پاکستان میں کورونا وائرس کی وبا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پاکستان میں کووڈ -19
COVID-19 Pandemic Cases in Pakistan by administrative unit (per million).png
نقشہ مصدقہ متاثرین فی ملین افراد بلحاظ انتظامی اکائی
  > 20,000 مصدقہ متاثرین فی ملین
  > 10,000 مصدقہ متاثرین فی ملین
  > 5,000 مصدقہ متاثرین فی ملین
  > 2,000 مصدقہ متاثرین فی ملین
  > 1,000 مصدقہ متاثرین فی ملین
  > 500 مصدقہ متاثرین فی ملین
COVID-19 Pandemic Cases in Pakistan by administrative unit.png
نقشہ مصدقہ متاثرین بلحاظ انتظامی اکائی
   100,000 – 199,999 مصدقہ متاثرین
   50,000 – 99,999 مصدقہ متاثرین
   20,000 – 49,999 مصدقہ متاثرین
   10,000 – 19,999 مصدقہ متاثرین
   5,000 – 9,999 مصدقہ متاثرین
   <5,000 مصدقہ متاثرین
COVID-19 Pandemic Deaths in Pakistan by administrative unit.png
Map of مصدقہ اموات بلحاظ انتظامی اکائی
   2,000 – 4,999 مصدقہ اموات
   1,000 – 1,999 مصدقہ اموات
   500 – 999 مصدقہ اموات
   200 – 499 مصدقہ اموات
   100 – 199 مصدقہ اموات
   <100 مصدقہ اموات
مرضکووڈ-19
وائرس نوعسارس کووی 2
مقامپاکستان
پہلا مریضکراچي اور اسلام آباد (ایک ہی دن میں)
تاریخ آمد26 فروری 2020
(1 سال، 3 ماہ، 2 ہفتہ اور 2 دن)
آغازووہان، چین
مصدقہ مریض795,627[1]
صحت یابیاں689,812[1]
اموات
17,117[1]
باضابطہ ویب سائٹ
www.covid.gov.pk
covid19.ajk.gov.pk

اس مضمون میں کرونا 2019ء–2020ء عالمی وبا کے پاکستان میں اثرات کو ترتیب وار قلمبند کیا گیا ہے۔ کورونا وائرس کی وبا دسمبر 2019ء میں پوری دنیا میں پھیلنا شروع ہوئی اور اس کے اثرات پاکستان میں فروری 2020ء میں آنا شروع ہوئے جبکہ چین میں مقیم پاکستانی طالب علم جنوری 2020 میں اس کا شکار ہوئے۔

نومبر 2020 کی صورت حال[ترمیم]

27 نومبر 2020ء تک پاکستان میں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد 389,311 ہے، جن میں سے335,881 افراد صحتیاب ہو چکے ہیں اور 7,897

کی موت ہو چکی ہے۔ اس دوران 5,386,916 ٹیسٹ کئےگئے-[2]

COVID-19 متاثرین پاکستان  ()
     Deaths        صحت یاب        موجودہ مریض

فروری فروری مارچ مارچ اپریل اپریل مئی مئی جون جون جولائی جولائی اگست اگست ستمبر ستمبر اکتوبر اکتوبر نومبر نومبر دسمبر دسمبر جنوری جنوری فروری فروری مارچ مارچ اپریل اپریل اخری 15 دنوں میں اخری 15 دنوں میں

