ناصر الملک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ناصر الملک
Nasirulmulk.jpg
نگران وزیر اعظم
دفتر سنبھالا
1 جون 2018
مقرر بطرف ممنون حسین
صدر ممنون حسین
پیشرو شاہد خاقان عباسی
قائم مقام چیف الیکشن کمشنر پاکستان
عہدہ سنبھالا
30 نومبر 2013 – 16 اگست 2015
صدر ممنون حسین
وزیر اعظم نواز شریف
منصف اعظم پاکستان
دفتر سنبھالا
7 جولائی 2014
مقرر بطرف ممنون حسین
منصف اعظم ہائے پشاور عدالت عالیہ
عہدہ سنبھالا
31 جولائی 2004 – 5 اپریل 2005
نامزد بطرف علی جان اورکزئی
مقرر بطرف پرویز مشرف
پیشرو Justice میاں شاکراللہ جان
جانشین Justice طاوق پرویز خان
ذاتی تفصیلات
پیدائش ناصرالملک
17 اگست 1950ء (عمر 67 سال)
سوات، خیبر پختونخوا، Flag of Pakistan.svg پاکستان
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
قومیت پاکستانی
مادر علمی جامعہ پشاور
مذہب اسلام

ناصر الملک پاکستان کے ساتویں نگران وزیر اعظم ہیں جو پہلے پاکستان کی عدالت عظمیٰ کے 22 ویں منصف اعظم بھی رہ چکے ہیں۔ انہوں نے 6 جولائیٰ، 2014ء کو تصدق حسین جیلانی کی وظیفہ حسن خدمت پر سبک دوشی کے بعد یہ عہدہ سنبھالا۔ 6 نومبر 2014ء کو صدر پاکستان نے ناصرالملک کو بطور منصف اعظم پاکستان نامزد کیا اور وزیر اعظم نواز شریف نے منظوری دے دی۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ناصر الملک پاکستان کے معروف سیاحی مقام سوات،خیبر پختونخوا میں 17 اگست 1950ء کو پیدا ہوئے۔ آپ کے والد سیٹھ کامران خان ایک سیاسدان تھے جو 1970ء کی دہائی میں ایک سینیٹر تھے اور آپ کے چچا کریم بخش ایک معروف سماجی کارکن تھے۔

ناصر الملک نے ابتدائی تعلیم ایک مقامی اسکول سے حاصل کی اس کے بعد وہ جہانزیب کالج گئے۔ وہاں سے بی اے اور فنون لطیفہ مکمل کرنے کے بعد جامعہ پشاور تشریف لے گئے۔ جامعہ پشاور سے ایل ایل بی کرنے کے بعد برطانیہ چلے گئے اور وہاں سے بار ایٹ لا کی ڈگری حاصل کی۔

نگران وزیر اعظم[ترمیم]

2018 کے انتخابات کے لیے حکومت اور اپوزیشن نے ان کا نگران وزیر اعظم کے طور پر انتخاب کیا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

قانونی دفاتر


ماقبل 
تصدق حسین جیلانی
منصف اعظم پاکستان
6جولائی 2014  تاحال–
مابعد 

بیرونی روابط[ترمیم]