میر ہزار خان کھوسو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
میر ہزار خان کھوسو
(انگریزی میں: Mir Hazar Khan Khoso)،(اردو میں: میر ہزار خان کھوسو خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
وزیر اعظم پاکستان
صدر آصف علی زرداری
Fleche-defaut-droite-gris-32.png راجہ پرویز اشرف
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 30 ستمبر 1929 (89 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
جعفرآباد، پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
رہائش اسلام آباد, وفاقی دارلحکومت اسلام آباد
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب اسلام
عملی زندگی
مادر علمی سندھ یونیورسٹی
جامعہ کراچی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ منصف،  سیاست دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

میر ہزار خان کھوسو 24 مارچ کو پاکستان کے 18 ویں وزیر اعظم منتخب ہوئے وہ ایک جج تھے آپ وفاقی شرعی عدالت کے چیف جسٹس رہے ہیں اور آپ پاکستان کے عبوری وزیر اعظم بھی رہے۔۔[1][2]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

آپ بلوچستان کے ضلع جعفر آباد کے کے قصبے اعظم خان میں 30 ستمبر 1929 کو پیدا ہوئے۔1954 میں سندھ یونیورسٹی سے گریجویشن کی اس کے دو سال بعد انھوں نے کراچی یونیورسٹی سے وکالت کی ڈگری حاصل کی۔[3]

عدالتی کیریئر[ترمیم]

کھوسو جو اپنی سادگی کے لیے نام سے جانا جاتا ہے، نے 1957 میں اس وقت کے مغربی پاکستان کراچی بنچ کے ایک وکیل کے طور پر اپنے پیشہ ورانہ کیریئر کا آغاز کیا اور اس کے بعد 1980 ء میں سپریم کورٹ کے وکیل بن گئے۔ پھر انھیں 1977 میں بلوچستان ہائی کورٹ میں ایک جج بنا دیا گیا؛ اور انہوں نے اگلے دو سال تک اس عہد7 پر کام کیا۔ ان کی مارچ 1985 میں ایک اضافی جج کے طور پر تقرری کی گئی انہیں 1987 ء میں صوبائی ہائی کورٹ کا مستقل جج بنا دیا گیا .پھر انھیں 1989 میں چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ بنا دیا گیا۔ انھیں دو مرتبہ مختصر سی مدت کے لیے نگران گورنر بلوچستان بھی بنایا گیا پہلی مرتبہ انھیں 25 جون سے 12 جولائی 1990 تک جبکہ دوسری بار 13 مارچ 1991 سے 13 جولائی 1991تک نگران گورنر بنایا گیا [3]۔ ہائیکورٹ سے ریٹائرمنٹ کے بعد وہ وفاقی شرعی عدالت کے جج مقرر ہوئے 1991 میں انھیں وفاقی شرعی عدالت کا چیف جسٹس مقرر کر دیا گیا وہ 1994 تک اس عہدے پر براجمان رہے۔ انتہائی ایماندار ہونے کی وجہ سے آپ کو زکوۃ کونسل کے چیرمین مقرر ہوئے۔ زکوۃ کونسل کے چیرمین ہونے کی وجہ سے انھوں نے لمبے عرصے تک سیاست سے کنارہ کشی اختیار کر لی۔

وزیر اعظم پاکستان[ترمیم]

الیکشن کمیشن نے میر ہزار خان کھوسو کو 24 مارچ کو پاکستان کے 18 واں وزیر اعظم منتخب کیا الیکشن کمیشن نے حکومت اور حزب اختلاف کے چار ناموں میں سے آپ کا انتخاب کیا۔

ذاتی زندگی[ترمیم]

آپ کے تین بیٹے ہیں شفاقت کھوسو، برکت کھوسو اور امجد کھوسو۔ آپ کے بیٹے امجد خان کھوسو نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کرلی ہے۔[4][5][6][7]

حوالہ جات[ترمیم]

سیاسی عہدے
ماقبل 
راجہ پرویز اشرف
وزیر اعظم پاکستان
نگران

2013
مابعد 
نواز شریف