بنگلہ دیشی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
Bangladeshis
Flag of Bangladesh.svg
کل آبادی
ت 168 ملین
گنجان آبادی والے علاقے
Flag of Bangladesh.svg بنگلادیش     162,951,560[1]
پھیلاؤت 4.5 ملین
Flag of Saudi Arabia.svg سعودی عرب1,309,004 (2013)[2]
Flag of the United Arab Emirates.svg متحدہ عرب امارات1,089,917 (2013)[3]
Flag of the United Kingdom.svg مملکت متحدہ451,529 (2011)[4]
Flag of Malaysia.svg ملائیشیا352,005 (2013)[5]
Flag of Kuwait.svg کویت279,169 (2013)[6]
Flag of Qatar.svg قطر220,403 (2013)[7]
Flag of South Africa.svg جنوبی افریقا~200,000 (2018)[8]
Flag of Singapore.svg سنگاپور150,000 (2015)[9]
Flag of Oman.svg سلطنت عمان148,314 (2013)[10]
Flag of Italy.svg اطالیہ113,811 (2011)[11]
Flag of Bahrain.svg بحرین100,444 (2013)[12]
Flag of Maldives.svg مالدیپ47,951 (2013)[13]
Flag of Australia.svg آسٹریلیا27,809 (2011)[14]
Flag of Canada.svg کینیڈا24,600 (2006)[15]
Flag of Japan.svg جاپان12,374 (2016)[16]
Flag of the United States.svg ریاستہائے متحدہ12,099 (2016)[17]
Flag of Greece.svg یونان11,000[18]
Flag of South Korea.svg جنوبی کوریا8,514 (2014)[19]
Flag of Spain.svg ہسپانیہ7,000[18]
Flag of Russia.svg روس392[20]
زبانیں
بنگالی، چٹاگونین، سلہٹی ، رنگپوری اور دیگر لہجے، انگریزی اور دیگر زبانیں[21]
مذہب
Allah-green.svg اسلام [22]
Om.svg ہندومت
Dharma Wheel.svg بدھ مت
Christian cross.svg عیسائیت[23] اور دیگر (بشمول دہریت اور غیر مذہبی)[24]

بنگلہ دیشی ( بنگالی: বাংলাদেশী [25] [ˈbaŋladeʃi] ؛ انہیں پہلے بنگالیوں کے نام سے جانا جاتا ہے) بنگلہ دیش کے شہری ہیں۔ اس ملک کا نام بنگال کے تاریخی خطے کے نام پر رکھا گیا ہے، جس میں سے یہ سب سے بڑا اور مشرقی حصہ ہے۔ بنگلہ دیشی شہریت 1971 میں بنائی گئی تھی جب سابق مشرقی پاکستان کے مستقل باشندے ایک نئی جمہوریہ کے شہریوں میں تبدیل ہوگئے تھے۔ [26] بنگلہ دیش دنیا کی آٹھویں سب سے زیادہ آبادی والا ملک ہے۔ بنگلہ دیشیوں کی اکثریت نسلی طور پر ہند آریائی لوگ ہیں جو بنگالی اور دوسری بنگالی آسامی زبانیں بولتے ہیں اور اسلام کے مذہب کی پیروی کرتے ہیں۔ بنگلہ دیش کی آبادی زرخیز بنگال ڈیلٹا پر مرکوز ہے جو ہزاروں سال تک شہری اور زرعی تہذیب کا مرکز رہا ہے۔ چٹاگانگ پہاڑی علاقوں اور سلہٹ ڈویژن سمیت ملک کے اعلی پہاڑوں میں مختلف قبائلی اقلیتوں کا گھر ہے۔

بنگلہ دیشی مسلمان بنگلہ دیش کا ایک اہم نسلی گروہ ہے جس کی مجموعی آبادی 146 ملین ہے جو ملک کی اکثریتی آبادی پر مشتمل ہے۔ بنگلہ دیش میں اقلیتی بنگالی ہندو آبادی 16238167 سے زیادہ ہے جو ملک کی کل آبادی کا 12.07٪ ہے۔ غیر بنگالی مسلمان تارکین وطن کا سب سے بڑا گروہ ہیں۔ جبکہ تبت-برمن اور چکما لوگ جو ہند آریائی بولتے ہیں، یہ بنگالی اقوام کے بعد سب سے بڑا مقامی نسلی گروہ ہیں۔ [27] آسٹریاسیاٹک سانتھالس سب سے بڑی آبادی والی کمیونٹی ہیں۔

