یسوع کی تاریخیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

یسوع کی تاریخیت (انگریزی: Historicity of Jesus)، سے مراد ان مآخذ پر مشوش ہونا ہے جو یسوع ناصری کو تاریخی شخصیت ظاہر کرتے ہیں۔[1][صفحہ درکار][2]:168-173 وقت اور مقام کے سیاق و سباق کی بنیاد پر خدشہ اصل میں یہ ہے کہ حقیقت میں کیا ہوا تھا؟ اور یہ بھی مسئلہ ہے کہ جدید مبصرین کو کیسے علم ہو سکتا ہے کہ حقیقت میں کیا ہوا تھا؟۔ مسیح کی تاریخ کا موضوع تاریخی مسیح کے موضوع سے الگ ہے۔ اس موضوع کا مقصد اسے خیالی یا حقیقی ظاہر کرنا نہیں بلکہ اس کی شروع سے اب تک کی تاریخ کا ایک خط الوقت بیان کرنا ہے، جو لوگ اس کے متعلق بیان کرتے آئے ہیں۔[3][4][5] جبکہ تاریخی مسیح کے موضوع میں مسیح کی شخصیت کے ایک حقیقی تاریخی انسان ہونا یا نہ ہونا زیر بحث لایا جاتا ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Bart D. Ehrman (20 مارچ 2012)۔ Did Jesus Exist?: The Historical Argument for Jesus of Nazareth۔ HarperCollins۔ آئی ایس بی این 978-0-06-208994-6۔ 
  2. Mark Allan Powell (1998)۔ Jesus as a Figure in History: How Modern Historians View the Man from Galilee۔ Westminster John Knox Press۔ آئی ایس بی این 978-0-664-25703-3۔ 
  3. Amy-Jill Levine؛ Dale C. Allison Jr.؛ John Dominic Crossan (16 اکتوبر 2006)۔ The Historical Jesus in Context۔ مطبع جامعہ پرنسٹن۔ صفحات 1–2۔ آئی ایس بی این 0-691-00992-9۔ 
  4. Bart D. Ehrman (1999)۔ Jesus: Apocalyptic Prophet of the New Millennium۔ Oxford University Press۔ صفحات ix–xi۔ آئی ایس بی این 978-0-19-512473-6۔ 
  5. James D. G. Dunn (2003)۔ Jesus Remembered۔ Wm. B. Eerdmans Publishing۔ صفحات 125–127۔ آئی ایس بی این 978-0-8028-3931-2۔