ویکیپیڈیا:دیوان عام/متفرقات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

القاب، خطاب اور دعائیہ جملوں کے مسائل[ترمیم]

تمام ویکی احباب کی توجہ کی ضرورت ہے مسلم اکثریتی ویکیاں جیسے فارسی ویکیپیڈیا اور عربی ویکیپیڈیا پر دعائیہ الفاظ کی کوئی گنجائش نہیں یہ شرف صرف ہماری ویکی کو حاصل ہے کہ ہر جگہ اصل نام کو ترجیح نہیں دی بلکہ علیہ السلام کا استعمال کیا ہے۔ جیسے اسلامی پیغمبر عیسیٰ کا حقیقی نام عیسیٰ ابن مریم ہے اور اس کے ساتھ علیہ السلام جیسے دعائیہ جملے صرف ثواب کے لیے لگائے گئے ہیں ورنہ ویکی کے اصول بھرے پڑے ہیں جن میں القاب کی گنجائش نہیں۔ اور جگہ جگہ ذیلی متن میں رضی اللہ عنہ، رحمۃ اللہ اور حضرت جیسے الفاظ نظر آتے ہیں۔ اب محمد کے نام کے ساتھ مسلم اکثریت والی فارسی ویکیپیڈیا اور عربی ویکیپیڈیا نے بھی درود نہیں استعمال کیا بلکہ اصل نام کو ترجیح دی ہے اور صرف محمد نام رکھنے کی وجہ محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلمکے انگریزی ویکی کے تبادلۂ خیال پر مل جائے گی جو یہ کہ اس میں دیگر مذاہب کے نقطہ نظر شامل ہیں۔ شاید اسے ہماری ویکی پر ثواب کی نیت سے رکھا گیا ہے۔ اگر صرف محمد نہیں تو محمد بن عبد اللہ بھی رکھا جاسکتا ہے۔ اور چند ماہ پہلے علیہ السلام کا تذکرہ ویکی ڈیٹا پر ایک فارسی ویکی صارف نے کیا تھا بات یوں ہوئی تھی اُس صارف نے ایک علیہ السلام والے صفحے پر بائبل والے زمرے کو دیکھ کر اسے دوسرے یعنی مرکزی مضمون میں منتقل کردیا تھا جس پر میں نے سوال کیا تو انہوں نے واپس اسلامی نقطہ نظر والے آئٹم میں اس مضمون کو منتقل کردیا مگر بات ہی بات میں کہہ دیا کہ ”علیہ السلام تو honorific ہے اور ہماری فارسی ویکی پر یہ استعمال نہیں ہوتا اور مگر میں دوسری ویکی کا کچھ کہہ نہیں سکتا“۔ بہر حال مجھے اس مضمون کا نام یاد نہیں مگر اس کا ذکر میں نے شعیب صاحب سے واٹس ایپ پر کیا تھا مگر اُن کی جانب سے کوئی خاص جواب نہیں ملا۔ میرا مقصد کسی کی دل آزاری نہیں آپ لوگ بھی ویکیپیڈیا کے اصول دیکھ اور پڑھ سکتے ہیں۔ وقت نکال کر میری رائے پڑھنے کا شکریہ!-- بخاری سعید تبادلۂ خیال 13:38, 23 اکتوبر 2017 (م ع و)

