ضلع مٹیاری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ضلع مٹیاری
نشست
جیوکوڈ 7419157[1]  Change value جیونیمز آئی ڈی (P1566) in Wikidata
ویب سائٹ

ضلع مٹیاری پاکستان کے صوبہ سندھ کا ایک ضلع ہے۔ 4 اپریل 2005ء نے جب سابق وزیر اعلی ارباب غلام رحیم کی حکومت نے ضلع حیدرآباد کو چار حصوں میں تقسیم کیا تو تخلیق پانے والے اضلاع میں یہ ضلع بھی شامل تھا۔ منقسم ضلع حیدرآباد کے بطن سے جنم لینے والے ضلع مٹیاری میں مٹیاری اور ہالا کی تحصیلیں شامل کی گئیں جبکہ سعید آباد کی نئی تحصیل قائم کر کے اسے بھی ضلع مٹیاری کا حصہ بنایا گیا۔

ضلع کا کل رقبہ 1417 مربع کلومیٹر ہے، جبکہ اندازا اس کی آبادی 5 لاکھ 25 ہزار سے زائد ہے۔

ضلع مٹیاری کی سرحدیں شمال میں ضلع نواب شاہ، جنوب میں ضلع حیدرآباد، مشرق میں ضلع سانگھڑ اور ضلع ٹنڈو الہ یار اور مغرب میں دریائے سندھ سے ملتی ہیں، جس کے پار ضلع جامشورو واقع ہے۔

انتظامی تقسیم[ترمیم]

انتظامی طور پر ضلع تین تحصیلوں (تعلقوں) میں تقسیم ہے:

جبکہ یہ تین تحصیلیں مزید 19 یونین کونسلوں میں تقسیم ہیں۔

اہمیت[ترمیم]

سندھ کے عظیم صوفی شاعر شاہ عبد اللطیف بھٹائی کے مزار کے باعث اس ضلع کو اہم تاریخی حیثیت حاصل ہے جبکہ ہالا میں مخدوم نوح کی درگاہ اور شاہ عبد اللطیف کی جائے پیدائش ہالا حویلی یہاں کے دیگر تاریخی مقامات ہیں۔

یہ ضلع قومی شاہراہ (این-5) کے ذریعے ملک بھر سے ملا ہوا ہے، جبکہ مرکزی ریلوے لائن بھی اس ضلع سے گزرتی ہے۔

اہم شخصیات[ترمیم]

اس چھوٹے سے ضلع سے متعدد اہم شخصیات ابھر کر سامنے آئی ہیں جن میں سے چند درج ذیل ہیں:

حوالہ جات[ترمیم]

  1. درآمد شدہ از: جیونیمز — ربط : جیونیمز آئی ڈی — اجازت نامہ: CC BY 3.0 ان پورٹڈ
  2. قومی تعمیر نو بیورو ضلع ناظمین کی فہرست - سندھ