بنگلہ دیشی عوام مملکت متحدہ، دنیائے عرب، شمالی امریکہ تک پھیلے ہوئے ہیں۔دولت مشترکہ ممالک کے برطانیہ اور کینیڈا جیسے کئی ممالک میں کئی لاکھ غیر مقیم بنگلہ دیشیوں (این آر بیز) کی دوہری شہریت ہے۔

اصطلاحات[ترمیم]

ایشیاء میں بنگلہ دیش

بنگلہ دیشی کئی وجوہات سے جانا جاتا ہے:

  • بنگلہ دیشی، سب سے زیادہ وسیع پیمانے پر استعمال کیے جانے والی اصطلاح بنگلہ دیش (معنی "بنگال کا ملک") سے اخذ کی گئی ہے، اور بیسویں صدی کے اوائل سے شروع ہوئی۔ اس کے بعداس لفظ کو بنگالی محب وطن گانوں جیسے نامو نمو بنگلہ دیش مومو ، کاضی نذرالاسلام ، اور آجی بنگلہ دیشر ہریڈوی نے، ربیندر ناتھ ٹیگور نے بھی اس لفظ کو استعمال کیا۔ [28] [29]

آبادیات[ترمیم]

بنگالی[ترمیم]

بنگلہ دیشی فنکار ایک ڈانس شو میں پرفارم کررہے ہیں۔

بنگلہ دیشی آبادی کا تقریبا 98٪ بنگالی افراد پر مشتمل ہے۔ بیشتر کا تعلق مشرقی بنگال سے ہے۔ بنگالی عوام کی کثیرالقاعدہ اصل ہے ، جن میں ہند آریائی ، دراوڈیان ، تبتی برمن اور آسٹرواسیاٹک نسب شامل ہیں۔ مشرقی بنگال صدیوں سے خوشحال پگھلاتی ہنڈیا تھی۔ اس میں اسلامی ، شمالی ہندوستانی اور دیسی بنگالی ثقافتوں کی ترکیب دیکھی گئی۔ آج بنگالی ایک عام معیاری زبان اور متعدد بولیوں کے ساتھ مضبوط ثقافتی یکسانیت سے لطف اندوز ہوتے ہیں ۔

شمالی اور شمال مشرقی بنگلہ دیش کے قبائل[ترمیم]

متعدد آسٹریاسیٹک ، تبتی برمن اور ہند آریائی قبائل ہیں جو شمالی اور شمال مشرقی بنگلہ دیش کے کچھ حصوں میں آباد ہیں۔

جنوبی بنگلہ دیش کے قبائل[ترمیم]

  • اراکانی راکھین برادری نے تین صدیوں سے باریسال ڈویژن میں رہائش اختیار کر رکھی ہے۔ وہ سترہویں صدی میں برمی فتوحات سے فرار کے بعد سمندر کے راستے پہنچے تھے۔
شہر ڈھاکہ کا نظارہ، جو بنگلہ دیش کا سب سے بڑا شہر اور دنیا کا سب سے زیادہ آبادی والا شہر ہے

2015 میں بنگلہ دیشیوں کے 34٪ لوگ شہروں میں رہتے تھے۔ [30] ڈھاکہ بنگلہ دیش کا سب سے بڑا شہر ہے اور دنیا کا سب سے زیادہ آبادی والا میگاسیٹی ہے ۔ دیگر اہم شہروں میں چٹاگانگ ، سلہٹ ، کھلنا ، راجشاہی ، جیسور ، بارسل ، کومیلہ ، نارائن گنج اور مے مینسنگھ شامل ہیں۔ زیادہ تر شہری مراکز دیہی انتظامی شہر ہیں ۔ شہری مراکز انتظامی مرکزیت پروگرام کی تخلیق کے نتیجے کے طور پر 1980 کی دہائی کے دوران تعداد اور آبادی میں اضافہ ہوا۔ [31]

ثقافت[ترمیم]

بنگلہ دیش کی ثقافت متنوع سماجی معاشروں کے اثرات سے تیار ہوئی ہے۔ بنگلہ دیش کے اہم مذاہب اسلام ، بدھ مت اور ہندو مذہب ہیں ، جنہوں نے ملکی ثقافت کو متاثر کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

زبانیں[ترمیم]

بنگالی اسکرپٹ میں لکھا ہوا لفظ ویکیپیڈیا

بنگلہ دیش کی سرکاری زبان بنگالی ہے ، جو پڑوسی ہندوستانی ریاستوں مغربی بنگال ، آسام اور تریپورہ کے ساتھ مشترکہ ہے۔ بنگلہ دیش کے مختلف خطوں کے درمیان بنگالی بولیاں مختلف ہوتی ہیں۔