اردو ویکیپیڈیا برادری کے سامنے اپنے خیالات کو انتہائی مہذب اور شائستہ اسلوب میں پیش کرنے کا یہ عمل قابل تقلید ہے، صدہا مبارک باد قبول فرمائیں۔
آمدم بر سر مطلب، درحقیقت دنیا کی ہر زبان کی ویکی کسی دوسری ویکیپیڈیا کی پابند نہیں ہے، چنانچہ اردو ویکیپیڈیا بھی فروعی امور میں انگریزی، عربی یا فارسی ویکیپیڈیا کی پابند نہیں۔ بنا بریں، کسی معاملے میں مذکورہ ویکیپیڈیاؤں کا عمل حجت نہیں سمجھا جائے گا تا آنکہ اردو ویکیپیڈیا کی برادری اس پر متفق ہو۔ القاب کا معاملہ بھی انہی فروعی مسائل میں شامل ہے، بنیادی طور پر اردو برصغیر کی زبان ہے جہاں کی تہذیب و ثقافت کا اپنا امتیاز ہے۔ یہاں کے عوام اپنے بزرگوں کے ناموں کو القاب کے بغیر لکھنا انتہائی معیوب خیال کرتے ہیں، لیکن برا ہو مسالک کی باہمی منافرت کا کہ ایک بزرگ کسی فرقے کے نزدیک محترم ہے تو دوسرے فرقے کے نزدیک جہنمی۔ اسی انتشار سے بچنے کے لیے ماضی میں ہم ویکیپیڈیا صارفین نے یہ طے کیا تھا کہ تمام متفق علیہ شخصیات کے ساتھ معتدل القاب کا استعمال کریں گے اور ظاہر ہے تمام فرقوں کے نزدیک متفق علیہ شخصیات انبیاے عظام اور صحابہ کرام ہی ہیں۔ اسی ضمن میں ان صحابہ کرام کا مسئلہ بھی زیر بحث تھا جنہیں اہل تشیع محترم نہیں گردانتے، تحقیق سے معلوم ہوا کہ ان کے یہاں بھی ان صحابہ کے ناموں کے ساتھ رضی اللہ عنہ/عنہا لکھنے کا رواج ہے۔ اور یوں یہ طے کر لیا گیا کہ ہم اپنی تہذیب کا خیال رکھتے ہوئے انبیا اور صحابہ کے ناموں کے ساتھ معتدل القاب کو استعمال کریں گے، اس میں کوئی حرج نہیں ہے۔ :) یہ صارف منتظم ہے—خادم—  14:54, 23 اکتوبر 2017 (م ع و)
بجا فر ما رہے ہیں مگر ایسے مضامین کے عنوان حقیقی نام پر مبنی ہونے چاہیے نا کہ دعائیہ جملے ورنہ ویکیپیڈیا معتدل نقطہ نظر کا صفحہ (neutral point of view) موجود بس اسے توجے سے پڑھنے کی ضرورت ہے۔ رہا سوال حرج کا تو مجھے کسی قسم کی تکلیف نہیں مگر ہوسکتا ہے مستقبل میں بھی کوئی میرا جیسا سوال اٹھائے! میرے نزدیک پیغمبران اسلام کے عنوان تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ نام حقیقی ہونا چاہیے۔-- بخاری سعید تبادلہ خیال 15:04, 23 اکتوبر 2017 (م ع و)
صحابہ کے ناموں کے ساتھ بھی رضی اللہ عنہ یا رحمت للہ علیہ کا استعمال، 2 سال پہلے کی ایک ایسی بحث کے تحت طے کر دیا گیا تھا کہ، ان کلمیات کا استعمال عنوان میں کسی صورت قبول نہیں، مضمون کے اندر شروع میں ویکی اصول کے تحت ایک بار لکھا جا سکتا ہے، جیسے سینٹ، ڈیوڈ، گریٹ، کنگ، سید، سر وغیرہ لکھا جاتا ہے، لیکن باقی متن میں ان کی اجازت نہیں۔ انبیائے اسلام کے ناموں کے ساتھ بغیر علیہ السلام لگائے مسئلہ پیدا ہوتا ہے، ویکیپیڈیا کا اصول ہی یہ ہے کہ ہر عنوان کو ایسا ہونا چائیے (یا بالکل اوپر یا تعارف کی ابتدا میں) ہی شخصیت واضع ہو جائے کہ کس شخصیت پر مضمون ہے، جیسے ہم قوسین کا استعمال کرتے ہیں، جیسے پیشے، یا عہدے کا استعمال کیا جاتا ہے، یا سانچہ امتیاز، ضد ابہام اور دیگر وغیرہ کا سانچہ لگا کر وضاحت کر دی جاتی ہے۔ اسی لیے ہم اسلامی انبیا کے نام کے ساتھ عنوان میں علیہ السلام لکھتے ہیں، باقی متن میں بحث ہو سکتی ہے، عام مضامین میں ہم بار بار شخصیت کا ذاتی یا خاندانی نام استعمال کرتے ہیں، جیسے محمد اقبال ہے تو باقی متن میں صرف اقبال لکھا جاتا ہے۔ لیکن ان مضامین میں جب مسلسل علیہ السلام کا استعمال کیا جاتا ہے تو مضمون اسلامی ہو جاتا ہے، متن کے اندر اگر بار بار مجرد موسی لکھنا مناسب نہیں تو نام کی بجائے آپ کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔ تاکہ یہ مسئلہ کسی حد تک کم ہو۔ باقی مہاویر بھی اسی قبیل کا ہے، مہا کے سابقے کے اور بھی عنوان ہو سکتے ہیں اردو ویکی پر۔ عنوان میں القاب کا استعمال منع ہے، لیکن رجوع مکررات کو باقی رکھنا یا بنانا ضروری ہوتا ہے، یہ بھی نہیں کہ ایک شخصیت کے سو رجوع مکرر بنا دیئے جائیں، لیکن، سید، مخدوم، غازی، شہید، مولانا، علامہ، پروفیسر، ڈاکٹر جیسے سابقوں لاحقوں سے رجوع مکررات ضروری ہیں، تاکہ گوگل سرچ یا ویکی پر تلاش کرتے وقت نئے صارف کو دقت نہ ہو۔--Obaid Raza (تبادلۂ خیالشراکتیں) 17:02, 23 اکتوبر 2017 (م ع و)
