عطارد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
عطارد  
Mercury
MESSENGER image of Mercury with three visible colors mapped to 1000 nm, 700 nm, and 430 nm wavelengths
تعین کاری
تلفظ Listeni/ˈmɜrkjəri/
توصیف Mercurian, Mercurial[1]
خصوصیات مدار[2]
زمانہ J2000
اوج
  • 69,816,900 km
  • 0.466 697 AU
حضیض
  • 46,001,200 km
  • 0.307 499 AU
نیم مدار مرکزی
  • 57,909,100 km
  • 0.387 098 AU
منحرف المرکزیت 0.205 630[3]
گردشی دورانیہ
اوسط مداری رفتار 47.87 km/s[3]
اوسط خروج مرکز 174.796°
میلان محوری
زاویہ عقدۂ صعودی 48.331°
استدلال طرف الشمس 29.124°
سیارچے None
طبیعی خصوصیات
متوسط رداس
  • 2,439.7 ± 1.0 km[5][6]
  • 0.3829 Earths
Flattening 0[6]
Surface area
  • 7.48 × 107 km2[5]
  • 0.147 Earths
حجم
  • 6.083 × 1010 km3[5]
  • 0.056 Earths
کمیت
  • 3.3022 × 1023 kg[5]
  • 0.055 Earths
متوسط کثافت 5.427 g/cm3[5]
Equatorial surface gravity
فراری سمتار 4.25 km/s[5]
فلکی گردش کی
مدت
  • 58.646 day
  • 1407.5 h[5]
استوائی گردش کی رفتار 10.892 km/h (3.026 m/s)
محوری جھکاؤ 2.11′ ± 0.1′[7]
شمالی pقطب دائیں صعود
  • 18 h 44 min 2 s
  • 281.01°[3]
North pole declination 61.45°[3]
Albedo
سطح پر درجہ حرارت.
   0°N, 0°W [11]
   85°N, 0°W[11]
min mean max
100 K 340 K 700 K
80 K 200 K 380 K
ظاہری شدت −2.6[9] to 5.7[3][10]
Angular diameter 4.5" – 13"[3]
فضا[3]
سطح پر ہوا کا دباؤ trace
Composition
{{|group="note"}}
مریخ، زمین، زہرہ، اور عطارد

عطارد نظام شمسی کا پہلا اور سورج سے قریب ترین سیارہ ہے۔ یہ زمین کے مقابلہ میں ایک چھوٹا سیارہ ہے۔ درحقیقت یہ نظام شمسی کا سب سے چھوٹا سیارہ ہے جس کا خط استوا کا رداس 2439۔7 مربع کلومیٹر ہے۔ اس کی بیرونی سطح craters یعنی چھوٹے بڑے گڑھوں سے بھری پڑی ہے۔ یہ سورج کے گرد ایک چکر 88 دنوں میں مکمل کرتا ہے۔ عطارد اور زہرہ دونوں صبح اور شام کے ستارے لگتے ہیں، مگر عطارد کو دیکھنا زیادہ مشکل ہے۔ عطارد زمیں سے دیکھتے ہوئے درحقیقت کافی روشن نظر آتا ہے، مگر سورج کے قریب ہونے کی وجہ سے اس کو دیکھنا کافی مشکل ہے۔ نیوٹن کے طریقے سے اس کا نکالا ہوا مدار اس کے اصل مدار سے کچھ مختلف تھا، اس فرق کو آئن سٹائن کی عمومی اضافیت کے نظریہ کی مدد سے بیسوِیں صدی میں سمجھا گیا ہے۔

اندرونی ساخت[ترمیم]

