ناصر الملک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
ناصر الملک


قائم مقام چیف الیکشن کمشنر پاکستان
در منصب
30 نومبر 2013 – جولائی 2014
صدر ممنون حسین
وزیرِ اعظم نواز شریف
پیشرو منصف اعظم تصدق حسین جیلانی

برقرار
برسر منصب 
5 اپریل 2005
نامزد از شوکت عزیز
تقرر از پرویز مشرف

در منصب
31 جولائی 2004 – 5 اپریل 2005
نامزد از علی جان اورکزئی
تقرر از پرویز مشرف
پیشرو Justice میاں شاکراللہ جان
جانشین Justice طاوق پرویز خان

پیدائش 17 اگست 1950 (1950-08-17) ‏(64)
سوات، خیبر پختونخواہ، Flag of Pakistan.svg پاکستان
پیدائشی نام ناصرالملک
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
قومیت پاکستانی
مادر علمی جامعہ پشاور
مذہب اسلام


ناصر الملک پاکستان کی عدالت عظمیٰ کے 22 ویں منصف اعظم ہیں۔ انہوں نے 6 جولائی 2014 کو تصدق حسین جیلانی کی ریٹائرمنٹ کے بعد یہ عہدہ سنبھالا۔6 نومبر 2014 کو صدر پاکستان نے ناصرالملک کو بطور منصف اعظم پاکستان نامزد کیا اور وزیراعظم نواز شریف نے منظوری دے دی۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ناصر الملک پاکستان کے معروف سیاحی مقام سوات،خیبر پختونخوا میں 17 اگست 1950 کو پیدا ہوئے ، آپ کے والد سیٹھ کامران خان ایک سیاسدان تھے جو 1970 کی دہائی میں ایک سینیٹر تھے اور آپ کے چچا کریم بخش ایک معروف سماجی کارکن تھے۔ ناصر الملک نے ابتدائی تعلیم ایک مقامی اسکول سے حاصل کی اس کے بعد وہ جہانزیب کالج گئے،وہاں سے بی اے اور فائن آرٹس مکمل کرنے کے بعد جامعہ پشاور تشریف لے گئے۔جامعہ پشاور سے ایل ایل بی کرنے کے بعد برطانیہ چلے گئے اور وہاں سے بار-ایٹ-لا ڈگری حاصل کی۔

حوالہ جات[ترمیم]


قانونی دفاتر


پیشرو
تصدق حسین جیلانی
منصف اعظم پاکستان
6جولائی 2014  تاحال–
جانشین
'