تاریخ
# کل متاثرین
# موت کی
2020-02-26 2(n.a.)
2(=)
2020-02-29 4(+100%)
4(=)
2020-03-03 5(+25%)
2020-03-04 5(=)
2020-03-05 6(+20%)
6(=)
2020-03-09 7(+17%)
2020-03-10
16(+129%)
2020-03-11
19(+19%)
2020-03-12
20(+5.3%)
2020-03-13
21(+5%)
2020-03-14
28(+33%)
2020-03-15
31(+11%)
2020-03-16
53(+71%)
2020-03-17
187(+253%)
2020-03-18
241(+29%)
2020-03-19
302(+25%)
2020-03-20
461(+53%)
2020-03-21
495(+7.4%)
2020-03-22
646(+31%)
2020-03-23
784(+21%)
2020-03-24
887(+13%)
2020-03-25
991(+12%)
2020-03-26
1,057(+6.7%)
2020-03-27
1,197(+13%)
2020-03-28
1,408(+18%)
2020-03-29
1,526(+8.4%)
2020-03-30
1,625(+6.5%)
2020-03-31
1,865(+15%)
2020-04-01
2,039(+9.3%)
2020-04-02
2,291(+12%)
2020-04-03
2,450(+6.9%)
2020-04-04
2,640(+7.8%)
2020-04-05
2,818(+6.7%)
2020-04-06
3,062(+8.7%)
2020-04-07
3,556(+16%)
2020-04-08
4,005(+13%)
2020-04-09
4,207(+5%)
2020-04-10
4,489(+6.7%)
2020-04-11
4,695(+4.6%)
2020-04-12
5,011(+6.7%)
2020-04-13
5,230(+4.4%)
2020-04-14
5,496(+5.1%)
2020-04-15
5,837(+6.2%)
2020-04-16
6,383(+9.4%)
2020-04-17
6,919(+8.4%)
2020-04-18
7,025(+1.5%)
2020-04-19
7,638(+8.7%)
2020-04-20
8,348(+9.3%)
2020-04-21
8,418(+0.84%)
2020-04-22
9,565(+14%)
2020-04-23
10,076(+5.3%)
2020-04-24
11,057(+9.7%)
2020-04-25
11,940(+8%)
2020-04-26
12,723(+6.6%)
2020-04-27
13,328(+4.8%)
2020-04-28
13,915(+4.4%)
2020-04-29
14,612(+5%)
2020-04-30
15,525(+6.2%)
2020-05-01
16,817(+8.3%)
2020-05-02
18,114(+7.7%)
2020-05-03
19,103(+5.5%)
2020-05-04
20,186(+5.7%)
2020-05-05
21,501(+6.5%)
2020-05-06
22,049(+2.5%)
2020-05-07
23,214(+5.3%)
2020-05-08
24,644(+6.2%)
2020-05-09
26,435(+7.3%)
2020-05-10
28,736(+8.7%)
2020-05-11
30,334(+5.6%)
2020-05-12
30,941(+2%)
2020-05-13
32,674(+5.6%)
2020-05-14
34,336(+5.1%)
2020-05-15
35,788(+4.2%)
2020-05-16
37,218(+4%)
2020-05-17
38,799(+4.2%)
2020-05-18
40,151(+3.5%)
2020-05-19
42,125(+4.9%)
2020-05-20
43,966(+4.4%)
2020-05-21
45,898(+4.4%)
2020-05-22
48,091(+4.8%)
2020-05-23
50,694(+5.4%)
2020-05-24
52,437(+3.4%)
2020-05-25
54,601(+4.1%)
2020-05-26
56,349(+3.2%)
2020-05-27
57,705(+2.4%)
2020-05-28
59,151(+2.5%)
2020-05-29
61,227(+3.5%)
2020-05-30
64,028(+4.6%)
2020-05-31
66,457(+3.8%)
2020-06-01
69,496(+4.6%)
2020-06-02
72,460(+4.3%)
2020-06-03
76,398(+5.4%)
2020-06-04
80,463(+5.3%)
2020-06-05
85,264(+6%)
2020-06-06
89,249(+4.7%)
2020-06-07
93,983(+5.3%)
2020-06-08
98,943(+5.3%)
2020-06-09
103,671(+4.8%)
2020-06-10
108,317(+4.5%)
2020-06-11
113,702(+5%)
2020-06-12
119,536(+5.1%)
2020-06-13
125,933(+5.4%)
2020-06-14
132,405(+5.1%)
2020-06-15
139,230(+5.2%)
2020-06-16
144,478(+3.8%)
2020-06-17
148,921(+3.1%)
2020-06-18
154,760(+3.9%)
2020-06-19
160,118(+3.5%)
2020-06-20
165,062(+3.1%)
2020-06-21
171,666(+4%)
2020-06-22
176,617(+2.9%)
2020-06-23
181,088(+2.5%)
2020-06-24
185,034(+2.2%)
2020-06-25
188,926(+2.1%)
2020-06-26
192,970(+2.1%)
2020-06-27
195,745(+1.4%)
2020-06-28
198,883(+1.6%)
2020-06-29
202,955(+2%)
2020-06-30
206,510(+1.8%)
2020-07-01
209,337(+1.4%)
2020-07-02
213,470(+2%)
2020-07-03
217,809(+2%)
2020-07-04
221,896(+1.9%)
2020-07-05
225,283(+1.5%)
2020-07-06
228,474(+1.4%)
2020-07-07
231,818(+1.5%)
2020-07-08
234,509(+1.2%)
2020-07-09
237,489(+1.3%)
2020-07-10
240,848(+1.4%)
2020-07-11
243,599(+1.1%)
2020-07-12
246,351(+1.1%)
2020-07-13
248,872(+1%)
2020-07-14
251,625(+1.1%)
2020-07-15
253,604(+0.79%)
2020-07-16
255,769(+0.85%)
2020-07-17
257,914(+0.84%)
2020-07-18
259,999(+0.81%)
2020-07-19
261,917(+0.74%)
2020-07-20
263,493(+0.6%)
2020-07-21
265,083(+0.6%)
2020-07-22
266,096(+0.38%)
2020-07-23
267,428(+0.5%)
2020-07-24
269,191(+0.66%)
2020-07-25
270,400(+0.45%)
2020-07-26
271,887(+0.55%)
2020-07-27
273,113(+0.45%)
2020-07-28
274,289(+0.43%)
2020-07-29
275,275(+0.36%)
2020-07-30
276,300(+0.37%)
2020-07-31
