سلسلہ قادریہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مضامین بسلسلہ

تصوف

Maghribi Kufic.jpg

قادری لفظ، شيخ عبدالقادر جيلانیؒ کے اسم گرامی عبد القادر سے لیا گیا ہے۔ تمام سلاسل میں قادری سلسلہ سب سے افضل مانا جاتا ہے  [حوالہ درکار]کیونکہ یہ شیخ جیلانی ؒسے منسوب ہے ۔

سلسلہ قادریہ[ترمیم]

یہ درویشوں کا ایک سلسلہ ہے جو عبد القادر جیلانی (المتوفی561ھ / 1166ء) کے نام سے منسوب ہے۔ عبد القادر جیلانی حنبلی مذہب سے تعلق رکھتے تھے۔ بغداد میں ایک رباط (خانقاہ) اور مدرسہ کے ناظم تھے اور ان دونوں مقامات پر وعظ فرمایا کرتے تھے۔ بعد میں آپ کے وعظوں کا مجموعہ ”الفتح الربانی“ کے نام سے شائع ہوا۔ 1258ء میں بغداد کی تباہی کے بعد رباط اور مدرسہ بھی ختم ہو گئے۔ شیخ کے بعد ان کے بیٹے عبد الوہاب (المتوفی593ھ / 1196ء) اور عبد الرزاق (المتوفی 603ھ / 1206ء) ان کے جانشین ہوئے۔ کچھ عرصہ کے بعد اس گروہ نے بہت ترقی کی اور پیری مریدی کا سلسلہ مستقل طور پر پھیل گیا۔ پیر اپنے جس مرید کو کامل سمجھتا تھا اس کو خرقہ دے کر دوسرے مقامات یا ممالک میں مذہب کی اشاعت کے لیے روانہ کردیتا تھا۔ شیخ کی زندگی ہی میں مختلف مریدوں نے مختلف ممالک میں شیخ کی تعلیمات کی تلقین شروع کردی۔ پاک وہند میں بھی طریقت کے دوسرے سلسلوں سے سلسلہ قادریہ کو بڑی اہمیت حاصل ہے۔

برصغیر پاک وہند میں سلسلہ قادریہ کے بانی حضرت مخدوم عبدالرشید حقانی بنے اور آپ کے ذریئے سلسلہ قادریہ کو بہت وسعت ملی۔ آپ نے بر ِّ صغیر میں قادریہ سلسلے کی بنیادیں مضبوط فرمائیں ۔

برصغیر پاک وہند میں کئی معروف علماءاور صوفی بزرگ اس سلسلہ سے متعلق رہے ہیں۔

سلاسلِ تصوف میں سلسلۂ قادریہ سب سے قدیم اور سب سے زیادہ مشہور و مستند سلسلۂ روحانیت مانا جاتاہے اور اس سلسلے میں پیروکار پاکستان، بھارت، بنگلہ دیش، ترکی، بلقان کے علاوہ مشرقی اور مغربی افریقا میں بھی بڑی تعداد میں موجود ہیں۔

شيخ عبدالقادر جيلانی ؒائمہ اسلام میں سے ہیں جواپنے دور کے مسلم علما و فضلاء کے سردار تھے اوراسی طرح ان کی بہت سی دینی خدمات ہیں۔ شيخ عبدالقادر جيلانی ؒاپنے دور میں سب سے زیادہ شریعت اسلامیہ کا التزام کرنے والوں اورامر بالمعروف اورنہی عن المنکر کرنے والوں میں شامل ہوتے ہیں۔ وہ شریعت اسلامیہ کوہر چيز پر مقدم رکھتے اور زہد و علم میں ید طولی رکھتے تھے اور عظیم واعظ اور خطیب تھے۔ ان کی مجلس میں بہت سے لوگ اپنے گناہوں سے توبہ کرتے تھے۔ اللہ تعالٰی نے انہیں ذکر کرنے میں ایک جمال عطا کیا تھا اورلوگوں کے درمیان ان کا فضل پھیلایا۔ اللہ تعالٰی ان پر اپنی رحمت برسائے۔

