فخر زمان (کرکٹر)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
فخر زمان ٹیسٹ کیپ نمبر 234
معلومات شخصیت
پیدائش 10 اپریل 1990ء (عمر 32 سال)
مردان، خیبر پختونخواہ، پاکستان
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عارضہ کووڈ-19[1]  ویکی ڈیٹا پر (P1050) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
تعليم پاکستان نیوی اسکول
پیشہ کرکٹ کھلاڑی  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کھیل کرکٹ  ویکی ڈیٹا پر (P641) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کھیل کا ملک Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P1532) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

فخر زمان ( پشتو: فخر زمان‎  ; پیدائش 10 اپریل 1990ء) ایک پاکستانی کرکٹر ہے جو پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم [2] اور پاکستان سپر لیگ میں لاہور قلندرز کے لیے کھیلتا ہے۔ [3]20 جولائی 2018ء کو، وہ ایک روزہ بین الاقوامییچ میں ڈبل سنچری بنانے والے پاکستان کے پہلے بلے باز بن گئے۔ [4] دو دن بعد، وہ ون ڈے میں تیز ترین 1000 رنز بنانے والے بلے باز بن گئے۔ [5] اگست 2018ء میں، وہ ان تینتیس کھلاڑیوں میں سے ایک تھے جنہیں پاکستان کرکٹ بورڈ نے 2018-19ء کے سیزن کے لیے سینٹرل کنٹریکٹ سے نوازا تھا۔ [6] [7]4 اپریل 2021 ءکو، دوسرے ون ڈے میں جنوبی افریقہ کے خلاف تعاقب کرتے ہوئے، فخر نے کوئنٹن ڈی کاک کے ہاتھوں رن آؤٹ ہونے سے پہلے 193 رنز بنائے۔ فخر کا 193 ون ڈے میں تعاقب کرتے ہوئے بنگلہ دیش کے خلاف شین واٹسن کے 185 رنز کو پیچھے چھوڑتے ہوئے سب سے بڑا انفرادی سکور بن گیا۔ [8]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

زمان 10 اپریل 1990ء کو خیبر پختونخوا کے ضلع مردان کے کاٹلنگ میں پیدا ہوئے۔ میٹرک کے بعد وہ 16 سال کی عمر میں کراچی چلے گئے۔ 2007ء میں، زمان نے پاکستان نیوی اسکول ، بہادر سے سمندر میں اپنی اسکولنگ اور تربیت حاصل کرنے کے بعد ایک ملاح کے طور پر پاکستان نیوی میں شمولیت اختیار کی۔ [9] [10] ان کے کیریئر کے انتخاب کو ان کے والد نے راضی کیا، جو فخر کے بچپن میں کرکٹ کی لت سے بیزار تھے اور چاہتے تھے کہ ان کا بیٹا اپنی تعلیم پر توجہ مرکوز کرے۔ فخر نام کا لفظی ترجمہ "فخر" ہے۔ [11] اپنے ساتھیوں میں، وہ فوجی (سپاہی) کے نام سے جانا جاتا ہے۔ [12] [13] 2012ء میں، انہوں نے آسٹریلیا میں ہونے والے انٹرنیشنل ڈیفنس کرکٹ چیلنج کپ میں بحریہ کی نمائندگی کی اور ٹورنامنٹ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔ بعد ازاں 2020 ءمیں، بحریہ نے کرکٹ میں ان کی خدمات کے اعتراف میں انہیں لیفٹیننٹ اعزازی رینک سے نوازا۔ [14] [15]

ڈومیسٹک اور ٹی ٹوئنٹی کیریئر[ترمیم]

