2016ء جامعہ باچا خان حملہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
باچا خان یونیورسٹی حملہ، 2016ء
بسلسلہ شمال مغرب پاکستان میں جنگ
باچا خان یونیورسٹی is located in پاکستان
باچا خان یونیورسٹی
باچا خان یونیورسٹی
مقامی نام چارسدہ یونیورسٹی حملہ
مقام چارسدہ، خیبرپختونخوا، پاکستان
تاریخ 20 جنوری 2016ء
9:30 صبح (متناسق عالمی وقت+05:00)
نشانہ باچا خان یونیورسٹی چارسدہ کے طلبہ و تعلیمی عملہ
حملے کی قسم قتل عام، خودکش حملہ اور school shooting
ہلاکتیں 21+[1]
زخمی درجنوں
متاثرین طلبہ
مرتکبین تحریک طالبان پاکستان کا ذیلی گروہ گیدڑ گروپ[2]
شرکا کی تعداد 8 تا 10

20 جنوری بروز بدھ2016ء کو چارسدہ کے علاقے میں قائم جامعہ باچاخان پر صبح نو بجے کے قریب چار مسلح حملہ آوروں نے حملہ کیا جس میں ابتدائی طور پر 21 افراد ہلاک ہوئے،[1] اور 20 سے زائد افراد زخمی ہوئے۔ مرنے والوں میں جامعہ کے شعبہ کیمیا کا ایک پروفیسر بھی شامل تھا۔ 200 سے زائد طلبہ کو یونیورسٹی کے احاطہ سے بچا کر نکال لیا گیا جبکہ 4 بندوق بردار مارے گئے۔ اس حملے کی ذمہ داری تحریک طالبان پاکستان کے ذیلی گروہ گیدڑ گروپ نے قبول کی جبکہ تحریک طالبان پاکستان نے اس کی مذمت کی۔

رد عمل[ترمیم]

مقامی[ترمیم]

  • اس واقعے کی تمام پاکستانی حکومتی سربراہان بشمول صدر وزیر اعظم اور سیاسی قائدین نے مذمت کی جماعت اسلامی کے سربراہ سراج الحق نے مذمت کے ساتھ کہا کہ قومی لائحہ عمل پر مکمل طور پر عمل کیا جائے اور غلطیوں کو واضح کیا جائے۔
  • پاکستانی فوج کے سربراہ راحیل شریف واقعے کے بعد چارسدہ پہنچے اور اور اس آپریشن کا معائنہ کیا۔
  • پیمرا نے ٹی وی چینلوں کو اس واقعے کے تناظر میں ہدایات جاری کی۔

بین الاقوامی[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "LIVE: Seven killed, 12 injured as gunmen attack Bacha Khan University in Charsadda – دی ایکسپریس ٹریبیون"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون (انگریزی زبان میں)۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 جنوری 2016۔
  2. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ AlJazeera نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔

بیرونی روابط[ترمیم]