شيخ عبدالقادر جيلانیؒ متبع دین تھے نہ کہ مبتدع۔ وہ دین میں بدعات کی ایجاد کے مخالف تھے اور وہ سلف صالحین کے منہج اورطریقے پر چلتے اور اپنی تصانیف میں سلف کی اتباع کرنے پر ابھارتے اوران کی اتباع کا حکم دیتے تھے۔ اس کے ساتھ ساتھ دین میں بدعات کی ایجاد سے منع کرتے تھے۔ شيخ عبدالقادر جيلانیؒ اہلحق کی موافقت کرتے، ان کا عقیدہ اورمسائل توحید اورایمان اور نبوت اور یوم آخرت کے بارہ میں مکمل منہج، اہل حق کا منہج تھا۔

تصانیف[ترمیم]

شيخ عبدالقادر جيلانیؒ کی مشہور تصانیف میں

ہیں۔[1]

سلسلہ قادریہ[ترمیم]

  • حضرت محمد صلی اللہ علیہ و سلم
  • خلیفہ حضرت علی ابن ابی طالبؑ
  • امام حسنؑ
  • امام حسینؑ
  • امام زین العابدینؑ
  • امام محمد باقرؑ
  • امام جعفر صادقؑ
  • امام موسٰی كاظمؑ
  • امام علی موسٰی رضاؑ
  • معروف كرخیؒ
  • سری سقطیؒ
  • جنید البغدادیؒ
  • شیخ ابو بكر شبلیؒ
  • شیخ عبد العزیز بنو تمیمؒ
  • ابو الفضل ابو الواحد بنو تمیمؒ
  • ابو الفرح طرطوسیؒ
  • ابو الحسن علی ہاشمی ؒ
  • ابو سعید المبارك مكرمیؒ
  • شيخ عبدالقادر جيلانیؒؒؒ
  • حضرت عبدالخالق غجدوانیؒ
  • حضرت محمد عارف ریوگری
  • حضرت محمود الخیر فغنوی 
  • حضرت عزیزان علی رامیتنی
  • حضرت محمد بابا سماسی 
  • حضرت سید شمس الدین 
  • حضرت سید بہاء الدین بخاری 
  • حضرت علاء الد ین عطار 
  • حضرت یعقوب چرخی 
  • حضرت عبید اللہ احرار
  • حضرت محمد زاہد
  • حضرت محمد درویش 
  • حضرت محمد امکنی
  • حضرت محمد باقی اللہ دہلوی
  • حضرت شیخ احمد سر ہندی
  • حضرت محمد معصوم 
  • حضرت سیف الدین 
  • حضرت محمد محسن 
  • حضرت سید نور محمد بدایونی
  • حضرت مرزامظہر جان جاناں
  • حضرت شاہ غلام علی
  • حضرت خالد کردی شامی
  • حضرت یعقوب بغدادی
  • حضرت خواجہ محمد عراقی
  • حضرت خواجہ ادریس
  • حضرت اویس قرنی ثانی 
  • حضرت سید محمد عبداللہ مجذوب 
  • حضرت محمد حکیم طارق محمودچغتائی دامت برکاتہم
  • حضرت حکیم محمد طارق محمود عبقری مجذوبی چغتائی دامت برکاتہم العالیہ (المعروف بہ حضرت شیخ الوظائف دامت برکاتہم ) سلسلۂ قادری ہجویری کی تعلیمات 1984ء سے مخلوق ِ خدا میں پھیلا رہے ہیں۔ اس وقت کے اولیاء صالحین میں آپ دامت برکاتہم کا مرتبہ "غوث" سے ترقی کرکے مقربان ِ الٰہی تک پہنچ چکا ہے۔