277,300(+0.36%)
2020-08-01
278,305(+0.36%)
2020-08-02
279,146(+0.3%)
2020-08-03
280,029(+0.32%)
2020-08-04
280,461(+0.15%)
2020-08-05
281,136(+0.24%)
2020-08-06
281,863(+0.26%)
2020-08-07
282,645(+0.28%)
2020-08-08
283,487(+0.3%)
2020-08-09
284,121(+0.22%)
2020-08-10
284,660(+0.19%)
2020-08-11
285,191(+0.19%)
2020-08-12
285,921(+0.26%)
2020-08-13
286,674(+0.26%)
2020-08-14
287,174(+0.17%)
2020-08-15
288,041(+0.3%)
2020-08-16
288,716(+0.23%)
2020-08-17
289,215(+0.17%)
2020-08-18
289,829(+0.21%)
2020-08-19
290,442(+0.21%)
2020-08-20
290,958(+0.18%)
2020-08-21
291,539(+0.2%)
2020-08-22
292,174(+0.22%)
2020-08-23
292,765(+0.2%)
2020-08-24
293,261(+0.17%)
2020-08-25
293,711(+0.15%)
2020-08-26
294,193(+0.16%)
2020-08-27
294,638(+0.15%)
2020-08-28
295,053(+0.14%)
2020-08-29
295,372(+0.11%)
2020-08-30
295,636(+0.09%)
2020-08-31
295,849(+0.07%)
2020-09-01
296,149(+0.1%)
2020-09-02
296,590(+0.15%)
2020-09-03
297,014(+0.14%)
2020-09-04
297,512(+0.17%)
2020-09-05
298,025(+0.17%)
2020-09-06
298,509(+0.16%)
2020-09-07
298,903(+0.13%)
2020-09-08
299,233(+0.11%)
2020-09-09
299,659(+0.14%)
2020-09-10
299,855(+0.07%)
2020-09-11
300,371(+0.17%)
2020-09-12
300,955(+0.19%)
2020-09-13
301,481(+0.17%)
2020-09-14
302,020(+0.18%)
2020-09-15
302,424(+0.13%)
2020-09-16
303,089(+0.22%)
2020-09-17
303,634(+0.18%)
2020-09-18
304,386(+0.25%)
2020-09-19
305,031(+0.21%)
2020-09-20
305,671(+0.21%)
2020-09-21
306,304(+0.21%)
2020-09-22
306,886(+0.19%)
2020-09-23
307,418(+0.17%)
2020-09-24
308,217(+0.26%)
2020-09-25
309,015(+0.26%)
2020-09-26
309,581(+0.18%)
2020-09-27
310,275(+0.22%)
2020-09-28
310,841(+0.18%)
2020-09-29
311,516(+0.22%)
2020-09-30
312,263(+0.24%)
2020-10-01
312,806(+0.17%)
2020-10-02
313,431(+0.2%)
2020-10-03
313,984(+0.18%)
2020-10-04
314,616(+0.2%)
2020-10-05
315,260(+0.2%)
2020-10-06
315,727(+0.15%)
2020-10-07
316,351(+0.2%)
2020-10-08
316,934(+0.18%)
2020-10-09
317,595(+0.21%)
2020-10-10
318,266(+0.21%)
2020-10-11
318,932(+0.21%)
2020-10-12
319,317(+0.12%)
2020-10-13
319,848(+0.17%)
2020-10-14
320,463(+0.19%)
2020-10-15
321,218(+0.24%)
2020-10-16
321,877(+0.21%)
2020-10-17
322,452(+0.18%)
2020-10-18
323,019(+0.18%)
2020-10-19
323,452(+0.13%)
2020-10-20
324,077(+0.19%)
2020-10-21
324,744(+0.21%)
2020-10-22
325,480(+0.23%)
2020-10-23
326,216(+0.23%)
2020-10-24
327,063(+0.26%)
2020-10-25
327,895(+0.25%)
2020-10-26
328,602(+0.22%)
2020-10-27
329,375(+0.24%)
2020-10-28
330,200(+0.25%)
2020-10-29
331,108(+0.27%)
2020-10-30
332,186(+0.33%)
2020-10-31
332,993(+0.24%)
2020-11-01
333,970(+0.29%)
2020-11-02
335,093(+0.34%)
2020-11-03
336,260(+0.35%)
2020-11-04
337,573(+0.39%)
2020-11-05
338,875(+0.39%)
2020-11-06
340,251(+0.41%)
2020-11-07
341,753(+0.44%)
2020-11-08
343,189(+0.42%)
2020-11-09
344,839(+0.48%)
2020-11-10
346,476(+0.47%)
2020-11-11
348,184(+0.49%)
2020-11-12
349,992(+0.52%)
2020-11-13
352,296(+0.66%)
2020-11-14
354,461(+0.61%)
2020-11-15
356,904(+0.69%)
2020-11-16
359,032(+0.6%)
2020-11-17
361,082(+0.57%)
2020-11-18
363,380(+0.64%)
2020-11-19
365,927(+0.7%)
2020-11-20
368,665(+0.75%)
2020-11-21
371,508(+0.77%)
2020-11-22
374,173(+0.72%)
2020-11-23
376,929(+0.74%)
2020-11-24
379,883(+0.78%)
2020-11-25
382,892(+0.79%)
2020-11-26
386,198(+0.86%)
2020-11-27
389,311(+0.81%)
2020-11-28
392,356(+0.78%)
2020-11-29
395,185(+0.72%)
2020-11-30
398,024(+0.72%)
2020-12-01
400,482(+0.62%)
2020-12-02
403,311(+0.71%)
2020-12-03
406,810(+0.87%)
2020-12-04
410,072(+0.8%)
2020-12-05
413,191(+0.76%)
2020-12-06
416,499(+0.8%)
2020-12-07
420,294(+0.91%)
2020-12-08
423,179(+0.69%)
2020-12-09
426,412(+0.76%)
2020-12-10
429,280(+0.67%)
2020-12-11
432,327(+0.71%)
2020-12-12
435,056(+0.63%)
2020-12-13
438,425(+0.77%)
2020-12-14
440,787(+0.54%)
2020-12-15
