البندری بنت عبد العزیز آل سعود

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
البندری بنت عبد العزیز آل سعود
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش سنہ 1928  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 8 مارچ 2008 (79–80 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ریاض  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Saudi Arabia.svg سعودی عرب  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شریک حیات بندر بن محمد السعود  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد عبدالعزیز ابن سعود  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
لطیفہ بنت عبد العزیز آل سعود،  صیتہ بنت عبد العزیز آل سعود،  الجوہرہ بنت عبد العزیز آل سعود،  عبداللہ بن عبدالعزیز،  مساعد بن عبدالعزیز آل سعود،  متعب بن عبدالعزیز آل سعود،  فہد بن عبدالعزیز،  محمد بن عبدالعزیز آل سعود،  ترکی اول بن عبدالعزیز آل سعود،  خالد بن عبد العزیز،  فیصل بن عبدالعزیز آل سعود،  سعود بن عبدالعزیز،  ترکی ثانی بن عبدالعزیز آل سعود،  مشعل بن عبد العزیز آل سعود،  عبدالرحمان بن عبدالعزیز آل سعود،  سطام بن عبدالعزیز آل سعود،  سلطان بن عبدالعزیز،  نائف بن عبدالعزیز آل سعود،  سلمان بن عبدالعزیز،  احمد بن عبدالعزیز آل سعود،  عبدالمجید بن عبدالعزیز آل سعود،  ہذلول بن عبدالعزیز آل سعود،  بدر بن عبدالعزیز آل سعود،  فواز بن عبدالعزیز آل سعود،  مشہور بن عبدالعزیز آل سعود،  عبد الالہ بن عبدالعزیز آل سعود،  بندربن عبدالعزیز آل سعود،  ممدوح بن عبدالعزیز آل سعود،  منصور بن عبدالعزیز آل سعود،  ناصر بن عبدالعزیز آل سعود،  نواف بن عبدالعزیز آل سعود،  طلال بن عبدالعزیز آل سعود،  سعد بن عبدالعزیز آل سعود،  مقرن بن عبدالعزیز آل سعود،  ثامر بن عبدالعزیز آل سعود،  حمود بن عبدالعزیز آل سعود،  عبد المحسن بن عبدالعزیز آل سعود،  ماجد بن عبدالعزیز آل سعود،  مشاری بن عبدالعزیز آل سعود،  ہیا بنت عبد العزیز آل سعود،  لؤلؤہ بنت عبد العزیز آل سعود،  سلطانہ بنت عبد العزیز آل سعود  ویکی ڈیٹا پر (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
خاندان آل سعود  ویکی ڈیٹا پر (P53) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

البندری بنت عبدالعزیز آل سعود (1928ء–2008ء) سعودی عرب کے شاہ عبدالعزیز کی بیٹی تھیں۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

البندری 1928ء میں پیدا ہوئیں۔ وہ شاہ عبدالعزیز اور جوہرہ بنت سعد بن عبدالمحسن السدیری کی بیٹی تھیں۔ ان کی والدہ کی شادی شاہ عبدالعزیز کے بھائی سعد بن عبدالرحمن سے ہوئی تھی۔ [1] 1915 ءمیں کنزان کی لڑائی میں سعد کی موت کے بعد، انھوں نے عبدالعزیز سے شادی کی اور ان کے چار بچے البندری، سعد، عبدالمحسن اور موسیٰ تھے۔ [1][2]

بہن بھائی[ترمیم]

لطیفہ بنت عبد العزیز آل سعود، صیتہ بنت عبد العزیز آل سعود، الجوہرہ بنت عبد العزیز آل سعود، عبداللہ بن عبدالعزیز، مساعد بن عبدالعزیز آل سعود، متعب بن عبدالعزیز آل سعود، فہد بن عبدالعزیز، محمد بن عبدالعزیز آل سعود، ترکی اول بن عبدالعزیز آل سعود، خالد بن عبد العزیز، فیصل بن عبدالعزیز آل سعود، سعود بن عبدالعزیز، ترکی ثانی بن عبدالعزیز آل سعود، مشعل بن عبد العزیز آل سعود، عبدالرحمان بن عبدالعزیز آل سعود، سطام بن عبدالعزیز آل سعود، سلطان بن عبدالعزیز، نائف بن عبدالعزیز آل سعود، سلمان بن عبدالعزیز، احمد بن عبدالعزیز آل سعود، عبدالمجید بن عبدالعزیز آل سعود، ہذلول بن عبدالعزیز آل سعود، بدر بن عبدالعزیز آل سعود، فواز بن عبدالعزیز آل سعود، مشہور بن عبدالعزیز آل سعود، عبد الالہ بن عبدالعزیز آل سعود، بندربن عبدالعزیز آل سعود، ممدوح بن عبدالعزیز آل سعود، منصور بن عبدالعزیز آل سعود، ناصر بن عبدالعزیز آل سعود، نواف بن عبدالعزیز آل سعود، طلال بن عبدالعزیز آل سعود، سعد بن عبدالعزیز آل سعود، مقرن بن عبدالعزیز آل سعود، ثامر بن عبدالعزیز آل سعود، حمود بن عبدالعزیز آل سعود، عبد المحسن بن عبدالعزیز آل سعود، ماجد بن عبدالعزیز آل سعود، مشاری بن عبدالعزیز آل سعود، ھیا بنت عبد العزیز آل سعود، لؤلؤہ بنت عبد العزیز آل سعود، سلطانہ بنت عبد العزیز آل سعود۔

ذاتی زندگی[ترمیم]

البندری کی شادی بندر بن محمد بن عبدالرحمن آل سعود سے ہوئی تھی، جو روپالی بینک کے مالک نامزد تھے۔ ان کی بیٹیوں میں سے ایک نورہ محمد بن عبداللہ بن فیصل کی شریک حیات تھیں۔

اگست 1984ء میں البندری کی نیویارک شہر میں جلد کی سرجری ہوئی جو ماہر امراض جلد جوزف ایلر نے کی تھی۔

موت[ترمیم]

البندری کا انتقال 8 مئی 2008ء کو ریاض کے کنگ فیصل سپیشلسٹ ہسپتال میں 80 سال کی عمر میں ہوا۔ ان کی نماز جنازہ شہر کی امام ترکی بن عبداللہ مسجد میں ادا کی گئی۔ پورے مشرق وسطیٰ سے شاہ عبداللہ اور سعودی شاہی خاندان کو تعزیتی پیغامات بھیجے گئے۔ کویت کے امیر صباح الاحمد الجابر الصباح، عمان کے قابوس بن سعید، بحرین کے بادشاہ حمد بن عیسی آل خلیفہ، قطر کے امیر حمد بن خلیفہ آل ثانی اور ان کے بیٹے شیخ تمیم بن کی جانب سے تعزیتی پیغامات آئے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Appendix 6. The Sons of Abdulaziz" (PDF). Springer. 13 اکتوبر 2020 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 اگست 2020. 
  2. Sharaf Sabri (2001). The House of Saud in Commerce: A Study of Royal Entrepreneurship in Saudi Arabia. Sharaf Sabri. صفحہ 162. ISBN 978-81-901254-0-6.