تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
تنظیم برائے
ممانعت کیمیائی ہتھیار
Organisation for the
Prohibition of Chemical Weapons
OPCW logo.gif
تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار لوگو
CWC Participation.svg
تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار کے رکن ممالک (سبز)
تشکیل 29 اپریل 1997[1]
صدر دفتر ہیگ, نیدرلینڈز
52°05′28″N 4°16′59″E / 52.091241°N 4.283193°E / 52.091241; 4.283193متناسقات: 52°05′28″N 4°16′59″E / 52.091241°N 4.283193°E / 52.091241; 4.283193
رکنیت 190 رکن ممالک
تمام ریاستوں فریق برائے کیمیائی ہتھیار اجلاس خود کار طریقے سے رکن ہیں.
6 اقوام متحدہ کے رکن ممالک غیر رکن ہیں: انگولا, برما, مصر, اسرائیل, شمالی کوریا اور جنوبی سوڈان.
سرکاری زبان
انگریزی، فرانسیسی، روسی، چینی، ہسپانوی، عربی
ڈائریکٹر جنرل
ترکی کا پرچم احمد عزمکو[2]
سرکاری اعضاء
ریاستی جماعتوں کی کانفرنس
ایگزیکٹو کونسل
تکنیکی سیکرٹریٹ
بجٹ €71 ملین/سال (2012)[3]
عملہ اندازاً 500 [4]
ویب سائٹ opcw.org

تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار (Organisation for the Prohibition of Chemical Weapons) ایک بین الحکومتی تنظیم ہے جس کا صدر دفتر ہیگ، نیدرلینڈز میں واقع ہے۔ تنظیم کو 2013ء کے نوبل امن انعام سے نوازا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ "Chemical Weapons - Organisation for the Prohibition of Chemical Weapons (OPCW)". United Nations Office for Disarmament Affairs. http://www.un.org/disarmament/WMD/Chemical/Chemical_OPCW.shtml۔ اخذ کردہ بتاریخ 2013-10-11. 
  2. ^ Oliver Meier and Daniel Horner (November 2009). "OPCW Chooses New Director-General". Arms Control Association. http://www.armscontrol.org/act/2009_11/OPCW. 
  3. ^ "Organization for the Prohibition of Chemical Weapons (OPCW)". Nuclear Threat Initiative. Retrieved 11 October 2013.
  4. ^ "Organization for the Prohibition of Chemical Weapons (OPCW)". Nuclear Threat Initiative. Retrieved 11 October 2013.


بیرونی روابط[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]

فہرست اراکین کیمیائی ہتھیار اجلاس