کرولی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کرولی
قریہ
کرولی پیراں
Karuli Village Mountain.JPG

کرولی ضلع چکوال کا سیاسی و سماجی لحاظ سے ایک اہم گاؤں ہے۔ اسے کرولی پیراں بھی کہا جاتا ہے۔

تاریخی حیثیت[ترمیم]

کرولی ضلع چکوال کے جنوب مشرق میں پچاس کلومیٹر کے فاصلے پر خوبصورت پہاڑیوں میں گھرا ہوا خوبصورت گاؤں ہے۔ کہا جاتا ہے کہ محمد بن قاسم کے برصغیر میں داخل ہونے کے بعد تیزی سے اسلام پھیلنے لگا تو یہاں پر معروف روحانی شخصیت تشریف لائی۔ انہوں نے پانی کے حصول کے لیے ایک پتھر کے نیچے اپنی عصا مارا تو پانی کا چشمہ پھوٹ پڑا۔ وہاں وضو کرتے ہوئے آپ نے علاقے کا نام کرولی پسند فرمایا۔[1]

اسلام[ترمیم]

یہاں کے لوگوں کی اکثریت بریلوی مکتب فکر کی ہے۔ یہاں دو بڑی مساجد، جامع مسجد فیضان مدینہ اور جامع مرکزی مسجد غوثیہ شامل ہیں جبکہ ایک چھوٹی مسجد شمالی ہے۔

مزارات[ترمیم]

یہاں کے لوگ چونکہ بریلوی مسلک کے ہیں اس لیے یہ روحانی شخصیات کی بہت قدر کرتے ہیں۔ پیر گل بادشاه صاحب معروف روحانی شخصیت ہیں اس کے علاوه یہاں پر مزارات جن میں بابا جمال شاه کا مزار قابل ذکر ہے وہاں پر ہر سال اکیس شوال کو عرس منایا جاتا ہے

اہم شخصیات[ترمیم]

خارجی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]