جیکب برنولی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
جیکب برنولی
(جرمن میں: Jakob Bernoulliخاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
Jakob Bernoulli.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 27 دسمبر 1654[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
بازیل[2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 16 اگست 1705 (51 سال)[3][4][1][5]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
بازیل[6]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
رہائش سویٹزرلینڈ
شہریت Flag of Switzerland (Pantone).svg سویٹزرلینڈ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب کالوینی
رکن سائنس کی پروشیائی اکیڈمی،فرانسیسی اکادمی برائے سائنس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رکن (P463) ویکی ڈیٹا پر
بہن/بھائی
عملی زندگی
مقام_تدریس جامعہ بازیل
مادر علمی جامعہ بازیل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
تعلیمی اسناد پی ایچ ڈی[7]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیمی اسناد (P512) ویکی ڈیٹا پر
ڈاکٹری طلبا جون برنولی
جیکب ہرمان
نکولس برنولی اول
پیشہ ریاضی دان،طبیعیات دان،طبیب،استاد جامعہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان لاطینی زبان[4]،فرانسیسی[8]،عبرانی[8]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
شعبۂ عمل ریاضی دان
ملازمت جامعہ بازیل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں نوکری (P108) ویکی ڈیٹا پر

جیکب برنولی ایک سوئس اور برنولی خاندان کا انتہائی نامور ریاضی دان تھا۔ وہ 27 دسمبر 1654ء کو سویٹزر لینڈ کے شہر بازیل میں پیدا ہوا۔ اپنے باپ کی خواہش پر اس نے الٰہیات پڑھی۔ مگر اپنے والدین کی خواہش کے برعکس اس نے ریاضی اور فلکیات بھی پڑھی۔ اس نے 1676ء سے 1682ء تک یورپ کا دورہ کیا اور سائنس اور ریاضی کی نئی دریافتوں کے متعلق آگاہی حاصل کی، جن میں رابرٹ بوائل اور رابرٹ ہک کی کاوشویں بھی شامل تھیں۔ گوٹفریڈ ویلہم لائبنیز سے خط کتابت کے دوران اسے حسابان (calculus) سے واقفیت ہوئی۔ پھر اس نے اپنے بھائی جون برنولی کے ساتھ مل کر اسے مختلف جگہ استعمال کیا خاص طور پر 1696ء میں ماروائی منحنی (transcendental curves) پر شائع کیا گیا مقالہ میں اس کا استعمال کیا۔ 1690ء میں جیکب برنولی پہلا شخص تھا جس نے جداشدہ تفرقی مساوات (separable differential equations) کو حل کا طریقہ دریافت کیا۔ 1682ء میں اس نے واپس بازیل آکر ریاضی اور سائنس کے اسکول کی بنیاد رکھی۔ وہ جامعہ بازیل میں 1687ء میں ریاضی کا استاد بنا اور اپنی باقی زندگی وہیں پڑھاتے ہوئے گزاری۔

اہم کام[ترمیم]

جیکب کی سب سے مشہور کاوش فن اٹکل (ars conjectandi) ہے جو اس کی وفات کے آٹھ سال بعد اس کے بھتیجے نکولس برنولی اول نے 1713ء میں شائع کیا۔ نظریۂ احتمال (probability theory) اور تالیفیات (combinatorics) میں ایک بنیادی حیثیت رکھتا ہے۔ اس نے یہ 1684ء سے 1689ء کے درمیان لکھا تھا اور اس میں اس زمانے کے ریاضی دانوں کا کام بھی شامل تھا۔ اس میں اس نے کثیر اعداد کا قانون (law of large numbers) بھی متعارف کرایا تھا۔ برنولی آزمائیش (bernoulli trial) اور برنولی عدد (bernoulli numbers) کی اصطلاحات بھی اسی کی کاوشوں کا نتیجہ تھیں۔ چاند کے ایک گڑھے کا نام بھی اس کے اور اس کے بھائی جون برنولی کے نام پر برنولی رکھا گیا ہے۔

ریاضی کے دائم e کی دریافت[ترمیم]

برنولی نے مرکب سود پڑھتے ہوئے ریاضی کا دائم e دریافت کیا۔


مزید دیکھیے[ترمیم]

  • Hoffman, J.E. (1970–80). "Bernoulli, Jakob (Jacques) I". Dictionary of Scientific Biography. 2. New York: Charles Scribner's Sons. pp. 46–51. ISBN 0-684-10114-9
  • Schneider, I., 2005, "Ars conjectandi" in Grattan-Guinness, I., ed., Landmark Writings in Western Mathematics. Elsevier: 88–104.
  • Livio, Mario, 2002, The golden ratio: the story of Phi, the extraordinary number of nature, art, and beauty. London.

بیرونی روابط[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 خالق: John O'Connor اور Edmund Robertson نقص حوالہ: نادرست <ref> ٹیگ؛ نام "49fdb5fe81b8355b0a67fc010bab1d0476734c67" مختلف مواد کے ساتھ کئی بار استعمال ہوا ہے۔
  2. اجازت نامہ: سی سی زیرو
  3. اجازت نامہ: سی سی زیرو
  4. ^ 4.0 4.1 http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb120751142 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  5. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Jakob-Bernoulli — بنام: Jakob Bernoulli — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  6. اجازت نامہ: سی سی زیرو
  7. Mathematics Genealogy Project ID: https://www.genealogy.math.ndsu.nodak.edu/id.php?id=54440
  8. ^ 8.0 8.1 http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb120751142 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