مرقس کی انجیل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
عہدنامہ جدید

مصنف[ترمیم]

مرقس کا پورا نام یوحنا مرقس تھا۔ وہ پولس (جسے پولس رسول بھی کہا جاتاہے) کا ساتھی تھا۔ اُس نے اپنی عمر کا آخری حصہ روم میں گزارا اور وہیں اُس نے پطرس(جسےپطرس رسول کے نام سے بھی جانا جاتا ہے) کی اُن باتوں کو جو اُسے یاد تھیں کو تحریر کیا۔

زمانہ تصنیف[ترمیم]

یہ 60 تا 65 عیسوی کے درمیان تحریر کی گئی۔

تعارف و مندرجات[ترمیم]

اس انجیل کے مطالعے سے ہمیں یوں محسوس ہوتا ہے جیسے کوئی چشم دید گواہ اپنا مشاہدہ بیان کر رہا ہو۔اس انجیل کا آخری حصہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی زندگی کے آخری ہفتہ کے واقعات پر مبنی مواد پر مشتمل ہے۔یہ انجیل حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی عوامی خدمت کے واقعات اور خدا کی بادشاہی کی خوشخبر ی کی منادی سے شروع ہوتی ہے۔اس کتاب میں حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی موت کی پیشن گوئیاں درج کی گئی ہیں اور حضرت عیسیٰ علیہ السلام کےدنیا کے گناہوں کی خاطر مصلوب ہونے کا ذکر بھی اسی کتاب میں ہے۔
مرقس اس کتاب میں حضرت عیسیٰ علیہ اسلام کو خدا کے ایسے خادم کے طور پر پیش کرتا ہےجو خدا کی مرضی کو پورا کرنے آیا تھا۔ آپ کے بیماروں کو شفاء دینے، بدروحوں پر فتح پانے اور آپ کے مردوں میں سے جی اٹھنے کو ہی عیسائی آپ کے ابن اللہ کے ثبوت گردانتے ہیں۔
مرقس کی اس انجیل سے یہ مقصد بھی تھا کہ رومی عیسائی جن پر رومی بادشاہ ظلم وستم کےپہاڑ توڑ رہے تھے کی ہمت ایذارسانی کے ان دنوں میں بندھی رہے۔