بکرمی تقویم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

بکرمی تقویم ایک شمسی تقویم ہے جو برصغیر پاکستان اور ہندوستان میں صدیوں کے رائج ہے۔

بکرمی کیلینڈر جو کہ راجہ بکرم اجیت کے دور سے شروع هوتا ہے ، اس کو دیسی کلینڈر یا جنتری بھی کہتے ہیں۔ اس شمسی تقویم میں سال چیتر کے مہینے سے شروع ہوتا ہے۔

تیس سو پینسٹھ دنوں کے اس کلینڈر کے نو مہینے تیس تیس دن کے ہوتے ہیں، اور ایک مہینہ وساکھ اکتیس دن کا هوتا ہے، اور دو مہینے جیٹھ اور ہاڑ بتیس بتیس دن کے هوتے ہیں۔

مہینہ
1 چیتر مارچ اور اپریل کے درمیان میں آنے والا مہینہ
2 وساکھ اپریل اور مئی کے درمیاں میں آنے والا مہینه
3 جیٹھ مئی اور جون کے درمیاں میں آنے والا مہینه
4 هاڑ جون اور جولائی کے درمیاں میں آنے والا مہینه
5 ساون جولائی اور اگست کے درمیاں میں آنے والا مہینه
6 بھادوں آکست اور ستمبر کے درمیاں میں آنے والا مہینه
7 اسوں ستمبر اور اکتوبر کے درمیاں میں آنے والا مہینه
8 کتیں یا کتک اکتوبر اور نومبر کے درمیاں میں آنے والا مہینه
9 مگھر نومبر اور دسمبر کے درمیاں میں آنے والا مہینه
10 پوھ دسمبر اور جنوری کے درمیاں میں آنے والا مہینه
11 مانگھ جنوری اور فروری کے درمیاں میں آنے والا مہینه
12 پھاگن فروری اور مارچ کے درمیاں میں آنے والا مہینه

بکرمی کلینڈر ( جنتری) میں ایک دن کے اٹھ پہر ہوتے ہیں، ایک پہر جدید گھڑی کے مطابق تین گھنٹوں کا ہوتا ہے

ان پہروں کے نام یہ ہیں:

دھمی دا ویلا: صبح 6 بجے سے 9 بجے تک کا وقت

دوپہر دا ویلا : صبح کے 9 بچے سے دوپہر 12 بجے تک کا وقت

پیشی دا ویلا : دوپہر کے 12 سے دن 3 بجے تک کا وقت

دیگر دا ویلا: سہ پہر 3 بجے سے شام 6 بجے تک کا وقت

نماشاں دا ویلا: رات کے اوّلین لمحات، شام 6 بجے سے لے کر رات 9 بجے تک کا وقت

کفتاں دا ویلا: رات 9بجے سے رات 12بجے تک کا وقت

ادھ رات دا ویلا: رات 12 بجے سے سحر کے 3 بجے تک کا وقت

اسور دا ویلا: صبح کے 3 بجے سے صبح 6 بجے تک کا وقت

لفظ " ویلا " وقت کے معنوں میں بر صغیر کی کئی زبانوں میں بولا جاتا ہے


تقویم (ماہ و سال)