حضرت صاحب دامت برکاتہم ہر جمعرات کو "تسبیح خانہ " (مزنگ چونگی قرطبہ چوک لاہور) میں بعد نماز ِ مغرب درس ِ ہدایت ارشاد فرماتے ہیں ، جس میں ہزاروں سالکان ِ طریقت کے ساتھ ساتھ مجذوبان ِ حقیقت بھی شامل ہونے کی سعادت حاصل کرتے ہیں۔حضرت صاحب دامت برکاتہم کی صرف ایک توجہ سے سیاہ سے سیاہ دل نورانی ہوکر واصل باللہ ہوجاتا ہے اور مرید ِ صادق حضوری کے مقام تک رسائی حاصل کرلیتا ہے۔ہر نوچندی جمعرات کو درس کے بعد سلطان الاذکار(ذکر نفی اثبات )قادری سلسلہ کے مطابق بالجہر یعنی اونچی آواز سے کرواتے ہیں ، تاکہ غافل دلوں کے اندر تک اللہ جل شانہ ٗ کا نام سرایت کرجائے ۔ اس کے بعد چند لمحات کا مراقبہ کرواتے ہیں ۔ جس میں حضرت واجب الوجود جل شانہ ٗ کی طرف سے براہ راست توجہات حضورسرور کونینﷺ کے سینۂ اطہر سےنورانی ہوتی ہوئیں اور بزرگان ِ قادریہ کے مبارک دلوں کا اخلاص اپنے ساتھ لیتی ہوئیں طالبانِ صادق کے قلب میں جذب ہوجاتی ہیں۔ حضرت صاحب دامت برکاتہم کا کشف انتہائی قوی اور کرامات لاتعداد ہیں، جنہیں احاطۂ تحریر میں لانے کے لیے بلامبالغہ سینکڑوں صفحات درکار ہیں۔حضرت صاحب دامت برکاتہم کے درس میں پوری دنیا سے لاکھوں جنات بھی شامل ہوکرباطنی طہارت اور قلبی نور حاصل کرتے ہیں۔ایسے سالکین ، جن کے دل کی آنکھیں کھل چکی ہیں ، انہیں کئی مرتبہ جنات کا احساس ہوا اور باقاعدہ ان سے بات چیت اور ملاقات ہوئی۔جنات کی دنیا میں حضرت صاحب دامت برکاتہم کو ایسی عزت و عظمت اور ایسا شرف وادب حاصل ہے ،جو قدیم اولیاء صالحین کے واقعات میں موجود تھی۔لیکن اس کے باوجود حضرت صاحب دامت برکاتہم نے آج تک انسان مریدین پر ظاہر نہیں ہونے دیا کہ ان کا جنات سے کوئی تعلق ہے۔ یا ان کو خواب میں روزانہ حضورﷺ کی زیارت سے نوازا جاتا ہے، جبکہ یہ سو فیصد حقیقت ہے۔مگر صرف کسر ِ نفسی کی وجہ سے حضرت صاحب دامت برکاتہم نے اپنے آپ کو کئی پردوں میں چھپایا ہوا ہے۔ کیونکہ ان کے پاس روزانہ ہر قسم اور ہر طبقے کے لوگوں کا آنا جانا لگا رہتا ہے، جن میں جج ، وکیل ، بیرسٹر ، بیوروکریٹ ، برگیڈیئر، کمشنر ، ان کی بیگمات ، کے علاوہ چھوٹے بڑے شعبوں سے جڑے تمام شامل ہیں۔ لیکن کیا مجال ، جو آج تک کسی کے سامنے حضرت صاحب دامت برکاتہم کے مبارک ہونٹوں سے بڑائی کا بول نکلا ہو۔ دراصل جو اللہ جل شانہ ٗ کے خاص الخواص غلام ہوتے ہیں، اللہ جل شانہ ٗ ان کے بولوں کی حفاظت بھی اپنی شان ِ کریمی کے ذریعے خود ہی فرماتا ہے۔