کنیت[ترمیم]

بنگلہ دیشی مسلمان عام طور پر لیکن خصوصی طور پر کنیت نہیں رکھتے ہیں جن کی عربی اور فارسی اصلیت ہے۔ بنگلہ دیشی ہندوؤں نے سنسکرت شدہ بنگالی نام رکھے ہیں۔ بہت سے بنگلہ دیشی عیسائی پرتگالی کنیت رکھتے ہیں۔ بدھسٹوں کے پاس بنگالی اور تبتی برمن کنیتوں کا مرکب ہے۔

مزید دیکھیں[ترمیم]

  • بنگلہ دیشیوں کی فہرست
  • بنگلہ دیشی ڈایاسوپرہ
  • بنگلہ دیش کی آبادی

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "World Population Prospects: The 2017 Revision". ESA.UN.org (custom data acquired via website). United Nations Department of Economic and Social Affairs, Population Division. اخذ شدہ بتاریخ 10 ستمبر 2017. 
  2. Migration Profile – Saudi Arabia
  3. Migration Profile – UAE
  4. 2011 Census: KS201UK Ethnic group, local authorities in the United Kingdom ONS, Retrieved 21 October 2013
  5. Migration Profile – Malaysia
  6. Migration Profile – Kuwait
  7. Migration Profile – Qatar
  8. "দক্ষিণ আফ্রিকায় বাংলাদেশি ব্যবসায়ীদের সুনাম | Jamuna TV". Jamuna Television. 27 March 2018. اخذ شدہ بتاریخ 25 جولا‎ئی 2019. 
  9. "Bangladesh-Singapore Bilateral Relations". High Commission of Bangladesh, Singapore. 08 دسمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 نومبر 2015. 
  10. Migration Profile – Oman
  11. "Amministrazione Centrale". lavoro.gov.it. 08 دسمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 دسمبر 2015. 
  12. Migration Profile – Bahrain
  13. Migration Profile – Maldives
  14. Australian Government – Department of Immigration and Border Protection. "The Bangladesh-born Community". 13 فروری 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2014. 
  15. [1] Ethnic Origin (247), Single and Multiple Ethnic Origin Responses (3) and Sex (3) for the Population of Canada, Provinces, Territories, Census Metropolitan Areas and Census Agglomerations, 2006 Census – 20% Sample Data – Statistics Canada.
  16. "バングラデシュ人民共和国(People's Republic of Bangladesh)". Ministry of Foreign Affairs (Japan) (بزبان جاپانی). اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2017. 
  17. "Profiles on Lawful Permanent Residents: 2013 Country". dhs.gov. 28 August 2014. اخذ شدہ بتاریخ 11 دسمبر 2015. 
  18. ^ ا ب "IRIN Asia – BANGLADESH: Migrants fare badly in Italy – Bangladesh – Economy – Migration". IRINnews. 29 October 2010. اخذ شدہ بتاریخ 11 دسمبر 2015. 
  19. "체류외국인 국적별 현황"، 《통계연보(글내용) < 통계자료실 < 출입국·외국인정책본부》، South Korea: Ministry of Justice، 2014، صفحہ 290، اخذ شدہ بتاریخ 15 اکتوبر 2015 
  20. Состав группы населения «Указавшие другие ответы о национальной принадлежности» -ВПН-2010
  21. Ethnologue. "بنگلہ دیش". ایتھنولوگ. اخذ شدہ بتاریخ 6 جولائی 2013. 
  22. "باب 1: مذہبی وابستگی". ورلڈز مسلمز: اجتماعیت
  23. "Bangladesh". The World Factbook. CIA. اخذ شدہ بتاریخ 22 دسمبر 2014. 
  24. Bangladesh: Country Profile آرکائیو شدہ 6 جولا‎ئی 2011 بذریعہ وے بیک مشین. بنگلہ دیش بیورو آف ایجوکیشنل معلومات و شماریات (BANBEIS)
  25. "৬। নাগরিকত্ব – গণপ্রজাতন্ত্রী বাংলাদেশের সংবিধান". اخذ شدہ بتاریخ 29 اپریل 2015. 
  26. "UNHCR | Refworld | Bangladesh Citizenship (Temporary Provisions) Order, 1972". 
  27. "Chakmas, the - Banglapedia". 
  28. "Google". 
  29. "Archived copy". 17 اکتوبر 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 اگست 2016. 
  30. "The World Factbook — Central Intelligence Agency". www.cia.gov (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 21 اپریل 2017. 
  31. Rahim, Enayetur. "Urban Society". In Heitzman & Worden.