443,246(+0.56%)
2020-12-16
445,977(+0.62%)
2020-12-17
448,522(+0.57%)
2020-12-18
451,494(+0.66%)
2020-12-19
454,673(+0.7%)
2020-12-20
457,288(+0.58%)
2020-12-21
458,968(+0.37%)
2020-12-22
460,672(+0.37%)
2020-12-23
462,814(+0.46%)
2020-12-24
465,070(+0.49%)
2020-12-25
467,222(+0.46%)
2020-12-26
469,482(+0.48%)
2020-12-27
471,335(+0.39%)
2020-12-28
473,309(+0.42%)
2020-12-29
475,085(+0.38%)
2020-12-30
477,240(+0.45%)
2020-12-31
479,715(+0.52%)
2021-01-01
482,178(+0.51%)
2021-01-02
484,362(+0.45%)
2021-01-03
486,634(+0.47%)
2021-01-04
488,529(+0.39%)
2021-01-05
490,476(+0.4%)
2021-01-06
492,594(+0.43%)
2021-01-07
495,075(+0.5%)
2021-01-08
497,510(+0.49%)
2021-01-09
499,517(+0.4%)
2021-01-10
502,416(+0.58%)
2021-01-11
504,293(+0.37%)
2021-01-12
506,701(+0.48%)
2021-01-13
508,824(+0.42%)
2021-01-14
511,921(+0.61%)
2021-01-15
514,338(+0.47%)
2021-01-16
516,770(+0.47%)
2021-01-17
519,291(+0.49%)
2021-01-18
521,211(+0.37%)
2021-01-19
523,011(+0.35%)
2021-01-20
524,783(+0.34%)
2021-01-21
527,146(+0.45%)
2021-01-22
528,891(+0.33%)
2021-01-23
530,818(+0.36%)
2021-01-24
532,412(+0.3%)
2021-01-25
534,041(+0.31%)
2021-01-26
535,914(+0.35%)
2021-01-27
537,477(+0.29%)
2021-01-28
539,387(+0.36%)
2021-01-29
541,031(+0.3%)
2021-01-30
543,214(+0.4%)
2021-01-31
544,813(+0.29%)
2021-02-01
546,428(+0.3%)
2021-02-02
547,648(+0.22%)
2021-02-03
549,032(+0.25%)
2021-02-04
550,540(+0.27%)
2021-02-05
551,842(+0.24%)
2021-02-06
553,128(+0.23%)
2021-02-07
554,474(+0.24%)
2021-02-08
555,511(+0.19%)
2021-02-09
556,519(+0.18%)
2021-02-10
557,591(+0.19%)
2021-02-11
559,093(+0.27%)
2021-02-12
560,363(+0.23%)
2021-02-13
561,625(+0.23%)
2021-02-14
563,029(+0.25%)
2021-02-15
564,077(+0.19%)
2021-02-16
564,824(+0.13%)
2021-02-17
565,989(+0.21%)
2021-02-18
567,261(+0.22%)
2021-02-19
568,506(+0.22%)
2021-02-20
569,846(+0.24%)
2021-02-21
571,174(+0.23%)
2021-02-22
572,334(+0.2%)
2021-02-23
573,384(+0.18%)
2021-02-24
574,580(+0.21%)
2021-02-25
575,941(+0.24%)
2021-02-26
577,482(+0.27%)
2021-02-27
578,797(+0.23%)
2021-02-28
579,973(+0.2%)
2021-03-01
581,365(+0.24%)
2021-03-02
582,528(+0.2%)
2021-03-03
583,916(+0.24%)
2021-03-04
585,435(+0.26%)
2021-03-05
587,014(+0.27%)
2021-03-06
588,728(+0.29%)
2021-03-07
590,508(+0.3%)
2021-03-08
592,100(+0.27%)
2021-03-09
593,453(+0.23%)
2021-03-10
595,239(+0.3%)
2021-03-11
597,497(+0.38%)
2021-03-12
600,198(+0.45%)
2021-03-13
602,536(+0.39%)
2021-03-14
605,200(+0.44%)
2021-03-15
607,453(+0.37%)
2021-03-16
609,964(+0.41%)
2021-03-17
612,315(+0.39%)
2021-03-18
615,810(+0.57%)
2021-03-19
619,259(+0.56%)
2021-03-20
623,135(+0.63%)
2021-03-21
626,802(+0.59%)
2021-03-22
630,471(+0.59%)
2021-03-23
633,741(+0.52%)
2021-03-24
637,042(+0.52%)
2021-03-25
640,988(+0.62%)
2021-03-26
645,356(+0.68%)
2021-03-27
649,824(+0.69%)
2021-03-28
654,591(+0.73%)
2021-03-29
659,116(+0.69%)
2021-03-30
663,200(+0.62%)
2021-03-31
667,957(+0.72%)
2021-04-01
672,931(+0.74%)
2021-04-02
678,165(+0.78%)
2021-04-03
682,888(+0.7%)
2021-04-04
687,908(+0.74%)
2021-04-05
692,231(+0.63%)
2021-04-06
696,184(+0.57%)
2021-04-07
700,188(+0.58%)
2021-04-08
705,517(+0.76%)
2021-04-09
710,829(+0.75%)
2021-04-10
715,968(+0.72%)
2021-04-11
721,018(+0.71%)
2021-04-12
725,602(+0.64%)
2021-04-13
729,920(+0.6%)
2021-04-14
734,423(+0.62%)
2021-04-15
739,818(+0.73%)
2021-04-16
745,182(+0.73%)
2021-04-17
750,158(+0.67%)
2021-04-18
756,285(+0.82%)
2021-04-19
761,437(+0.68%)
2021-04-20
766,882(+0.72%)
2021-04-21
772,381(+0.72%)
2021-04-22
778,238(+0.76%)
2021-04-23
784,108(+0.75%)
2021-04-24
790,016(+0.75%)
2021-04-25
795,627(+0.71%)
مقدمات: حکومت کی طرف سے رپورٹ کردہ مقدمات کی تعداد
زرائع: نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اینڈ گورنمنٹ کی سرکاری رپورٹس


