امتیازی شان حاصل ہے۔

ٹونک کے حکمران[ترمیم]

  • محمد عامر خان 1798 - 1834
  • محمد وزیر خان 1834 - 1864
  • محمد علی خان 1864 - 1867
  • محمد ابراہیم علی خان 1867 - جون 23، 1930
  • محمد سعادت علی خان 23 جون، 1930 - 31 مئی، 1947
  • محمد فاروق علی خان 1947 - 1948
  • محمد اسماعیل علی خان 1948 - 1974
  • محمد معصوم علی خان 1974 - ستمبر 4، 1994
  • محمد آفتاب علی خان نے ستمبر 4، 1994 کے بعد سے

حوالہ جات[ترمیم]