مشرقی بنگال اور آسام

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
পূর্ব বাংলা এবং আসাম
পূৰ্ৱবঙ্গ আৰু অসম
ꠙꠥꠛ ꠛꠣꠋꠉꠟꠣ ꠀꠞ ꠅꠢꠝ
Eastern Bengal and Assam
برطانوی ہند کے صوبے اور علاقے the برطانوی راج
16 اکتوبر 1905–21 مارچ 1912

Flag of Eastern Bengal and Assam

پرچم

Location of Eastern Bengal and Assam
Eastern Bengal and Assam in 1907, bordered by British Indian Bengal and Bihar, نیپال، بھوٹان، British Burma و تبت
تاریخی دور New Imperialism
 -  تقسیم بنگال 16 اکتوبر 1905
 -  Creation of بنگال پریزیڈنسی و Assam Province 21 مارچ 1912
آج کا حصہ بنگلہ دیش
بھارت

مشرقی بنگال اور آسام 1905ء تا 1912ء برطانوی ہند کا صوبہ تھا۔ اس کا دار الحکومت ڈھاکہ تھا۔ مشرقی بنگال اور آسام میں موجودہ بنگلہ دیش، شمال مشرقی بھارت اور شمال مغربی بنگال کے علاقے آتے تھے۔

تاریخ[ترمیم]

1868ء میں برطانوی انتظامیہ میں بنگال پریزیڈنسی کے شمالی علاقہ میں ایک الگ آزاد انتظامی اکائی کی ضرورت محسوس کی۔ ان کو لگا کہ کولکاتا میں فورٹ ولیم کالج پہلے ہی بیت زیادہ بوجھ اٹھا رہا تھا۔ 1903ء میں حکامت کے سامنے بنگالی کے مشرقی علاقہ میں آسام کے معاشی کاروبار کو توسیع دینے کے لئے ایک الگ سے اکائی بنان اوت بنگال کی تقسیم کا منصوبہ پیش کیا گیا۔ حکومت نے تعلیم اور روزگار میں سرمایہ کاری کا وعدہ کیا اور مشرقی بنگال اور آسام کے نام سے نئی ریاست بنا دی۔۔[1] اس وقت کے گورنر جنرل ہند جارج کرزن نے تقسیم بنگال کا خاکہ پیش کیا اور 16 اکتوبر 1905ء کو اپنا فیصلہ نافذ کردیا۔ مغلیہ عہد کے صوبہ بنگال کا دارالحکومت ڈھاکہ پھر سے دارالحکومت بنا۔ سر بمپفائلڈ فولر نئی ریاست کے پہلے لیفٹینٹ گورنر مقرر ہوئے۔ وہ ایک برس تک اس عہدہ پر رہے اور 1906ء میں استعفی دے دیا۔ ان کے بعد سر لانس لوٹ ہرے (1906ء تا 1911) گورنر رہے اور ان کے بعد سر چالس اسٹوارٹ بائیلے (1911ء تا 1912ء) مشرقی بنگال اور آسام کے گورنر رہے۔ متشدد ہندووں نے بنگال کی اس تقسیم کو پسند نہیں کیا اور انہوں نے اسے تقسیم کرو اور حکومت کرو کی پالیسی کا نام دیا۔ حکومت کے اس قدم سے ایک نیا تنازع کھڑا ہو گیا۔[2] کولکاتا کے تاجر بھی اپنی تجارت کی فکر کرنے لگے کیونکہ کولکاتا میں اب انہیں تجارت کم ہوتی دکھ رہی تھی۔ اسی زمانہ میں ہندو قومیت کی ترویج کے جواب میں آل انڈیا مسلم لیگ کا قیام ڈھاکہ میں عمل میں آیا۔ اب باری ہندووں کی تھی اور انہوں نے اکھل بھارتیہ ہندو مہاسبھا کی بنیاد ڈالی۔ دہلی میں 1911ء میں جارج پنجم نے اعلان کیا کہ علاقہ میں مذہبی تشدد کو دیکھتے ہوئے بنگال کو متحد کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور آسام ایک مستقل ریاست رہے گا۔


مزید دیکھیے[ترمیم]


حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Eastern Bengal and Assam – Encyclopedia"۔ Theodora.com۔ اخذ شدہ بتاریخ 2015-09-24۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  2. "Eastern Bengal and Assam – Banglapedia"۔ En.banglapedia.org۔ اخذ شدہ بتاریخ 2015-09-24۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)


سانچہ:برطانوی راج-نامکمل سانچہ:برطانوی راج-جغرافیہ-نامکمل