سڈنی کیفے میں یرغمالی کا بحران، 2014ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
2014 Sydney hostage crisis
2014 Sydney hostage crisis 02.jpg
عوام لنٹ چاکلیٹ کیفے کے باہر جمع ہیں۔
مقام مارٹن پلیس، سڈنی، نیو ساؤتھ وال، آسٹریلیا
متناسقات 33°52′05″S 151°12′40″E / 33.86796°S 151.21113°E / -33.86796; 151.21113متناسقات: 33°52′05″S 151°12′40″E / 33.86796°S 151.21113°E / -33.86796; 151.21113
تاریخ 15–16 دسمبر 2014
9:44 صبح۔ – 2:44 صبح۔ (AEDT، UTC+11:00)
نشانہ کیفے کا عملہ اور گاہک
حملے کی قسم Hostage-taking
ہلاکتیں 3 (including the perpetrator)[1][2]
غیر مہلک نقصانات 6[3]
متاثرین 17 hostages[4]
مرتکبین شیخ ہارون (Man Haron Monis)[5][6][7]
مقصد ابھی طے نہیں ہوا


15اور 16 دسمبر 2014ء کو آسٹریلیا کے شہر نیو ساؤتھ ویلز کے لنٹ کیفے میں شیخ ہارون[6][7] نامی ایرانی پناہ گزین نے 17 گاہکوں اور کیفے کیفے ملازمین کو یرغمال بنا لیا، 16 گھنٹوں کے تعطل کے بعد، قریبی عمارات اور علاقے کو خالی کر کر پولیس نے دھاوا بول دیا، جس میں 3 افراد، شیخ ہارون کو ملا کرمارے گئے[9]۔

محاصرے کے نتیجے میں، سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ کی سٹرک بند کر دی گئی ہے اس کے علاوہ یہ علاقہ اردگرد کی عوام کے لیے بند کر دیا گيا تھا اور کچھ قریبی سرکاری عمارات بھی[9]۔ سڈنی وقت کے مطابق 16 دسمبر کی رات 2:14 منٹ پر کیفے پر پولیس نے دھاوا بول دیا[10]۔[11]

واقعات[ترمیم]

لنٹ چاکلیٹ، مارٹن پلیس کی شاخ، تصویر 2013ء

چھاپا[ترمیم]

یرغمالی[ترمیم]

پولیس مارٹن پلیس کو بند کیے ہوئے

ابتدائی طور پر 13 افراد کے اندر ہونے کا اندازہ لگا يا گيا تھا۔ فرار ہونے والے یرغمالیوں سے متواتر معلومات حاصل کرنے کے بعد، حکام نے زیادہ سے زیادہ دس یرغاملیوں کے اندو ہونے کا اندیشہ ظاہر کیا[5]۔ فرار ہونے والے یرغمالیوں میں سے ایک کو اسپتال منتقل کیا گيا ہے[12] وہ خطرے کی حالت میں نہیں تھا[13]۔

اثرات[ترمیم]

لنٹ کیفے کے مقام اور صورت حال کا نقشہ

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Sydney siege ends in tragedy"۔ Yahoo!7 News۔ "Seven Network reporter Chris Reason.۔.۔ said the two dead are the gunman and a hostage. The hostage was killed by the gunman." 
  2. Daniel Fallon؛ Jacob Saulwick (16 دسمبر 2014)۔ "Lindt Cafe hostage drama in Martin Place, Sydney: day two"۔ Sydney Morning Herald۔ اخذ کردہ بتاریخ 15 دسمبر 2014۔ "Fairfax Media has been told that two people are dead, one of whom is the gunman, Man Haron Monis." 
  3. Tony Abbott says questions over why Sydney siege gunman was out on bail | Australia news | The Guardian
  4. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ smh-127suz نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  5. ^ ا ب نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ LIVE STREAM: Gunman forcing hostages to stand against cafe windows in Sydney siege نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  6. ^ ا ب نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ age-Monis نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  7. ^ ا ب نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ abc-Monis نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  8. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ foxnews1215 نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  9. ^ ا ب نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ businessinsider-happening نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  10. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ abc-blog نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  11. "Sydney cafe siege: Australia police storm building"۔ BBC News۔ 15 دسمبر 2014۔ 
  12. "Press conference with NSW Police Chief Commissioner Scipione"۔ ABC News۔ 15 دسمبر 2014۔ 
  13. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ Gunman 'with a political motivation' holds hostages in Sydney, Australia نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