2002ء میں پاکستان میں دہشت گردی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

2002ء میں، 15 دہشت گردانہ، باغیانہ اور فرقہ وارانہ واقعات میں 60 افراد ہلاک اور 150 زخمی ہونے کی اطلاعات جمع کی گئی۔

فروری 2002ء[ترمیم]

  • 22 فروری — امریکی صحافی ڈینیل پرل کو اغوا کیا گیا اور پھر کراچی میں قتل کر دیا گیا۔[1]
  • 26 فروری — کم از کم 11 شیعہ نمازیوں کو راولپنڈی میں شاہ نجف مسجد میں نقاب پوش مسلح افراد کے ایک گروہ کی طرف سے اندھا دھند فائرنگ سے ہلاک کر دیا گیا[2]

مارچ – مئی 2002ء[ترمیم]

  • 17 مارچاسلام آباد میں سخت حفاظتی سفارتی انکلیو میں ایک پروٹسٹنٹ چرچ پر دستی بم حملہ میں، ایک امریکی سفارت کار کی بیوی اور بیٹی سمیت پانچ افراد ہلاک ہو گئے، دیگر 40 افراد زخمی ہوئے۔[3]
  • 7 مئیاقبال ٹاؤن، لاہور میں ڈرائیور، ایک پولیس والے اور معروف مذہبی سکالر پروفیسر ڈاکٹر غلام مرتضی ملک کو دو مسلح افراد نے قتل کر دیا۔[4]
  • 8 مئیبس بم دھماکے، کراچی میں 11 فرانسیسی اور 3 پاکستانی ہلاک کے قریب شیرٹن ہوٹل۔[5]

جون 2002ء[ترمیم]

جولائی 2002ء[ترمیم]

اگست 2002ء[ترمیم]

ستمبر 2002ء[ترمیم]

اکتوبر 2002ء[ترمیم]

نومبر 2002ء[ترمیم]

دسمبر 2002ء[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]