ایلس پال

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ایلس پال
Alice Paul cph.3a38295.jpg
1918ء میں

معلومات شخصیت
پیدائش 11 جنوری 1885(1885-01-11)
ماؤنٹ لورل، نیو جرسی
وفات جولائی 9، 1977(1977-70-90) (عمر  92 سال)
مورسٹاؤن، نیو جرسی
شہریت Flag of the United States (1795-1818).svg ریاستہائے متحدہ امریکا  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت نیشنل ویمنز پارٹی
والدین ولیم میکل پال I
ٹیسی پیری
عملی زندگی
تعليم Swarthmore College(بی ایس سی)
Woodbrooke Quaker Study Centre
لندن اسکول آف اکنامکس
University of Pennsylvania(MA، علامۂِ فلسفہ)
American University(فاضل القانون)
مادر علمی جامعہ پنسلوانیا
امریکی یونیورسٹی  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ حقوق رائے
اعزازات
نیشنل وومنز ہال آف فیم (1979)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

اہل پال (11 جنوری 1985ء - 9 جولائی 1977) ایک فعالیت پسند خاتون تھیں۔ ان کا نام امریکی آئین میں انیسویں ترمیم کی کے سب سے اہم ناموں میں شمار ہوتا ہے۔ اس ترمیم کے مطابق ووٹ ڈالنے میں جنس کی تفریق نہیں کی جاسکتی۔ لوسی گرلز اور دوسروں کے ساتھ مل کر وہ ٹرانسلیشن آف سول نافرمانی کی پرامن تحریک سائلنٹ کا اہتمام کیا اور جیل بھی کاٹی۔ جس کے نتیجے میں 1920ء میں انیسویں ترمیم منظور ہو گئی۔ اہل الرس دی نیشنل موومنٹ پارٹی کی لیڈر نے عورتوں کو آئین میں برابری بلانے کی تحریک چلاتی رہیں ان کی ترجیح عورتوں کے قانونی حقوق حاصل کرنا تھا اس کے نتیجے میں 1964 میں آنے والے سول رائٹس میں عورتوں کو امتیاز اس لوک سے تحفظ دینا شامل کیا گیا ہے اس سال پہلے یونیورسٹی کے نفسیات میں ایم اے کیا اور پھر اسی یونیورسٹی سے 1910 میں سوشیالوجی میں پی ایچ ڈی کی ڈگری تو 22 1927 میں ایل ایم اور انیس سو اٹھائیس میں اس یونیورسٹی سے ڈاکٹر انیس سو تیس میں آئین میں ایک بالغ عمر امین کو ایلس پالنے لکھا اس ترمیم میں کسی قسم کے صنفی امتیاز کے بغیر تمام شہریوں کو قتل کرنے کی بات کی گئی ہے اور عورتوں اور مردوں کے درمیان میں جائداد ملازمت اور دیگر امور میں برابری دینے کا تحفظ کی حامل ہے یہ ترمیم اب تک پاس نہیں ہو سکی مگر آدھی سے زیادہ امریکی اسے اپنے حقوق کا حصہ بنا چکی ہیں انیسویں ترمیم کے سو سال پورے ہونے پر سن 2020 میں 10 ڈالر کا نیا نوٹ جاری کیا جائے کیا گیا جس طرح اہل سال کے ساتھ ساتھ ووٹ کے حقوق کی تحریک کے نمایاں ناموں کی تصویریں موجود ہیں جن میں سو چودہ سو سال بھی اینتھونی ہیں ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

مزیھ مطالعہ[ترمیم]

  • Baker, Jean H. Sisters: The Lives of American Suffragists. New York: Hill and Wang, 2005.
  • _____۔ Votes for Women: The Struggle for Suffrage Revisited. New York: Oxford University Press, 2002.
  • Butler, Amy E. Two Paths to Equality: Alice Paul and Ethel M. Smith in the ERA Debate, 1921–1929. Albany: State University of New York Press, 2002.
  • Cahill, Bernadette. Alice Paul, the National Woman's Party and the Vote: The First Civil Rights Struggle of the 20th Century. Jefferson: McFarland & Company, Inc.، Publishers, 2005.
  • Cott، Nancy F. (1984). "Feminist politics in the 1920s: The National Woman's Party". The Journal of American History. 71 (1): 43–68. JSTOR 1899833. doi:10.2307/1899833. 
  • Cullen-Dupont, Kathryn. American Women Activists' Writings: An Anthology, 1637–2002. New York: Cooper Square Press, 2002.
  • Evans, Sara M. Born for Liberty: A History of Women in America. New York: The Free Press, 1989.
  • Graham، Sally Hunter (1983). "Woodrow Wilson, Alice Paul, and the Woman Suffrage Movement" (PDF). Political Science Quarterly. 98 (4): 665–679. JSTOR 2149723. doi:10.2307/2149723. جون 6, 2014 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ.  آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ 72.22.72.207 [Error: unknown archive URL]
  • Hartmann, Susan M. "Paul, Alice"; American National Biography Online Feb. 2000 Access جون 5, 2014
  • Hawranick، Sylvia؛ Doris، Joan M.؛ Daugherty، Robert (2008). "Alice Paul: Activist, advocate, and one of ours". Affilia. 23 (2): 190–196. doi:10.1177/0886109908314332. 
  • Hill, Jeff. Defining Moments: Women's Suffrage. Detroit: Omnigraphics, Inc.، 2006.
  • Irwin, Inez Haynes. The Story of Alice Paul and the National Woman's Party. Fairfax: Denlinger's Publishers, LTD, 1964.
  • Leleux, Robert. "Suffragettes مارچ on Washington." The American Prospect 24 (2013): 81.
  • Lunardini, Christine. Alice Paul: Equality for Women. Boulder: Westview Press, 2013.
  • _______۔ From Equal Suffrage to Equal Rights: Alice Paul and the National Woman's Party, 1910–1928. New York: New York University Press, 1986.
  • McGerr، Michael (1990). "Political Style and Woman's Power, 1830–1930". The Journal of American History. 77 (3): 864–885. JSTOR 2078989. doi:10.2307/2078989. 
  • Olson, Tod. "One Person, One Vote." Scholastic Update 127 (1994): 15
  • Stevens, Doris. Jailed for Freedom. New York: Liverwright Publishing Corporation, 1920.
  • Stillion Southard, Belinda Ann. "The National Woman's Party's Militant Campaign for Woman Suffrage: Asserting Citizenship Rights through Political Mimesis." (2008)۔ PhD thesis, U of Maryland online
  • Walton، Mary (2010). A Woman's Crusade: Alice Paul and the Battle for the Ballot. Palgrave Macmillan. ISBN 978-0-230-61175-7. 
  • Ware، Susan (2012). "The book I couldn't write: Alice Paul and the challenge of feminist biography". Journal of Women's History. 24 (2): 13–36. doi:10.1353/jowh.2012.0022. 
  • Willis, Jean L. "Alice Paul: The Quintessential Feminist," in Feminist Theorists, ed. Dale Spender (1983)۔
  • Zahniser، J. D.؛ Fry، Amelia R. (2014). Alice Paul: Claiming Power. New York: Oxford University Press. ISBN 978-0-19-995842-9. 
  • Deborah Kops (فروری 28, 2017). Alice Paul and the Fight for Women's Rights: From the Vote to the Equal Rights Amendment. Boyds Mills Press. صفحات 96–. ISBN 978-1-62979-795-3. 

بیرونی روابط[ترمیم]