مہاویر ایک exceptional article ہے بالکل لال شہباز قلندر کی طرح۔ جس کا ایک انگریزی ویکی پر ایک الگ اصول موجود ہے۔ کچھ مقدسین کے ساتھ بھی مقدس لگایا جاتا ہے جو کچھ exceptional مضامین ہوتے ہیں جیسے مقدس یوسف (Saint Joseph) کے ساتھ جو عوام الناس میں اُسی نام سے جانے جاتے ہیں جس طرح لال شہباز قلندر کا حقیقی نام عثمانی مروندی اسی طرح مہاویر کا حقیقی نام وردھمان موجود ہے مگر پھر بھی عوام الناس میں لال شہباز قلندر و مہاویر کے نام سے جانے جاتے ہیں کیونکہ exceptional article کی وجہ سے ان میں اور ان جیسے مضامین میں القاب کی گنجائش پیدا ہوجاتی ہے۔ مگر پیغمبران اسلام کے ساتھ علیہ السلام لگانا NPOV کی خلاف ورزی ہے ایسا کیوں ہے اس کے کئی اصول موجود ہیں مگر وہی بات پڑھنے کی ضرورت ہے۔ انگریزی ویکی پر Jesus in Islam کرکے مضامین بنائے گئے مگر ہماری ویکی پر اسلام میں عیسیٰ عجیب سا لگے گا کیونکہ مسیحیوں و مسلمانوں میں الگ الگ نام بولے جاتے ہیں اسی لیے عیسیٰ ابن مریم ہوسکتا ہے اسی طرح موسیٰ کا موسیٰ بن عمران۔ شاید کچھ مضامین انگریزی ویکی پر اسلامی نقطہ نظر کے جیسے en:Zechariah in Islam انگریزی ویکی پر ضم ہوچکے ہیں مگر شاید ہمیں بھی ایسے مضامین کی درستی کی ضرورت ہے علیہ السلام ختم کرکے مسیحی، اسلامی، یہودی و دیگر مذاہب کے نقطہ نظر کو ایک مضمون میں کرنے کی ضرورت ہے اس سے خود بہ خود عنوان سے علیہ السلام ہٹانا پڑ جائے گا کیونکہ اس وقت اُس مضمون میں تمام نقطہ نظر ہونگے-- بخاری سعید تبادلہ خیال 17:40, 23 اکتوبر 2017 (م ع و)
میرے خیال سے لقب، اعزاز یا دعائیہ کلمات کے نام سے صفحات بنا کر انہیں اصل مضمون کی طرف رجوع مکرر کیا جا سکتا ہے، تاکہ ان کلمات سے تلاش کرنے والوں کو آسانی ہو۔ جملہ مذاہب کے صارفین/افراد عناوین میں اپنی محترم شخصیات کے ساتھ القاب/دعائیہ کلمات لگا کر اسے اصل مضمون سے رجوع مکرر کر سکتے ہیں مثلاً بہاء اللہ کے لیے حضرت بہاء اللہ۔-- بخاری سعید تبادلہ خیال 05:41, 24 اکتوبر 2017 (م ع و)
@Obaid Raza: یہ معاملہ ماند پڑ گیا ہے گزارش ہے کہ ایشیائی مہینہ کی طرح اس معاملے کے لیے بھی MediaWiki message delivery سے تمام صارفین کو یہاں متوجہ کیا جانا چاہیے۔ تاکہ علیہ السلام اور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے معاملے پر رائے شماری کی جاسکے کہ آیا یہ استعمال کریں یا دوسری ویکیوں اور وپ:معتدل نقطہ نظر کے تحت اسے خارج کردیں؟ یہ دعائیہ جملے ہم دل میں بھی پڑھ سکتے ہیں میرے خیال سے ضروری نہیں کہ اس پلیٹ فارم پر ان دعائیہ جملوں کی ضرورت ہے۔— بخاری سعید تبادلہ خیال 13:47, 14 نومبر 2017 (م ع و)
ہم ان امور کے بارے میں پہلے ہی اتفاق رائے سے فیصلہ کر چکے ہیں۔ اس لیے یہ رائے شماری غیر ضروری ہے۔ ہم نے طے کیا تھا کہ ہم انبیاء کےناموں کے ساتھ علیہ السلام لکھیں گے، صحابہ کرام کے ساتھ رضی اللہ عنہ اور اگر کوئی بزرک القاب سے مشہور ہے تو اسی سے لکھا جائے گا، آپ کو اس سے اختلاف ہے ، کوئی بات نہیں، پہلے یہ متفقہ فیصلہ تھا، اب بھی یہ اکثریتی فیصلہ ہے۔ دوسرا اردو ویکی پیڈیا اپنی پالیسیاں بنانے میں آزاد ہے، کسی دوسرے ویکی کی پالیسیوں پر چلنے کا پابند نہیں۔ ہاں ہم اگر ہم نے کوئی پالیسی نہیں بنائی تو ہم دوسرے ویکی کی پالیس جو بظاہر مناسب لگتی ہو پر عمل کرتے ہیں۔--امین اکبر (تبادلۂ خیالشراکتیں) 05:15, 15 نومبر 2017 (م ع و)
میرے رائے بھی محترم امین اکبر سے مختلف نہیں۔ محمد عارف سومرو (تبادلۂ خیالشراکتیں) 05:31, 15 نومبر 2017 (م ع و)
جن کو ہم اور آپ "علیہ السلام" یا "رضی اللہ عنہ" کہہ کر دعا دیتے ہیں کیا دوسرے مذاہب والے ان کو انہی ناموں سے بلاتے ہیں؟ اور حیرت ہوتی ہے اس ویکیپیڈیا کو دیکھ کر محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم والا مضمون مکمل خالص اسلامی مقالہ ہے (شاید دوسرے مذاہب کے نقطہ نظر شامل کرنے کی زحمت نہیں کی گئی) مگر پھر بھی اسلام میں محمد (مگر کیوں محمد کا دوسرا مضمون تو پہلے سے ہے؟ ) موجود ہے۔ درود اور علیہ السلام تو ٹھیک ہے مگر رضی اللہ عنہ/عنہا غلط ہوگا شاید ایک اسلامی فرقہ اس کا استعمال نہیں کرتا۔ میں نے تو بات ہی درود اور علیہ السلام کی کری ہے وہ صرف ثواب کی نیت سے لکھے جاسکتے ہیں معتدل نقطہ نظر کے تحت نہیں۔ رائے شماری دوبارہ ہونی چاہیے۔ ایسی کونسی سے پالیسی ہے جو ہم انگریزی ویکیپیڈیا کی نقل نہیں کرتے؟ یہ اور تمام ویکیاں انگریزی ویکیپیڈیا کے ترجمہ کا ایک نسخہ ہے تو ان کے بنائے گئے باقی قوانین پر عمل کیوں نہیں؟ مجھے بزرگان مذہب کے القاب سے کسی قسم کا اختلاف نہیں لال شہباز قلندر جیسے exceptional مضامین کا میں نہیں کہہ رہا میرا اختلاف دعائیہ جملوں سے ہے۔ — بخاری سعید تبادلہ خیال 09:50, 15 نومبر 2017 (م ع و)

