ایشیاء میں اسلام

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

مغربی ایشیاء میں واقع جزیرہ نمائے عرب میں ساتویں صدی عیسوی میں اسلام کا آغاز ہوا، اور یہیں سے اسلام کی دعوت پوری دنیا میں پھیلی۔ کہا جاتا ہے کہ اسلام بھارت کے شمال مشرق میں واقع منی پور میں 615ء میں شیتاگونج ساحل کی راہ سے پہونچا، یہ وہ دور تھا جب شاہراہ ریشم آباد اور انتہائی اہم تجارت اس راستے سے ہوا کرتی تھی۔

اسی طرح ریاست کیرالا (مالابار) میں اسلام ساحل کے ذریعہ پہونچا، مقامی روایات کے مطابق ایک عرب قافلہ مالابار کے ساحل پر اترا جس میں کچھ صحابہ خصوصاً مالک بن دینار بھی ساتھ تھے۔ اس قافلہ نے باشندگان مالابار کو نئے دین کی آمد کی خوش خبری سنائی اور قبول اسلام کی دعوت دی۔ مالک بن دینارRAZI.PNG نے ہندوستان کی پہلی مسجد چیرامن مسجد 629ء میں مالابار میں تعمیر کی۔

موجودہ صورتحال[ترمیم]

اسلام اس وقت ایشیاء کا سب سے بڑا مذہب (25 فیصد) ہے، اس کے بعد ہندومت ہے۔ [1] 2010ء میں ایشیاء میں مسلمانوں کی کل آبادی 1 بلین کے قریب تھی جو مجموعی آبادی کا 25 فیصد ہے۔ ایشیاء میں مسلمانوں کی کثیر آبادی موجود ہے، جس میں مشرق وسطی (مغربی/جنوب مغربی ایشیاء)، وسطی ایشیاء، جنوبی ایشیاء اور جنوب مشرقی ایشیاء انتہائی کثیر آبادی والے علاقے ہیں اور اس حوالے سے ان علاقوں کی خاصی اہمیت ہے۔ دنیا بھر میں مسلمانوں کی مجموعی تعداد کی 62 فیصد آبادی ایشیاء میں انڈونیشیا، پاکستان، بھارت اور بنگلہ دیش میں آباد ہے۔ جزیرہ نمائے عرب سے باہر اسلام کی اشاعت کا ایک سبب تجارت بھی ہے جس کے وسیع راستے مشرق وسطی کو چین سے ملاتے تھے۔

ایشیاء میں اسلام
علاقہ مجموعی آبادی مسلمان ٪ مسلمان ٪ از کل مسلمان
وسطی ایشیاء ۹۲٬۰۱۹٬۱۶۶ ۷۶٬۱۰۵٬۹۶۲ ۸۲٫۷۰۷٪ ۵٫۱۵۵٪
مشرقی ایشیاء ۱٬۵۲۷٬۹۶۰٬۲۶۱ ۳۹٬۶۰۹٬۳۵۰ ۲٫۵۹۲٪ ۲٫۶۸۳٪
مشرق وسطی ۲۷۴٬۷۷۵٬۵۲۷ ۲۵۲٬۲۱۹٬۸۳۲ ۹۱٫۷۹۱٪ ۱۷٫۰۸۵٪
جنوبی ایشیاء ۱٬۴۳۷٬۳۲۶٬۶۸۲ ۴۵۶٬۰۶۲٬۶۴۱ ۲۸٫۹۴۷٪ ۲۸٫۱۸۴٪
جنوب مشرقی ایشیاء ۵۷۱٬۳۳۷٬۰۷۰ ۲۳۹٬۵۶۶٬۲۲۰ ۴۱٫۹۳۱٪ ۱۶٫۲۲۸٪
کل ۳٬۹۰۳٬۴۱۸٬۷۰۶ ۱٬۰۲۳٬۵۶۴٬۰۰۵ ۲۶٫۲۲۲٪ ۶۹٫۳۳۶٪

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ [1] accessed April 3,2012.

بیرونی روابط[ترمیم]