اگرچہ عطارد سب سے چھوٹا سیارہ ہے مگر اس کی کثافت نظام شمسی میں صرف زمین سے کم ہے۔ اس کی کثافت 5٫247 گرام پر کیوبک سینٹی میٹر ہے۔ اس کی کثافت کی وجہ سے اس کی اندرونی ساخت کے بارے میں کافی معلومات مل جاتی ہیں۔وہ اس طرح کے زمیں کی زیادہ کثافت ہونے کی وجہ کشش ثقل ہے، مگر چونکہ عطارد ایک بہت چھوٹا سیارہ ہے اس لیے اس کی کشش ثقل زمیں کے مقابلے میں بہت کم ہے اسی لیے یہ نتیجہ نکالا جا سکتا ہے کہ عطارد کی زیادہ کثافت کی وجہ اس کا لوہے والا زمین سے بڑا مرکزہ ہے۔ ماہرین کے مطابق عطارد کا مرکزہ اس کے کل حجم کا 42 فیصد ہے جبکہ زمین کا مرکزہ اس کے حجم کا صرف 17 فیصد ہے۔ عطارد کے مرکزے میں لوہے کی مقدار نظام شمسی کے کسی بھی سیارے سے زیادہ ہے۔

عطارد کی اندرونی ساخت

درجہ حرارت[ترمیم]

چونکہ عطارد کی سطح پر کسی قسم کی فضا موجود نہیں اس لئے دن کے وقت اس کی سطح کا درجہ حرارت °427 تک پہنچ جاتا ہے اور رات کے وقت °183- تک گِر جاتا ہے۔ عطارد کا ایک ’سال‘ زمین کے 88 دنوں کے برابر ہے۔

تاریخ[ترمیم]

ایک امریکی خلائی جہاز مارینر 10 1970 کی دہائی میں عطارد کے بالکل پاس سے گزرا مگر عطارد کا صرف ایک طرف کا حصہ ہی نظر آسکا۔ یہی وجہ ہے کہ ہمارے پاس عطارد کی مکمل تصویر موجود نہیں۔ ایک اور امریکی خلائی جہاز میسجنر 17 مارچ 2011ء کو عطارد کے پاس سے گذرا اور انجن بند کرنے کے بعد اسے عطارد نے اپنے مدار میں کھینچ لیا۔ امید ہے کہ یہ جہاز عطارد کے بقیہ حصے کی تصاویر لے لے گا۔

حوالہ جات[ترمیم]

نظام شمسی
سورج عطارد زہرہ چاند زمین فوبوس اور ڈیمیوس مریخ سیرس سیارچوی پٹی مشتری مشتری کے چاند زحل زحل کے چاند یورینس یورینس کے چاند نیپچون کے چاند نیپچون کیرون، نکس اور ہائڈرا پلوٹو کوئپر پٹی ڈسنومیا ارس منتشر طشتری اورت بادلSolar System Right To Left.PNG
سورج · عطارد · زہرہ · زمین · مریخ · مشتری · زحل · یورینس · نیپچون
بونے سیارے
پلوٹو · سیرس · ارس
دیگر اجرام فلکی
چاند · نجمیے · دم دار سیارے · کہکشاں · شہاب ثاقب · سحابیہ · اجرام فلکی کے فاصلے

ِ

  1. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام webster کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  2. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام horizons کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  3. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام nssdcMercury کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  4. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام meanplane کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  5. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام nasa کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  6. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام Seidelmann2007 کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  7. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام Margot2007 کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  8. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام MallamaMercury کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  9. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام MallamaSky کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  10. ^ خطا در حوالہ: غلط <ref> ٹیگ؛ حوالہ بنام ephemeris کے لیے کوئی متن فراہم نہیں کیا گیا
  11. ^ 11.0 11.1 Vasavada, Ashwin R.; Paige, David A.; Wood, Stephen E. (19 February 1999). "Near-Surface Temperatures on Mercury and the Moon and the Stability of Polar Ice Deposits". Icarus 141: 179–193. doi:10.1006/icar.1999.6175. Figure 3 with the "TWO model"; Figure 5 for pole. http://www.gps.caltech.edu/classes/ge151/references/vasavada_et_al_1999.pdf.