──────────────────────────────────────────────────────────────────────────────────────────────────── میں یہاں اپنی رائے دینا چاہوں گا کہ اردو ویکیپیڈیا اردو صارفین کے لیے ہے نہ کہ مسلمان صارفین کے لیے۔ اس لیے اگر القابات کو ہم مسلم شخصیات کے لیے روا رکھتے ہیں تو ہمیں ہر مذہب کے لیے اسی اصول کو اپنانا ہوگا۔ اگر ہم صرف اسلامی نکتہ نظر کو ترجیح دینا چاہتے ہیں تو پھر اردو ویکپیڈیا کی بجائے اسے اسلامی ویکیپیڈیا کر دیں کیونکہ ویکیپیڈیا کا بنیادی اصول غیرجانبداری ہے۔ یعنی اگر ایک اصول اسلامی مذہبی شخصیات کے لیے روا ہے تو اسے تمام مذاہب کے لیے بھی لاگو کریں، اگر کسی مذہب کو ہماری اکثریت نہیں مانتی (قادیانیت اس کی ایک مثال ہے) تو پھر ہمیں اسلامی شخصیات کے لیے بھی ایسے القابات سے گریز کرنا چاہیے کہ غیرجانبداری اسی کا نام ہے۔اس کا ایک حل یہ ہو سکتا ہے کہ جیسے سیٹنگ میں صارفین اردو یا انگریزی اعداد کو منتخب کر سکتے ہیں، اسی طرح ان کو انبیاء اور دیگر شخصیات کے اسماء کے ساتھ القابات کو منتخب کرنے کی اجازت ہو۔ حساس مسئلہ کو مستحسن انداز سے پیش کرنے کا شکریہ--قیصرانی (تبادلۂ خیالشراکتیں) 12:22, 17 نومبر 2017 (م ع و)