صحافیوں کا متاثر ہونا[ترمیم]

کرونا وائرس کے بارے میں پل پل کی خبر دینے والے پشاور کے تین صحافی کرونا کا مثبت ٹیسٹ آنے پرخود خبر بن گئے۔ اس طرح اپریل کے اختتام تک مجموعی طور پر پورے ملک میں 40 صحافی اس سے متاثر ہوئے ہیں۔ تاہم بعض کو خدشہ ہے کہ یہ تعداد اس سے بھی زیادہ ہوسکتی ہے۔[3]

وفیات مشاہیر[ترمیم]

کورونا وبا پر حکومتی رد عمل[ترمیم]

وفاقی[ترمیم]

پاکستان سول ایویشن اتھارٹی نے پہلے مرحلے میں پاکستان کے چار انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر اسکرننگ کا عمل شروع کیا جن میں اسلام آباد، کراچی، لاہور اور پشاور شامل تھے۔ پاکستان کا افغانستان کے ساتھ لگنے والا چمن بارڈر 2 مارچ سے 7 مارچ تک بند کر دیا گیا۔ 16 مارچ سے افغان بارڈر مکمل بند کر دیا گیا۔ ایران کے ساتھ تفتان بارڈر کو 7 مارچ تک بند کیا گیا اور پھر چند دنوں کے لیے کھول دیا گیا، اس کے بعد پھر 16 مارچ سے دوبارہ بند کر دیا گیا جب ایران میں 43 کیسوں کی رپورٹ کا علم ہوا۔ 16 مارچ سے چین کے ساتھ بھی ہر قسم کا بارڈر بند کر دیا گیا۔ کرتار پور بارڈر کو بھی بند کر دیا گیا مگر ہندوستان کی طرف سے سکھ یاتریوں کی آمد کو جاری رکھا گیا۔ 13 مارچ سے پاکستان سے لاہور، کراچی، اسلام آباد کے سوا تمام ایئرپورٹ سے بین الاقوامی فلائٹ بند کر دیں۔ 23 مارچ کی پاکستان ڈے پریڈ کو منسوخ کر دیا گیا۔ یکم جون تک تمام تعلیمی امتحانات ملتوی کر دیے گئے۔