کراچی میں، انہوں نے پاکستان نیوی کرکٹ ٹیم کی نمائندگی سمیت بین ڈپارٹمنٹل میچوں میں کبھی کبھار کرکٹ کھیلنا جاری رکھا۔ سب سے پہلے ان کی شناخت بحریہ کے کوچ اعظم خان نے کی، جنہوں نے انہیں پیشہ ورانہ کرکٹ کو آگے بڑھانے کی ترغیب دی۔ 2013 ءمیں، اس نے اس خواب کی تعاقب میں ایک "سخت فیصلے" کے بعد اپنا بحری کیریئر چھوڑ دیا اور خیبر پختونخواہ ، ایبٹ آباد فالکنز ، بلوچستان اور کراچی کی متعدد ٹیموں جیسی علاقائی تنظیموں کے لیے نمودار ہونا شروع کیا۔ وہ 2016ء کے پاکستان کپ میں دوسرے سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑی بن گئے اور 2016-17ء قائد اعظم ٹرافی میں سلیکٹرز کو بھی متاثر کیا۔ انہیں لاہور قلندرز کی جانب سے 2017ء پاکستان سپر لیگ کے لیے بھی منتخب کیا گیا تھا، جہاں انہیں نیوزی لینڈ کے کھلاڑی برینڈن میکولم نے قریب سے سرپرستی حاصل کی تھی۔ انہیں جلد ہی پاکستان کے کوچ مکی آرتھر نے لاہور میں ایک تربیتی کیمپ کے دوران دیکھا، جس کے بعد انہوں نے قومی ٹیم میں شمولیت اختیار کی۔ [13]اگست 2017ء میں، انہیں T20 گلوبل لیگ کے پہلے سیزن کے لیے ڈربن قلندرز کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [16] تاہم، اکتوبر 2017 میں، کرکٹ جنوبی افریقہ نے ابتدائی طور پر ٹورنامنٹ کو نومبر 2018 تک ملتوی کر دیا، اس کے فوراً بعد اسے منسوخ کر دیا گیا۔ [17]جولائی 2019ء میں، انہیں یورو T20 سلیم کرکٹ ٹورنامنٹ کے افتتاحی ایڈیشن میںروٹرڈیم رائنوس کے لیے کھیلنے کے لیے منتخب کیا گیا۔ [18] [19] تاہم اگلے مہینے ٹورنامنٹ منسوخ کر دیا گیا۔ [20]جنوری 2021ء میں، انہیں 2020-21ء پاکستان کپ کے لیے خیبر پختونخوا کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [21] [22]

بین الاقوامی ڈیبیو[ترمیم]

اکتوبر 2017ء میں زمان

مارچ 2017ء میں، انہیں ویسٹ انڈیز کے خلاف میچوں کے لیے پاکستان کے محدود اوورز کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [23] انہوں نے 30 مارچ 2017 ءکو ویسٹ انڈیز کے خلاف پاکستان کے لیے اپنا ٹوئنٹی 20 انٹرنیشنلڈیبیو کیا [24]اپریل 2017ء میں، انہیں 2017ء کی ICC چیمپئنز ٹرافی کے لیے پاکستان کے ایک روزہ بین الاقوامی اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ انہوں نے 7 جون 2017 کءو چیمپئنز ٹرافی میں جنوبی افریقہ کے خلاف پاکستان کے لیے ون ڈے ڈیبیو کیا، اس نے 31 رنز بنائے۔ [25] [26] بھارت کے خلاف فائنل میں، زمان نے وکٹ کیپر کو کنارہ دیا، جب وہ 3 پر تھے، لیکن نو بال ہونے کی وجہ سے بچ گئے۔ [27] اس کے بعد زمان نے اپنی پہلی ون ڈے سنچری اسکور کی اور پاکستان کو مجموعی طور پر 338 تک پہنچانے میں مدد کی۔ اس کے ساتھ ہی، زمان آئی سی سی ایونٹ کے فائنل میں سنچری بنانے والے پاکستان کے پہلے بلے باز بن گئے۔ [28] بھارت کی دوسری بیٹنگ گر گئی اور پاکستان نے یہ میچ 180 رنز سے جیت کر پہلی بار چیمپئنز ٹرافی کا فاتح بن گیا۔ زمان کو ان کی بیٹنگ پرفارمنس پر مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ [29] اس میچ میں زمان اور اظہر علی کی شراکت 128 رنز تھی، جو اسے پاکستان کے لیے چیمپئنز ٹرافی کی تاریخ میں سب سے زیادہ اوپننگ شراکت داری بناتی ہے، اور 2009ء کے بعد پاکستان کے لیے کسی ون ڈے میں سب سے زیادہ اوپننگ پارٹنرشپ ہے [30]

2018: انگلینڈ، زمبابوے اور آسٹریلیا[ترمیم]

