طریقت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

مقالات بہ سلسلۂ مضامین
تصوف
Allah.svg
تصوف کی تاریخ

عقائد و عبادات
خدا کی وحدانیت
قبولیت اسلام
نمـاز · روزہ · حج · زکوٰۃ
صوفي شخصیات
اویس قرنی · عبدالقادر جيلانی
رابعہ بصری · سلطان باہو · حسن بصری · ابن عربی· مولانا رومی
نظام الدین اولیاء
تصوف کی معروف کتابیں
احياء علوم الدين · کشف المحجوب · مكتوبات الرباني · مکاشفة القلوب · القول الجمیل فی بیان اسوالسبیل
صوفی مکاتبِ فکر
سنی صوفی · شـیعہ صوفی
سلاسلِ طریقت
قادریہ · چشتیہ · نقشبندیہ
سہروردیہ · مجددی · قادری سروری
قادری المنتہی
علمِ تصوف کی اصطلاحات
طریقت · معرفت · فناء · بقاء · لقاء
سالک · شیخ · طریقہ · نور · تجلی
وحدت الوجود · وحدت الشہود
مساجد
مسجد الحرام · مسجد نبوی
مسجد اقصٰی
تصوف کی نسبت سے معروف علاقے
دمشق · خراسان · بیت المقدس
بصرہ · فاس

طريقت صوفیا کے نزدیک شریعت سے اگلا درجہ ہے جس میں سالک اپنے ظاہر کے ساتھ ساتھ اپنے باطن پر خصوصی توجہ دیتا ہے اس توجہ کے لئے اس کو کسی استاد کی ضرورت ہوتی ہے جسے شیخ ، مرشد یا پیر کہا جاتا ہے۔ اس شیخ کی تلاش اس وجہ سے بھی ضروری ہے کہ جب تک انسان اکیلا ہوتا ہے وہ شیطان کے لئے ایک آسان شکار ہوتا ہے مگر جب وہ کسی شیخ کی بیعت اختیار کر کے اس کے مریدین کی فہرست میں شامل ہو جاتا ہے تو وہ شیطان کے وسوسوں سے کافی حد تک بچ جاتا ہے پھر شیخ کی تعلیم کے مطابق وہ اپنے نفس کو عیوب سے پاک کرتا جاتا ہے یہان تک کہ اسے اللہ کا فرب حاصل ہو حاتا ہے اس سب عمل کو یا اس راستے پر چلنے کو طریقت کہتے ہیں۔