ولیم ہنری ہیریسن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ولیم ہنری ہیریسن

ولیم ہنری ہیریسن (انگریزی: William Henry Harrison) (پیدائش: 9 فروری 1773ء – انتقال: 4 اپریل 1841ء) ریاستہائے متحدہ امریکا کے عسکری رہنما، سیاست دان اور نویں صدر تھے۔ وہ انڈیانا خطے کے پہلے گورنر اور بعد ازاں اوہائیو سے امریکی نمائندے اور سینیٹر قرار پائے۔ ہیریسن نے پہلے جنگی سورما کی حیثیت سے شہرت حاصل کی جب انہوں نے 1811ء میں جنگ ٹپی کینو میں امریکی ہندیوں کو شکست دی جس پر انہیں "ٹپی کینو" کی عرفیت ملی۔ جرنیل کی حیثیت سے 1812ء میں معرکہ تھیمز میں فتح کو ان کا سب سے اہم جنگی کارنامہ گردانا جاتا ہے، جس کے نتیجے میں ان کے خطے میں جنگوں کا کامیاب اختتام ہوا۔ 1841ء میں جب 68 سال کی عمر میں انہوں نے عہدۂ صدارت سنبھالا تو وہ منتخب صدر بننے والے معمر ترین فرد تھے؛ ان کا ریکارڈ 140 سالوں تک برقرار رہا؛ جب رونالڈ ریگن 1980ء میں 69 سال کی عمر میں منتخب ہوئے۔ 4 مارچ 1841ء کو عہدۂ صدارت سنبھالنے کے بعد آپ نے امریکہ کی تاریخ کا سب سے طویل افتتاحی خطاب کیا جو 8445 الفاظ پر مشتمل تھا۔ دو گھٹے طویل اس خطاب کے موقع پر سخت سرد موسم کے باوجود آپ مناسب گرم ملبوسات میں ہیں تھے جس کی وجہ سے آپ نمونیا کا شکار ہو گئے اور عہدہ سنبھالنے کے محض 30 روز بعد انتقال کر گئے – جو کسی بھی امریکی صدر کا سب سے کم عرصۂ صدارت ہے۔ وہ امریکہ کے پہلے صدر تھے جو عہدۂ صدارت پر رہتے ہوئے انتقال کر گغے۔ ان کے انتقال نے ملک کو آئینی بحران سے دوچار کیا۔