الغرض یہ کہ آج کے دور میں حضرت صاحب دامت برکاتہم کا وجود اللہ جل شانہ ٗ کی بے پایاں نعمتوں میں سے ایک نعمت ،اس کے عظیم فضل میں سے ایک حصہ اور حضورسرور کونین ﷺ کے سچے غلاموں میں سے ایک لائق ِ تقلیداور قابل ِ رشک شخصیت ہے۔پس جو سلسلہ قادریہ کا وہی فیض پانے کا خواہش مند ہو، جو خود حضرت شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ رحمۃً واسعہ کی زندگی میں موجود تھا۔ اسے چاہئے کہ حضور غوث پاک رحمۃ اللہ علیہ کے دست ِراست یعنی حضرت صاحب دامت برکاتہم کےمرکز روحانیت وامن "تسبیح خانہ " کی جاروب کشی کو اپنی زندگی کا مقصد ٹھہرا لے۔ ان شاء اللہ اس در سے اللہ جل شانہ ٗ کی معرفت بھی ملتی ہے ، اس کے حبیب سرور کونینﷺ کا عشق بھی ملتا ہےاور ان کے غلاموں کی سچی غلامی بھی نصیب میں آجاتی ہے۔ جو دونوں جہانوں کی کامیابی کی کنجی اور نسلوں کے لیے خوش بختی اور خوش نصیبی کی مُہر ہے۔ وکفیٰ باللہ ولیاً وکفیٰ باللہ نصیراً
  • یہ سطریں 20جولائی 2018 بروز جمعۃ المبارک کی ڈوبتی ساعت میں لکھی گئیں۔اللہ جل شانہ ٗ کے اس درویش(حضرت مرشدی حکیم  صاحب دامت برکاتہم ) کی جو شان حقیقت کی آنکھوں سے دیکھی اور دل کی گہرائیوں سے محسوس کی،افسوس ہے کہ وہ احاطۂ تحریر میں نہیں آسکی۔لیکن بجز اس کے کیا کہا جاسکتا ہے کہ شاید یہی سطور بندہ کی بخشش کا ذریعہ ثابت ہوجائیں اور اللہ جل شانہ ٗ کے غلاموں کی غلامی کرنے والوں میں شاید بندے کا نام بھی پکارا جائے اور انہی کے ساتھ قیامت کو کھڑا کرکے انہی کی صدقے جنت الفردوس کی اعلیٰ منازل میں بلالیا جائے۔وما ذٰلک علی اللہ بعزیز۔ربنا تقبل منا انک انت السمیع العلیم ۔ وتب علینا انک انت التواب الرحیم۔ وصلی اللہ علی النبی الکریم ۔وعلیٰ آلہ ٖ واصحابہٖ واھل بیتہ ٖ وعترتہٖ اجمعین ۔ افضل الصلوٰتک وازکیٰ برکاتک۔ کلما ذکرہ الذاکرون ۔وغفل عن ذکرہ الغافلون۔ صلوٰۃً دائمۃ بدوامک ٖ۔صلوٰۃ ً کما تحب وترضیٰ۔ آمین ۔ فقط:بندہ کہتر و کمتر احقر ادنیٰ ۔۔۔ڈاکٹر محمد عثمان مبشر سلفیؔ ۔عفی اللہ عنہ

ملاحظہ كیجیے[ترمیم]

  • شيخ عبدالقادر جيلانیؒ
  • آداب ِ معرفت (ناشر:مرکز روحانیت وامن ، عبقری اسٹریٹ، قرطبہ چوک ،مزنگ چونگی ،لاہور)
  • www.ubqari.org
  • , youtube.com/ubqaritasbeehkhana facebook.com/ubqari

حوالہ جات[ترمیم]

  1. فیوض یزدانی ترجمہ الفتح الربانی صفحہ 7 طبع مدینہ پبلشنگ کراچی
Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