کشمیری طلبہ کے احتجاج، 2017ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کشمیری طلبہ کے احتجاج، 2017ء
مضامین بسلسلہ مسئلہ کشمیر
تاریخ 4 اپریل 2017ء تاحال
مقام

وادی کشمیر،

جموں و کشمیر، بھارت
وجوہات
اہداف
  • Independence/autonomy/self-determination for Kashmir[1]
  • </ref>
  • طریقہ کار Protests
    Mob violence
    Stone-pelting
    General strikes
    فریق تنازع

    Kashmiri protesters
    Kashmiri separatists

    • Female Kashmiri Students
    • Kashmiri Students
    متاثرین
    12 Police injured.[2]
    1 Student dead, 100+injured[3][4]

    کشمیری طلبہ کے احتجاج، 2017ء سنہ 2016ء سے جاری بھارتی زیر انتظام کشمیر کے احتجاجات کی ایک کڑی ہیں جن میں کشمیری طلبہ نے حصہ لیا۔ ان احتجاجات کی خاص بات یہ ہے کہ طالبات نے بھی اس میں کثیر تعداد میں حصہ لیا جبکہ کشمیری تحریک میں یہ صورت اب تک نہیں دیکھی گئی۔

    مزید دیکھیے[ترمیم]

    حوالہ جات[ترمیم]

    1. Ellen Barry (28 اگست 2016)۔ "An Epidemic of 'Dead Eyes' in Kashmir as India Uses Pellet Guns on Protesters"۔ The New York Times۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 4 جنوری 2017۔
    2. livemint۔ "24 injures inclunging police"۔
    3. Aljazeera۔ "Kashmir: Teen shot dead; 54 students wounded in clashes"۔
    4. Aljazeera۔ "Kashmir unrest: Protesting students clash with police"۔

    بیرونی روابط[ترمیم]

    Students protest in Kashmir, colleges shut