پنشن کی ادائیگی دہلیز پر[ترمیم]

وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید نے 19 مارچ کو اعلان کیا کہ 13 لاکھ پینشن لینے والوں کو ادائیگی ان کی دہلیز پر کر دی جائے گی۔

سندھ[ترمیم]

سندھ کے وزیر اعلیٰ نے 13 مارچ کو اعلان کیا کہ سندھ بھر کے تمام تعلیم ادارے 30 مارچ تک بند رہیں گے، بعد میں اس بندش کو 30 مئی تک بڑھا دیا گیا۔ شادی ہال، لان، سینما گھروں پر بھی پابندی لگا دی گئی۔

سندھ میں جزوی تالہ بندی[ترمیم]

18 مارچ سے سندھ بھر میں جزوی تالہ بندی شروع کر دی گئی۔ عوامی پارک اور ساحل سمند بھی بند کر دیا گیا۔ ریستورانوں کی جزوی بندش کا عمل بھی شروع کر دیا گیا۔ 18 مارچ تک سندھ بھر میں 208 مریض ہیں۔ جن میں151 مریض سکھر میں جبکہ 56 مریضوں کا تعلق کراچی اور ایک کا حیدرآباد سے ہے۔ 18 مارچ کو سامنے آنے والے کورونا کے تمام نئے 17 مریض تمام سکھر کے قرنطینہ میں رکھے زائرین نکلے جو تفتان کے قرنطینہ میں 14 دن کا وقت گزارنے کے بعد سندھ لائے گئے تھے۔ تفتان سے تقریباً 750 زائرین بسوں کے ذریعے سکھر پہنچائے گئے، تمام زائرین اور بسوں کے عملے کو لیبر کالونی کے قرنطینہ میں رکھا گیا۔ صوبہ سندھ میں کورونا وائرس کی تشخیص کے لیے سرکاری سطح پر تین ہسپتالوں میں اب تک مجموعی طور پر 844 ٹیسٹ کیے جا چکے ہیں، جن میں آغا خان ہسپتال میں 506، ڈاؤ یونیورسٹی کے اوجھا کیمپس میں 61 اور انڈس ہسپتال میں 277 افراد کے ٹیسٹ کیے جا چکے ہیں۔

پنجاب[ترمیم]

مری کو سیاحوں کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔ تعلیمی ادارے دوسرے صوبوں کی طرح 31 مارچ تک بند رہیں گے۔ ریستوران، دوکانیں اور بڑے کاروباری مراکز 10 بجے تک بند کر دیے جائیں گے۔ 12 مارچ کو پنجاب بھر میں طبی ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔ 17 مارچ کو پنجاب میں تفتان سے آئے زائرین میں سے 25 افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی۔

18 مارچ[ترمیم]

18 مارچ کو پنجاب میں تفتان سے آئے زائرین میں سے مزید دو افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہو گئی اور کل تعداد 28 تک پہنچ گئی۔ پنجاب میں کورونا وائرس سے متاثر مریضوں میں سے 22 افراد تفتان سے لائے زائرین ہیں جو ڈیرہ غازی خان میں مقیم ہیں۔ تمام 736 زائرین کا ٹیسٹ ہو رہا ہے جبکہ مزید تفتان سے آنے والے مزید 1276 افراد بھی ڈیرہ غازی خان ہی لائے جائیں گے۔ لاہور میں 5 کورونا مریض ہیں اور ایک کورونا مریض کا تعلق گجرات سے ہے جو سپین سے پاکستان آیا۔ 199 مشتبہ افراد کا ٹیسٹ کیا جا چکا ہے، 39 زیر نگرانی ہیں۔

گلگت بلتستان[ترمیم]

گلگت بلتستان میں صحت ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔ تمام تعلیم ادارے 31 مارچ تک بند رکھنے کا اعلان کیا گیا۔

خیبر پختوانخواہ[ترمیم]

خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ محمود خان نے 31 مارچ تک تعلیمی ادارے بند رکھنے کا اعلان کیا۔ اس کے علاوہ تمام تقریبات اور اجتماعات پر پابندی لگا دی گئی۔

بلوچستان[ترمیم]

27 جنوری کو بلوچستان حکومت نے کورونا وائرس کے خلاف حفاظتی تدابیر اپنانے کے لیے 14 رکنی تکنیکی کمیٹی تشکیل دی۔

کورونا وائرس پھیلاؤ میں تفتان کا کردار[ترمیم]

