طبقات الحفاظ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
طبقات الحفاظ
 
Tabqat-ul-Huffadh.jpg
مصنف جلال الدین سیوطی
زبان عربی زبان
موضوعات تراجم الرجال
ناشر دارالکتب العلمیۃ، بیروت، لبنان
تاریخ اشاعت 1414ھ/ 1994ء
صفحات 125

طبقات الحفاظ امام جلال الدین سیوطی (849ھ/1445ء911ھ/1505ء) کی تصنیف ہے جو تراجم الرجالکے حوالہ سے نویں صدی عیسوی میں تحریر کی جانے والی مشہور کتاب ہے۔اِس کتاب کو علامہ ذہبی کی تصنیف تذکرۃ الحفاظ کے بعد مستند خیال کیا جاتا ہے۔

مواد[ترمیم]

طبقات الحفاظ علامہ ذہبی (متوفی 748ھ/ 1348ء) کی تصنیف تذکرۃ الحفاظ کا ملخص ہے۔ اولاً مصنف نے اِسے خلاصہ کی صورت میں برقرار رکھا لیکن بعد ازاں ایک تکملہ بصورت ذیل لکھا اور کتاب سے ملحق کردیا۔مصنف کی اِس تحریر سے معلوم ہوتا ہے جو مقدمہ میں لکھی ہے کہ اِس کتاب کا بیشتر حصہ تذکرۃ الحفاظ سے ملخص شدہ ہے۔ یہ تکملہ تین ذیول کی شکل میں لکھا گیا جو دمشق میں 1347ھ/ 1929ء میں شائع ہوئے تھے۔ اِن ذیول ثلاثہ میں خود مصنف کا تکملہ تذکرۃ الحفاظ یعنی طبقات الحفاظ، الحافظ تقی الدین محمد بن فہد المکی کا ذیل طبقات الحفاظ اور الحافظ ابوالمحاسن الحسینی الدمشقی کا ذیل تذکرۃ الحفاظ بھی شامل ہیں۔[1] کتاب کے مقدمہ میں مصنف نے اِس کتاب کی وجہ تصنیف بھی تحریر کی ہے:

فھذا کتاب طبقات الحفاظ و معدکی حملۃ العلم النبوی و من یرحع الی اجتھادھم فی التوثیق والتجریح، والتضعیف والتصحیح۔ لخصتھا من "طبقات" امام الحافظ أبی عبداللہ الذھبی، وذیلے علیہ من جاء بعدہ۔ [2]

اِضافہ و طبقات[ترمیم]

علامہ ذہبی (متوفی 748ھ/ 1348ء) نے تذکرۃ الحفاظ میں 1176 حفاظِ حدیث کا تذکرہ کیا ہے جو کل 21 طبقات پر مشتمل ہے۔ امام جلال الدین سیوطی نے تذکرۃ الحفاظ کی تلخیص کرتے ہوئے اپنے زمانہ تک کے حفاظِ حدیث کا اِضافہ کیا۔ اِس اضافہ میں علامہ ذہبی کے تراجم الرجال سے 12 شخصیات کا ترجمہ شامل کردیا گیا۔ تذکرۃ الحفاظ 21 طبقات میں تھی، امام جلال الدین سیوطی کے اِضافہ سے یہ 24 طبقات ہوگئے۔[3]

پہلا طبقہ[ترمیم]

پہلے طبقہ میں صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم کا تذکرہ کیا گیا ہے، اِس طبقے کا آغاز حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ کے ترجمہ سے ہوتا ہے۔کل 23 صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم کے تراجم اِس طبقہ میں موجود ہیں۔

دوسرا طبقہ[ترمیم]

دوسرے طبقہ میں کبار تابعین کا تذکرہ کیا گیا ہے، اِس طبقے کا آغاز مشہور تابعی علقمہ بن قیس سے ہوتا ہے۔کل 30 تابعین کے تراجم اِس طبقہ میں موجود ہیں۔

تیسرا طبقہ[ترمیم]

تیسرے طبقہ میں وسطی تابعین کا تذکرہ کیا گیا ہے۔ اِس طبقہ کا آغاز امام حسن بصری کے ترجمہ سے ہوتا ہے اور اختتام عبداللہ بن عبیداللہ بن ابی ملیکۃ کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

چوتھا طبقہ[ترمیم]

