ابوالفرح طرطوسی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
محمد یوسف ابوالفرح طرطوسی
مذہب اسلام، خاص طور پر جنیدیہ سلسلہ تصوف
ذاتی تفصیل
وفات 3 شعبان 447 ہجری/28اکتوبر 1055 عیسوی
طرطوس، شام
عمومی معلومات
مقام شام
خطاب انوار صوفیاء، شجرالکاملین، خزینہ الااصفیاء، خلیفہ
دور تیرہویں صدی کا آخر اور چودہویں صدی کا ابتدائی دور
پیشرو ابو الفضل عبدالواحد تمیمی
جانشین Abu Al-Hasan Hankari

شیخ محمد یوسف ابوالفرح طرطوسی اپنے وقت کے قطب وقت اور جامع الکمالات گزرے ہیں۔

ولادت[ترمیم]

ابو الفرح طرطوسی کی ولادت طرطوس میں ہوئی۔

نام و نسب[ترمیم]

نام محمد یوسف اور کنیت ابوالفرح ہے۔ آپ کے والد کا نام شیخ عبد اللہ طرطوسی ہے۔

باطنی نسبت[ترمیم]

ابو الفضل عبد الواحد تمیمی کے مرید خاص اور اپنے زمانے کے قدوۃ الاولیاءاور زبدۃ المشائخ میں شمار ہوتے ہیں آپ اپنے عہد کے قطب وقت اور جامع الکمالات شیخ گزرے ہیں۔ آپ سلسلہ قادریہ کے چودھویں امام طریقت ہیں۔ آپ ولی کامل، عالم فاضل، جمیع العلوم ظاہری و باطنی تھے۔ بہت بڑے صاحب کرامت بزرگ تھے۔ صبرو توکل میں آپ کا مقام بہت بلند تھا، عظیم خوبیوں کے مالک تھے۔ آپ نے پیرومرشد کے نقش قدم پر چل کر خلق خدا کی رہنمائی کا فریضہ انجام دیا اور دین متین کی وہ خدمات انجام دیں کہ آج بھی آپ کا نقش قدم فیض روحانی کا سرچشمہ ہے۔

وفات[ترمیم]

آپ 3 شعبان المعظم 447ھ بمطابق 1055ء کو اس دارفانی سے رخصت ہوئے۔ آپ کی آخری آرام گاہ طرطوس نزد بغداد میں ہے۔[1][2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. خزینۃ الاصفیاء،جلداول،صفحہ 148، مکتبہ نبویہ لاہور
  2. ضیائے طیبہ