درست کہہ رہے ہیں مگر نام تو اردو ویکیپیڈیا ہی ہے :) مگر مجھے یہ اسلامی ویکیپیڈیا لگتی ہے۔ — بخاری سعید تبادلہ خیال 02:53, 18 نومبر 2017 (م ع و)

رائے[ترمیم]

{{تائید}} سے مراد القاب ہٹا دیے جائیں اور {{تنقید}} مخالفین (جو القاب کے حق میں ہیں) کے لیے ہے۔

تائید[ترمیم]

تنقید[ترمیم]

(تصحیح)_ نورالدین __وکی طالب علم_☺گفتگو . 13:16, 15 جنوری 2018 (م ع و)

تبصرہ[ترمیم]

@امین اکبر: یہی کہ اسلامی انبیاء کرام کہ ساتھ علیہ السلام (عیسیٰ علیہ السلام) رکھا جائے یا نہیں اور محمد کے ساتھ درود لگائیں یا نہیں؟ — بخاری سعید تبادلہ خیال 09:37, 15 نومبر 2017 (م ع و)
جس صارف نے بحث شروع کرائی ہو، اس نے جس نقطہ نظر کی حمایت کی ہے، اس کے لیے تائید اس کے خلاف کے لیے تنقید۔ میرے خیال میں اگر آپ ان دعائیہ کلمات کے مکمل خلاف ہیں تو تائید کریں گے (یعنی صارف کی رائے کی تائید)۔
انبیا کے سوا تمام شخصیات کے ناموں کے ساتھ علیہ السلام، رضی اللہ عنہ (عنہا، عنہما، عنہم) رحمتہ اللہ علیہ، رح، رض، عل، مرحوم، آنحہانی، ماجدہ، ماجد (جیسے والدماجد) حضرت، حضور، (سید اور سیدہ جب اصلی نام کا حصہ نہ ہوں)، آمین (بطور دعا)، لعنت اللہ (بطور دعا) بارک اللہ (بطوردعا) ایسے اور بھی کلمات و الفاظ ہیں۔ ان کا استعمال ممنوع۔ (استشنا کی صورت، صرف یہ کہ (مسلمان یا جو فرقہ یا مذہب جس دعائیہ کلمے سے یاد کرتا ہے) وہ ان ہی کی طرف نسبت کر کے بیان کیا جائے) (مثال: مسلمان ان کا نام حضرت عیسی علیہ السلام لکھتے اور بولتے ہیں، مثال: حسین ابن علی کے نام کے ساتھ اہل تشیع امام کا سابقہ اور علیہ السلام کا لاحقہ لگاتے ہیں، دیگر فرقے امام کا سابقہ تو لگاتے ہیں لیکن اکثر علیہ اسلام کی بجائے، رضی اللہ عنہ لکھتے اور بولتے ہیں)۔
دو درجن شخصیات ہیں جن کے لیے ہم نے یہ تخصیص کی ہوئی ہے، یہ کوئی بڑی تعداد نہیں ہے، ویکی اصول کم از کم ایسے نام سے نہیں روکتا جو مقامی زبان میں ہمیشہ ایک ہی طرح لکھا جائے، بولا جائے۔ اگر بعض شخصیات کے ناموں کے ساتھ، پاک، سید، مخدوم، شہید کا سابقہ یا لاحقہ اس لیے قبول ہے کہ وہ اصل نام سے زیادہ معروف ہے بلکہ وہ سابقہ یا لاحقہ لگائے بغیر شخصیت مبہم ہو جائے تو یہ اصول انبیائۓ اسلام پر لاگو ہوتا ہے۔ (اردو بولنے والوں کی بڑی تعداد مسلمان ہے اور ہم جب معروف نام و رواج کی یا مستعمل یا متروک کا بولیں گے تو اس سے مراد خاص اردو زبان میں اس شخصیت یا لفظ کے بارے میں وہ رائے ہو گی۔— سابقہ غیر دستخط شدہ تبصرہ از Obaid Raza (تبادلۂ خیالشراکتیں)
"اردو بولنے والوں کی بڑی تعداد مسلمان ہے اور ہم جب معروف نام و رواج کی یا مستعمل یا متروک کا بولیں گے تو اس سے مراد خاص اردو زبان میں اس شخصیت یا لفظ کے بارے میں وہ رائے ہو گی۔"
جواب: انگریزی ویکیپیڈیا پر انگریزی بولنے والوں کی بڑی تعداد مسیحیوں کی ہے اور مسیحیوں میں معروف نام اور رواج "یسوع خدا کا بیٹا" (Jesus the Son of God) بولنے کا ہے مگر انہوں نے تو یسوع کو خدا بیٹا نہیں لکھا اور نہ کسی کہ ساتھ دعائیہ جملے چپکائے جیسے درود، علیہ السلام وغیرہ؟ — بخاری سعید تبادلہ خیال 15:13, 17 نومبر 2017 (م ع و)