چوتھے طبقہ میں صغار تابعین کا تذکرہ کیا گیا ہے۔ اِس طبقہ کا آغاز امام الفقیہ مکحول الدمشقی سے ہوتا ہے اور اختتام ابو عون البصری عبداللہ بن عون بن ارطبان المزنی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

پانچواں طبقہ[ترمیم]

پانچویں طبقہ کا آغاز ابو عثمان المدنی عبیداللہ بن عمر بن حفص بن عاصم بن محمد العدوی کے ترجمہ سے اور اختتام ابو یحییٰ البصری مہدی بن میمون الازدی المعولی مولاھم کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔ 

چھٹا طبقہ[ترمیم]

چھٹے طبقہ کا آغاز ابوعلی الزاہد فضیل بن عیاض بن مسعود التمیمی الیربوعی کے ترجمہ سے اور اختتام ابوبدر السکوفی الکوفی المحدث شجاع بن ولید بن قیس کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

ساتواں طبقہ[ترمیم]

ساتویں طبقہ کا آغاز ابوسعید البصری اللؤلؤی الحافظ عبدالرحمن بن مہدی بن حسان کے ترجمہ سے اور اختتام داؤد بن یحییٰ بن یمان العجلی الکوفی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

آٹھواں طبقہ[ترمیم]

آٹھویں طبقہ کا آغاز ابوبکر المکی حمیدی عبداللہ بن زبیر بن عیسیٰ الازدی کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ الامام ابوالحسن علی بن الحسین الذھلی الافطس کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

نواں طبقہ[ترمیم]

نویں طبقہ کا آغاز ابو مروان السلمی عبدالملک بن حبیب کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ الامام ابومحمد فضل بن محمد بن المسیب البیہقی الشعرانی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

دسواں طبقہ[ترمیم]

دسویں طبقہ کا آغاز ابواسحاق ابراہیم بن اورمۃ الحافظ الاصبہانی کے ترجمہ سے اور اختتام یحییٰ بن محمد بن صاعد بن کاتب کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

گیارہواں طبقہ[ترمیم]

گیارہویں طبقہ کا آغاز ابوعوانہ الحافظ الکبیر یعقوب بن اسحاق بن یزید الاسفرائینی کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ ابوحفص عمر بن سہل بن اسماعیل الدنپوری القرمیسینی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

بارہواں طبقہ[ترمیم]

بارہویں طبقہ کا آغاز الامام الحجۃ محدث عراق محمد بن عبداللہ بن ابراہیم بن عبدویہ البغدادی البزار ابوبکر الشافعی کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ ابوسلیمان محمد بن عبداللہ بن احمد بن ربیعۃ ابن زبر الربعی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

تیرہواں طبقہ[ترمیم]

تیرہویں طبقہ کا آغاز الحافظ الامام محمد بن یوسف بن محمد بن جنید الجرجانی ابوزُرعۃ الکشی کے ترجمہ سے اور اختتام علامہ الحافظ ابو الحسن علی بن احمد بن الحسن بن محمد بن نعیم البصری النُعَیمی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

چودہواں طبقہ[ترمیم]

چودہویں طبقہ کا آغاز الامام الحافظ ابوعبداللہ محمد بن علی بن عبداللہ بن محمد بن دحیم الساحلی کے ترجمہ سے اور اختتام القاضی محدث ابوالقاسم عبیداللہ بن احمد بن محمد بن حسکان القرشی العامری النیسابوری الحسکانی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

پندرہواں طبقہ[ترمیم]

پندرہویں طبقہ کا آغاز الامام الحافظ الکبیر ابونصر علی بن ھبۃ اللہ بن علی ابن جعفر بن علی ابن ماکولا العجلی الجرباذقانی البغدادی کے ترجمہ سے اور اختتام  الحافظ ابونصر الحسن بن محمد بن ابراہیم بن احمد الیونارتی الاصبہانی کے ترحمہ پر ہوتا ہے۔

سولہواں طبقہ[ترمیم]

سولہویں طبقہ کا آغاز محدث عراق الامام ابو الفضل محمد بن ناصر بن محمد بن علی بن عمر السلامی کے ترجمہ پر اور اختتام الحافظ ابوعبداللہ محمد بن الحسین بن علی بن یعقوب الزغوالی المروزی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

سترہواں طبقہ[ترمیم]

سترہویں طبقہ کا آغاز الحافظ الامام المتقن ابوالقاسم خلف بن عبدالملک بن مسعود بن موسیٰ ابن بشکوال الانصاری الاندلسی کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ الامام ابوعبداللہ محمد بن عبدالرحمن بن علی بن محمد بن سلیمان التجیبی المرسی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