ایران سے آئے زائرین کو تفتان میں قرنطین کیا گیا مگر دو ہفتوں بعد سندھ، خیبرپختونخوا، پنجاب آمد پر ان میں کورونا وائرس پایا گیا جس سے وائرس سے متاثر افراد کی تعداد 53 سے یک دم بڑھ کر 184 ہو گئی۔

خط زمانی[ترمیم]

جنوری 2020ء[ترمیم]

چین میں مقیم چار پاکستانی طالب علموں میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی۔ حکومت پاکستان نے چین سے کورونا وائرس کی پیشرفت پر مستقل رابطہ قائم کیا۔

فروری 2020ء[ترمیم]

12 فروری 2020 کو چین میں مقیم وائرس کا شکار ہونے والے چاروں پاکستانی طالب علم صحتیاب ہو گئے۔ 14 فروری 2020 کو چین میں مقیم وائرس کا شکار مزید 2 پاکستانی طالب علم صحت یاب ہو گئے جبکہ ایک طالب علم زیر علاج رہا۔ 23 فروری 2020 کو وفاقی وزیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے ایران کے شہر قم میں کورونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں پر تشویش کا اظہار کیا۔

26 فروری 2020 کو کورونا وائرس سے متاثر پہلے شخص کی تصدیق پاکستان تحریک انصاف کے وزیر صحت ظفر مرزا نے سماجی رابطے کی سروس ٹویٹر پر ان الفاظ سے کیا۔ "میں پاکستان میںکورونا وائرس سے متاثر دو اشخاص کی تصدیق کرتا ہوں۔ دونوں افراد کو بھرپور طبی امداد دی جا رہی ہے اور ان کی حالت قابلِ اطمینان ہے۔" 27 فروری کو وفاقی حکومت نے عوام کے ہیلپ لائن کا آغاز کیا جس کا نمبر 1166 رکھا گیا۔ وفاقی وزیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے اعلان کیا کہ اگر چین، ایران سے حالیہ دنوں میں سفر کرکے آنے والے اشخاص میں بخار، کھانسی یا سانس کی تکلیف ہو تو فوری ہیلپ لائن پر رابطہ کریں۔ 28 فروری کو وفاقی وزیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے نیشنل انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے اشتراک سے آن لائن پلیٹ فارم کا آغاز کیا جہاں کورونا وائرس سے متعلق سوالات کا جواب دیا جا سکے۔ پلیٹ فارم کی ویب سائٹ کا نام اور اسے دوستوں، رشتہ داروں اور جاننے والوں تک پھیلانے کی استدعا کی گئی۔

مارچ 2020ء[ترمیم]

  • 3 مارچ - سندھ میں کورونا کے 1 مریض کا اضافہ، کل مریضوں کی تعداد 5 ہو گئی۔
  • 6 مارچ - سندھ میں کورونا کے 1 مریض کا اضافہ، کل مریضوں کی تعداد 6 ہو گئی۔
  • 8 مارچ - کراچی، سندھ میں کورونا کے 1 مریض کا اضافہ، کل مریضوں کی تعداد 7 ہو گئی۔ ایک مریض صحتیاب ہو گیا۔
  • 10 مارچ - چوبیس گھنٹوں میں کورونا کے مریضوں کی تعداد دگنی ہو گئی۔ کل مریضوں کی تعداد 19 ہو گئی۔
  • 11 مارچ - گلگت بلتستان میں کورونا کے دوسرے مریض کا اضافہ ہوا۔ 14 سال کے نو عمر مریض کا تعلق اسکردو سے بتایا گیا۔

دفعہ 144 کا نفاذ[ترمیم]

  • 13 مارچ کو ڈی آئی جی خان میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی۔
  • 15 مارچ کو پنجاب میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی۔
  • 15 مارچ کو لاہور میں کورونا وائرس کا پہلا مریض سامنے آیا، 54 سالہ شخص برطانیہ سے 10 مارچ کو لاہور پہنچا۔

پی ایس ایل میچ بغیر شائقین[ترمیم]

  • 13 مارچ کے بعد پاکستان سپر لیگ کے میچوں میں شائقین کے کرکٹ اسٹیڈیم جا کر میچ دیکھنے پر پابندی عائد کر دی۔
  • 17 مارچ کے سیمی فائنل اور 18 مارچ کا فائنل میچ ملتوی کر دیے گئے۔
  • 2 ستمبر کو پی سی بی نے آخری چار میچوں کی تاریخ اور اسٹیڈیم کا تعین کیا.جس میں قذافی اسٹیڈیم میں چاروں میچ ہونا تھے، ١٤، ١٥ نومبر کو سیمی فائنل جبکہ فائنل ١٧ نومبر کو طے پایا. لاہور کی فضائی آلودگی کے سبب میچوں کو کراچی نیشنل اسٹیڈیم منتقل کیا گیا جس میں کراچی نے لاہور کو ہرا کر ٹائٹل اپنے نام کر لیا.