انگریزی عالمی زبان ہے، اور انگریزی ویکیپیڈیا دنیا بھر کے لیے ہے، اردو یا سندھی علاقائی زبانیں ہیں، انگریزی ویکی پر مریمیات اور مسیحیت متعلقہ مضامین کی تعداد دیکھ لیں، اور ان میں استعمال کیے جانے والے القابات، خطابات اور دعائیہ الفاظ کا ترجمہ کریں، (بے شک وہ صرف تعارف کی حد تک ہے، جس کی میں اردو ویکی پر حمایت کر رہا ہوں) عہد نامہ کی ایک ایک کتاب، ایک ایک باب، اور ایک ایک آیت پر مضمون ہے، بلکہ عبرانی ویکی و انگریزی ویکی پر تو بائبل میکں جن قبائل اور شخصیات کے فقط نام ہیں، ان پر دو دو سطروں کے مضامین موجود ہیں، غیر جانبداری کا دعوی وہاں صرف غیر مسیحیوں کے لیے ہے۔ اور انگریزی بولنے والے ہمیشہ خدا کا بیٹا کہتے ہیں، اس کا ثبوت دیں؟ علیہ السلام یا درود نام کا حصہ ہے۔--Obaid Raza (تبادلۂ خیالشراکتیں) 17:35, 17 نومبر 2017 (م ع و)
میں نے کب کہا کہ "ہمیشہ خدا کا بیٹا بولتے ہیں" اس طرح تو عیسیٰ کو بھی عیسیٰ ابن مریم بولا جاتا ہے ہمیشہ علیہ السلام نہیں لگایا جاتا۔ وہ جو آپ ایک ایک آیت، باب کے قبائل اور شخصیات کا کہہ رہے ہیں وہ ویکی منصوبہ بائبل کے تحت تخلیق کیے گئے ہیں۔ :) — بخاری سعید تبادلہ خیال 18:15, 17 نومبر 2017 (م ع و)
@قیصرانی: بھائی {{تائید}} سے مراد القاب ہٹا دیے جائیں اور {{تنقید}} مخالفین (جو القاب کے حق میں ہیں) کے لیے ہے۔ — بخاری سعید تبادلہ خیال 12:59, 17 نومبر 2017 (م ع و)
شکریہ--قیصرانی (تبادلۂ خیالشراکتیں) 13:17, 17 نومبر 2017 (م ع و)
اس موقف کی مخالفت کرنے کے لیے ایک دلیل میرے پاس یزید بن معاویہ اور مالک بن اشتر کی ہے ۔ _ نورالدین __وکی طالب علم_☺گفتگو . 11:57, 10 جنوری 2018 (م ع و)
@Nooruddin2020: اگر تنقید کررہے ہیں تو تنقید میں {{تنقید}} استعمال کریں تائید نہیں اور یہاں صرف پیغمبران اسلام کے القاب ہٹانے یا رکھنے کی بحث جاری ہے اور باقی رحمتہ اللہ رضی اللہ ویسے ہی ممنوع ہے۔— بخاری سعید تبادلہ خیال 12:03, 10 جنوری 2018 (م ع و)
رائے کے عنوان / سرخی سے اوپر مبہم انداز میں کافی کچھ لکھا گیا ۔ مگر پھر بھی سمجھ نہيں آ رہا کہ ہم جو تائید کریں گے وہ کس موقف کی تائید ہو گی یا جو تنقید کریں گے وہ کس موقف کی تنقید ہو گی ۔ بہتر ہو گا کہ رائے کے سرخی میں محض ایک جملے پر مبنی موقف لکھا جائے تا کہ نیچے لکھی تائید اور تنقید بھی واضح ہو سکے ۔ میں نے رائے میں جو رائے جملہ /موقف لکھا تھا اس کو مٹا دیا گیا ۔ تو اس کے بعد جو صحیح جملہ ہے وہ تو لکھ دیں کہ یہ رائے کس بارے میں ہو رہی ہے ۔ ویسے میری رائے میں انبیاء کے نام کے ساتھ حضرت اور علیہ السلام نہ ہی لکھا جائے ۔ کیوں کہ ویکی پیڈیا اردو ہو یا انگریزی بہر حال اس کے قواعد کی بنیاد غیر جانب داری ہی ہے ۔ جانب داری بہر حال غلط ہے چاہے وہ اقلیت کی ہو یا اکثریت کی ۔ ہاں ہم اپنے گھر میں ، اپنے ذات میں ، اور اپنے حلقہ احباب میں آزاد ہیں کہ ان القابات کا استعمال اپنے مذہبی جذبات کے مطابق ضرور کریں ۔ _ نورالدین __وکی طالب علم_☺گفتگو . 13:52, 10 جنوری 2018 (م ع و)

