آصف سعید خان کھوسہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
آصف سعید خان کھوسہ
معلومات شخصیت
پیدائش 21 دسمبر 1954 (66 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ڈیرہ غازی خان  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
ناصر محمود کھوسہ  ویکی ڈیٹا پر (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
منصف عدالت عالیہ لاہور   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
21 مئی 1998  – 3 نومبر 2007 
منصف عدالت عالیہ لاہور   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
18 اگست 2008  – 17 فروری 2010 
جج عدالت عظمیٰ پاکستان   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
18 فروری 2010  – 20 دسمبر 2019 
سینئر منصب عدالت عظمیٰ پاکستان   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
31 دسمبر 2016  – 17 جنوری 2019 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png میاں ثاقب نثار 
گلزار احمد  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
منصف اعظم پاکستان   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
18 جنوری 2019  – 20 دسمبر 2019 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png میاں ثاقب نثار 
گلزار احمد  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ پنجاب
گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور
کوینزکالج، کیمبرج
لنکنز ان  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تعلیمی اسناد ایم اے قانون،  بیرسٹر  ویکی ڈیٹا پر (P512) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ منصف،  وکیل  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

آصف سعید خان کھوسہ پاکستان کی عدالت عظمی کے 26ویں منصف اعظم۔ [1] آپ 21 دسمبر 1954ء کو ڈیرہ غازی خان میں پیدا ہوئے۔ گورنمنٹ کالج لاہور سے بی-اے اور جامعہ پنجاب سے انگریزی میں ایم-اے کیا۔ انگلستان سے قانون کی تعلیم حاصل کی اور 26 جولائی 1976ء کو وکیل ہوئے۔ سید یوسف رضا گیلانی توہین عدالت مقدمہ میں آپ کے لکھے اضافی نوٹ حیف اس قوم پر[2] کی بہت شہرت ہوئی۔[3]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

آصف سعید خان کھوسہ ڈیرہ غازی خان، پنجاب میں پیدا ہوئے۔ ان کا تعلق پاکستان کے بلوچ قبیلے کھوسہ سے ہے۔ انہوں نے 1969 میں ملتان بورڈ سے میٹرک کا امتحان پانچویں پوزیشن کے ساتھ پاس کیا اس کے بعد پنجاب کالج یونیورسٹی لاہور میں داخلہ لیا جہاں انہوں نے لاہور بورڈ سے انٹرمیڈیٹ کے امتحان میں اوّل پوزیشن حاصل کی۔ 1973 میں انہوں نے گورنمنٹ کالج لاہور سے پنجاب یونیورسٹی کے بی ۔ اے کے امتحان میں ایک بار پھر پہلی پوزیشن حاصل کی۔ جامعہ پنجاب کے دور طالب علمی میں وہ ابوالاعلیٰ مودودی اور نعیم صدیقی ( تحریک اسلامی پاکستان کے بانی )سے متاثر تھے۔ [4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. https://www.dawn.com/news/1456700
  2. "فیصلہ PDF" (PDF). 17 جون 2013 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. 
  3. "Supreme Court issues detailed judgment in contempt case". ڈان. 9 مئی 2012ء. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  4. "Honourable Mr. Justice Asif Saeed Khan Khosa". Pakistan Herald. اخذ شدہ بتاریخ 08 فروری 2017. 

بیرونی روابط[ترمیم]