وسطی مارچ 2020ء کے بعد[ترمیم]

  • 16 مارچ 2020 تک سکھر میں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد 100 کے قریب پہنچ گئی۔ کراچی میں 26 اور حیدرآباد میں ایک مریض سامنے آیا۔ ملک بھر میں مریضوں کی تعداد 184 ہو گئی۔
  • 17 مارچ کو سکھر میں 119 کورونا مریضوں کی تصدیق ہو گی۔ 52 نئے کرونا مریضوں کے کیس سامنے آنے سے کل تعداد 237 ہو گئی۔
  • 18 مارچ کو کورونا وائرس سے پہلے مریض فوت ہو گیا۔ 70 نئے کیس سامنے آئے، کل مریضوں کی تعداد 307 ہو گئی۔
  • 19 مارچ کوکورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 454 ہو گئی۔ صرف ایک دن میں 147 نئے کیس سامنے آئے۔ کرونا وائرس سے دوسرا مریض جاں بحق ہو گیا۔
  • 20 مارچ کوکورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 588 ہو گئی۔ 134 نئے کیس سامنے آئے۔ کرونا وائرس سے 4 مریض جاں بحق ہو گئے۔
  • 21 مارچ کو اعلان کیا گیا کہ 22 سے 28 مارچ تک تمام بین الاقوامی ہوائی سفر بند کر دیا گیا۔
  • 28 مارچ - نئے کیسز کی تعداد 122, کل مریض 1495۔ یومیہ ہلاکتیں 1 ، کل ہلاکتیں 12۔

اپریل 2021 ء[ترمیم]

  • 19 اپریل 2021: یومیہ اموات +149، کل اموات 16,243 ، کل کیس 756,285، نئے کیس +6,127، کل ٹیسٹ 11,144,367، کل صحتیاب 659,483، زیر علاج 80,559
  • 20 اپریل 2021: یومیہ اموات +73، کل اموات 16,316 ، کل کیس 761,437، نئے کیس +5,152، کل ٹیسٹ 11,204,529، کل صحتیاب 662,845، زیر علاج 82,276
  • 21 اپریل 2021: یومیہ اموات +137، کل اموات 16,453 ، کل کیس 766,882، نئے کیس +5,445، کل ٹیسٹ 11,272,531، کل صحتیاب 667,131، زیر علاج 83,298
  • 26 اپریل 2021: یومیہ اموات +118، کل اموات 17,117 ، کل کیس 795,627، نئے کیس +5,611، کل ٹیسٹ 11,538,771، کل صحتیاب 689,812، زیر علاج 88,698
  • 30 اپریل 2021: یومیہ اموات +150، کل اموات 17,680 ، کل کیس 815,711، نئے کیس +5,480، کل ٹیسٹ 11,739,027، کل صحتیاب 708,193، زیر علاج 89,838
  • 1 مئی 2021: یومیہ اموات +146، کل اموات 17,957 ، کل کیس 825,519، نئے کیس +4,696، کل ٹیسٹ 11,836,866، کل صحتیاب 717,009، زیر علاج 90,553
  • 7 مئی 2021: یومیہ اموات +140، کل اموات 18,677 ، کل کیس 850,131، نئے کیس +4,298، کل ٹیسٹ 12,101,832، کل صحتیاب 747,755، زیر علاج 83,699
  • 16 مئی 2021: یومیہ اموات +83، کل اموات 19,467 ، کل کیس 874,751، نئے کیس +1,531، کل ٹیسٹ 12,410,924، کل صحتیاب 783,480، زیر علاج 71,804
  • 17 مئی 2021: یومیہ اموات +76، کل اموات 19,543 ، کل کیس 877,130، نئے کیس +2,379، کل ٹیسٹ 12,444,042، کل صحتیاب 788,768، زیر علاج 68,819
  • 23 مئی 2021: یومیہ اموات +88، کل اموات 20,177 ، کل کیس 897,468، نئے کیس +4,007، کل ٹیسٹ 12,717,235، کل صحتیاب 813,855، زیر علاج 63,436
  • 28 مئی 2021: یومیہ اموات +75، کل اموات 20,540 ، کل کیس 911,302، نئے کیس +2,726، کل ٹیسٹ 13,006,326، کل صحتیاب 831,744، زیر علاج 59,018

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ "COVID-19 Situation". covid.gov.pk. Government of Pakistan. اخذ شدہ بتاریخ 25 اپریل 2021. 
  2. "CORONAVIRUS IN PAKISTAN CONFIRMED CASES". covid.gov.pk. 
  3. پاکستان میں کرونا سے صحافی پریشان، 40 متاثر