اپریل 2018ء میں، انہیں مئی 2018 میں آئرلینڈ اور انگلینڈ کے دوروں کے لیے پاکستان کے ٹیسٹ اسکواڈ میں شامل کیا گیا، لیکن وہ نہیں کھیلے۔ [31] 8 جولائی 2018ء کو، فخر نے ہرارے میں سہ فریقی سیریز کے فائنل میں آسٹریلیا کے خلاف 91 رنز بنا کر پاکستان کو ٹائٹل اپنے نام کرنے میں مدد کی۔ انہیں مین آف دی فائنل اور مین آف دی سیریز قرار دیا گیا۔ [32] [33] اپنی اننگز کے دوران وہ ایک کیلنڈر ایئر میں T20I میں 500 یا اس سے زیادہ رنز بنانے والے پہلے پاکستانی بلے باز بھی بن گئے۔ [34] 20 جولائی 2018ء کو، زمبابوے کے خلاف چوتھے ون ڈے میں، وہ ون ڈے میں ڈبل سنچری بنانے والے پاکستان کے پہلے بلے باز بن گئے، ناٹ آؤٹ 210 رنز بنا کر۔ [35] [36] اسی میچ میں، اس نے اور امام الحق نے 304 رنز بنا کر ون ڈے میں اس وقت کی سب سے بڑی اوپننگ شراکت داری کی ۔ [37] ان کی اننگز نے پاکستان کے مجموعی اسکور کو 399 تک پہنچا دیا، جو ون ڈے میں ان کا سب سے بڑا اسکور تھا ۔ [38] دو دن بعد سیریز کے پانچویں میچ میں زمان ون ڈے کرکٹ میں تیز ترین ایک ہزار رنز بنانے والے کھلاڑی بن گئے۔ [5] انہوں نے 18 اننگز میں یہ سنگ میل عبور کرتے ہوئے 21 اننگز کا سابقہ ریکارڈ توڑ دیا، جو پانچ دیگر بلے بازوں کے پاس تھا۔ [39] زمان نے میچ میں 85 رنز بنائے، جس سے سیریز میں ان کے مجموعی اسکور 515 ہو گئے، جو کہ دو طرفہ ون ڈے سیریز میں کسی پاکستانی بلے باز کی جانب سے سب سے زیادہ رنز ہیں۔ [40] زمان اور امام نے پوری سیریز میں ایک ساتھ 705 رنز بنائے تھے، جو دوطرفہ ون ڈے سیریز میں سب سے زیادہ جوڑی ہے۔ [40] زمان نے 455 کے ساتھ ون ڈے میں ایک بلے باز کے دو آؤٹ ہونے کے درمیان سب سے زیادہ رنز بنانے کا ریکارڈ بھی بنایا [41] ستمبر 2ء018 میں، انہیں آسٹریلیا کے خلاف سیریز کے لیے پاکستان کے ٹیسٹ اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [42] انہوں نے 16 اکتوبر 2018ء کو آسٹریلیا کے خلاف پاکستان کے لیے ٹیسٹ ڈیبیو کیا [43]

2019: کرکٹ ورلڈ کپ[ترمیم]

اپریل 2019ء میں، انہیں 2019ء کرکٹ ورلڈ کپ کے لیے پاکستان کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [44] [45] کرکٹ ورلڈ کپ سے قبل، انگلینڈ کے خلاف ون ڈے سیریز میں، زمان نے دوسرے ون ڈے میچ میں 138 رنز بنائے۔ یہ ایک روزہ بین الاقوامی میچوں میں انگلینڈ کے خلاف کسی پاکستانی بلے باز کا سب سے بڑا انفرادی سکور تھا۔ [46] تاہم، تین دن بعد، امام الحق نے سیریز کے تیسرے ون ڈے میں 151 رنز بنا کر نیا ریکارڈ قائم کیا۔ [47]

2020ء سے تا حال[ترمیم]