اٹھارہواں طبقہ[ترمیم]

اٹھارہواں طبقہ الحافظ محدث مالقہ عبداللہ بن الحسن بن احمد الانصاری ابوبکر المالقی القرطبی کے ترجمہ سے اور اختتام محدث عالم صدر الدین ابوعلی الحسن بن محمد بن محمد بن محمد بن محمد بن عمروک القرشی التیمی البکری النیسابوری الدمشقی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

اُنیسواں طبقہ[ترمیم]

اُنیسویں طبقہ کا آغاز الامام الحافظ سیف الدین ابوالعباس احمد بن المجد عیسیٰ ابن الشیخ موفق الدین عبداللہ بن احمد ابن قدامہ المقدسی کے ترجمہ سے اور اختتام الامام محدث الحافظ جمال الدین ابوحامد محمد بن علم الدین علی بن محمود بن احمد المحمودی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

بیسواں طبقہ[ترمیم]

بیسویں طبقہ کا آغاز الامام الحافظ ابوالمظفر منصور بن سُلَیم بن منصور الاسکندرانی الشافعی کے ترجمہ سے اور اختتام الامام الحافظ ابوجعفر احمد بن ابراہیم بن زبیر الثقفی العاصمی الغرناطی النحوی ابن الزبیر کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

اکیسواں طبقہ[ترمیم]

اکیسویں طبقہ کا آغاز الامام الحافظ شہاب الدین ابوالعباس احمد بن فرح بن احمد ابن فرح الاشبیلی الشافعی کے ترجمہ سے اور اختتام ابوعمرو محمد بن عثمان بن یحییٰ بن احمد بن عبدالرحمن ابن ظافر ابن المرابط الغرناطی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

بائیسواں طبقہ[ترمیم]

بائیسویں طبقہ کا آغاز عبداللہ بن محمد بن عبداللہ بن ابی بکر البہاء بن خلیل کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ شمس الدین ابوبکر محمد بن عبداللہ بن احمد بن عبداللہ بن احمد بن محمد بن ابراہیم ابوبکر بن المحب المقدسی الحنبلی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

تئیسواں طبقہ[ترمیم]

تئیسویں طبقہ کا آغاز الامام الحافظ محدث زین الدین عبدالرحمن بن احمد بن رجب بن الحسن ابن رجب الحنبلی کے ترجمہ سے اور اختتام الحافظ نور الدین ابوالحسن علی بن ابی بکر بن سلیمان بن عمر بن صالح الہیثمی کے ترجمہ پر ہوتا ہے۔

چوبیسواں طبقہ[ترمیم]

چوبیسویں طبقہ کا آغاز جمال الدین عبداللہ بن ابراہیم بن خلیل بن عبداللہ الشرایحی کے ترجمہ سے اور اختتام امام الحافظ الدنیاء ابن حجر عسقلانی کے ترجمہ پر ہوا ہے جو 852ھ/ 1449ء میں قاہرہ، مصر میں فوت ہوئے۔

اشاعت[ترمیم]

جرمن مستشرق فرڈیننڈ وسٹنفیلڈ نے 1833ء/ 1834ء میں جرمنی کے شہر گوٹنگن سے شائع کیا۔ یہ فرانسیسی زبان میں کیا گیا ترجمہ تین جلدوں میں ترتیب دیا گیا تھا۔ 1347ھ/ 1929ء میں طبقات الحفاظ بصورت ذیول الثلاثہ دمشق، شام سے شائع ہوئے۔[3] جدید طرز پر مبنی نسخہ کی طباعت دارالکتب العلمیہ، بیروت، لبنان سے 1414ھ/ 1994ء میں ہوئی۔ اِس نسخہ جدید میں کل صفحات 607 ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. دائرۃ المعارف الاسلامیۃ: جلد 11، صفحہ 540، مقالہ: جلال الدین سیوطی۔ مطبوعہ لاہور 1395ھ/ 1975ء۔
  2. جلال الدین سیوطی: طبقات الحفاظ، صفحہ 11، مقدمۃ المصنف، مطبوعہ دارالکتب العلمیہ، بیروت، لبنان، 1414ھ/ 1994ء۔
  3. ^ 3.0 3.1 عبدالحلیم چشتی: تذکرہ جلال الدین سیوطی، باب پنجم، صفحہ 224۔ مطبوعہ کراچی، 1421ھ۔