القہار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

القہار اللہ تعالیٰ کے صفاتی ناموں میں سے ایک نام ہے۔

  • القہار کے معنی ہیں قہر والا،غالب
  • اللہ تعالیٰ نے فرمایا:
  • ترجمہ: وہ (اللہ) بندوں سے اوپر ہے اور ان پر غالب ہے اور وہ حکمت و دانائی والا ہے۔ اور (ہر چیز )کی خبر رکھنے والا ہے۔ (الفتح : 11)
  • وہ قہار ہی ہے۔ تبھی گردنیں اس کے لئے جھک گئیں اور بڑے بڑے دنیاوی ظالم ذلیل و رسوا ہو گئے۔ اور بڑے ہی (با وقار) چہرے اس کے سامنے بجھ جاتے ہیں تمام مخلوقات اس کے سامنے پست ہو گئیں۔ اور تمام اشیاء نے اس کے جلال و عظمت و کبریائی اور اس کی قدرت کو مان لیا۔ اور اس کے سامنے تمام اشیاء کمزور اور ساکن ہو گئیں اور اللہ کی حکمتوں اور اس کے غلبہ کی وجہ سے دب گئیں۔۔ [1]

قہار کا مطلب ہے جو اپنے ظالم اور جابر دشمنوں کا غلبہ توڑے ان کو ذلیل کرے ، بلکہ وہ جس کےقہر و غضب اور قدرت کے سامنے ہر موجود شے بے بس ہو اور اس کے قبضہ میں عاجز ہو۔[2]

حوالہ[ترمیم]

اسماء الحسنیٰ
اللہالرحمٰنالرحیمالملکالقدوسالسلامالمؤمنالمہیمنالعزیزالجبارالمتکبرالخالقالباریالمصورالغفارالقہارالوہابالرزاقالفتاحالعلیمالقابضالباسطالخافضالرافعالمعزالمذلالسمیعالبصیرالحکمالعدلاللطیفالخبیرالحلیمالعظیمالغفورالشکورالعلیالکبیرالحفیظالمقیتالحسیبالجلیلالکریمالرقیبالمجیبالواسعالحکیمالودودالمجیدالباعثالشہیدالحقالوکیلالقویالمتیناولیالحمیدالمحصیالمبدیالمعیدالمحییالممیتالحیالقیومالواجدالماجدالواحدالصمدالقادرالمقتدرالمقدمالمؤخرالاولالآخرالظاہرالباطنالوالیالمتعالالبرالتوابالمنتقمالعفوالرؤفالمقسطالجامعالغنیالمغنیالمانعالضارالنافعالنورالہادیالبدیعالباقیالوارثالرشیدالصبورمالک الملکذو الجلال و الاکرام
یہ اللہ تعالیٰ کے ننانوے ناموں کی فہرست ہے
  1. الوجیز فی شرح اسماء اللہ الحسنیٰ ۔محمد الکوسی الکویتی
  2. سعادۃ الدارین ،جلد 2صفحہ699،یوسف بن اسماعیل نبہانی،مکتبہ حامدیہ لاہور