فی البدیہہ؟[ترمیم]

احباب گرامی! لغات اور اردو تحریروں کے تتبع سے معلوم ہوتا ہے کہ اردو کی مشہور ترکیب فی البدیہہ کے دو املا مستعمل ہیں، فی البدیہ اور فی البدیہہ۔ اور اردو ویکیپیڈیا کے مضامین میں بھی دونوں املا ملتے ہیں تاہم فی البدیہہ زیادہ مستعمل ہے۔ دائرۃ المعارف میں یکسانی برقرار رکھنے کے لیے ہمیں کسی ایک املا کو اختیار کرنا ہوگا۔ امید ہے احباب ذیل میں اپنی آرا سے نوازیں گے، ممنون! :) یہ صارف منتظم ہے—خادم—  مورخہ 18 فروری 2018ء، بوقت 6 بج کر 12 منٹ (بھارت)

فی البدیہہ[ترمیم]

فی البدیہ[ترمیم]

  • Symbol support vote.svg تائید، مادہ کی تحقیق سے معلوم ہوا کہ اسے فی البدیہ ہونا چاہیے۔ :) یہ صارف منتظم ہے—خادم—  مورخہ 18 فروری 2018ء، بوقت 6 بج کر 52 منٹ (بھارت)

تبصرہ[ترمیم]

تبصرہ: میرے خیال سے دونوں کو درست مانا جانا چاہیے۔ اور دونوں استعمال کرنے چاہیے — بخاری سعید تبادلہ خیال 13:30, 18 فروری 2018 (م ع و)

تبصرہ: عربی میں فی البدیہۃ اور فی البداہۃ ہے اور اردو میں فی البدیہ غلط استعمال ہے۔ چونکہ مکمل عربی ترکیب ہے اور اس میں ارتجال نہیں ہوا ہے توفی البدیہہ صحیح ہے۔--علی نقی (تبادلۂ خیالشراکتیں) 16:28, 18 فروری 2018 (م ع و)