جون 2020ء میں، انہیں ا کووڈ-19 وبائی امراض کے دوران پاکستان کے دورہ انگلینڈ کے لیے 29 رکنی اسکواڈ میں شامل کیا گیا تھا۔ [48] [49] تاہم، 23 جون 2020ء کو، زمان پاکستان کے اسکواڈ کے سات کھلاڑیوں میں سے ایک تھے جن کا کووڈ-19 کا ٹیسٹ مثبت آیا۔ [50] 4 اپریل 2021ء کو، جنوبی افریقہ کے خلاف دوسرے ون ڈے میں، زمان نے 193 رنز بنائے۔ [51] ون ڈے میچ میں تعاقب کرتے ہوئے یہ سب سے زیادہ انفرادی سکور تھا، جس نے بنگلہ دیش کے خلاف شین واٹسن کے 185 رنز کو پیچھے چھوڑ دیا۔ [52] پاکستان ون ڈے میں 17 رنز سے ہار گیا، چارلس کوونٹری کے 194 ناٹ آؤٹ کے پیچھے فاخر کے 193 ون ڈے میں دوسرا سب سے بڑا اسکور ہے۔ [53] 5 مئی 2021 کو، زمان کو اپریل کے لیے آئی سی سی کے مہینے کے بہترین کھلاڑی کے ایوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا۔ [54] ستمبر 2021 میں، انہیں 2021 ءکے ICC مینز T20 ورلڈ کپ کے لیے پاکستان کے اسکواڈ میں سفر کرنے والے تین ریزرو کھلاڑیوں میں سے ایک کے طور پر نامزد کیا گیا۔ [55] جنوری 2022ء میں سالانہ آئی سی سی ایوارڈز میں، فخر زمان کو سال 2021ء کے لیے آئی سی سی مینز ون ڈے ٹیم آف دی ایئر [56] نامزد کیا گیا تھا۔ 30 جنوری 2022ء کو، فخر نے اپنی پہلی پاکستان سپر لیگ سنچری، کراچی کنگز کے خلاف بنائی۔ [57]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Seven more Pakistan players test positive for Covid-19 — اخذ شدہ بتاریخ: 23 جون 2020 — شائع شدہ از: 23 جون 2020
  2. "Meet the new faces in the Pakistan Test squad". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 22 مئی 2018. 
  3. "Fakhar Zaman". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 01 نومبر 2015. 
  4. "Fakhar Zaman - from king of Katlang to pride of Pakistan". ای ایس پی این کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 21 جولا‎ئی 2018. 
  5. ^ ا ب "Zaman breaks 38-year-old record". The Express Tribune. اخذ شدہ بتاریخ 22 جولا‎ئی 2018. 
  6. "PCB Central Contracts 2018–19". Pakistan Cricket Board. اخذ شدہ بتاریخ 06 اگست 2018. 
  7. "New central contracts guarantee earnings boost for Pakistan players". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 06 اگست 2018. 
  8. "Stats - Fakhar Zaman records the highest ever individual score in an ODI chase". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 05 اپریل 2021. 
  9. Sheikh، Arslan (16 October 2016). "The Navy jawaan who would be Adam Gilchrist". 
  10. "India vs Pakistan, ICC Champions Trophy Final: Fakhar Zaman, the fauji who is now the pride of Pakistan". 20 June 2017. 
  11. ^ ا ب Khan، Qaiser (17 June 2017). "Fakhar Zaman: From the Navy to cricket stardom". Geo. اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2017. 
  12. Siddique، Imran (2020-12-28). "Cricketer Fakhar Zaman made honorary lieutenant by Pakistan Navy". DAWN.COM. اخذ شدہ بتاریخ 05 اپریل 2021. 
  13. "Inter Services Public Relations Pakistan". 
  14. "T20 Global League announces final team squads". T20 Global League. 05 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 اگست 2017. 
  15. "Cricket South Africa postpones Global T20 league". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 10 اکتوبر 2017. 
  16. "Eoin Morgan to represent Dublin franchise in inaugural Euro T20 Slam". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 19 جولا‎ئی 2019. 
  17. "Euro T20 Slam Player Draft completed". Cricket Europe. اخذ شدہ بتاریخ 19 جولا‎ئی 2019. 
  18. "Inaugural Euro T20 Slam cancelled at two weeks' notice". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2019. 
  19. "Pakistan Cup One-Day Tournament promises action-packed cricket". Pakistan Cricket Board. اخذ شدہ بتاریخ 07 جنوری 2021. 
  20. "Pakistan Cup One-Day Tournament: Fixtures Schedule, Teams, Player Squads – All you need to Know". Cricket World. اخذ شدہ بتاریخ 07 جنوری 2021. 
  21. "Kamran Akmal returns to Pakistan ODI and T20I squads". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 15 مارچ 2017. 
  22. "Pakistan tour of West Indies, 2nd T20I: West Indies v Pakistan at Port of Spain, Mar 30, 2017". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2017. 
  23. "Fakhar Zaman Debut and last played matches in Tests, ODIs, T20Is and other formats". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 31 مارچ 2022. 
  24. "Full Scorecard of South Africa vs Pakistan 7th Match Group B 2017 - Score Report | ESPNcricinfo.com". ESPNcricinfo (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 31 مارچ 2022. 
  25. "Zaman feared he would miss final". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2017. 
  26. "Fakhar Zaman rewarded for his risk". ESPNcricinfo. 18 June 2017. اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2017. 
  27. "New champions: Zaman, Amir and Pakistan raze India for title". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2017. 
  28. "Zaman, Ali help Pakistan storm into Champion's Trophy final". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2017. 
  29. "Fakhar, Imam receive maiden call-ups to Ireland, England Tests". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 15 اپریل 2018. 
  30. "Fakhar Zaman's 91 seals record chase to give Pakistan the title". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2018. 
  31. "'A great team effort' – Sarfraz Ahmed". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2018. 
  32. "Fakhar becomes first Pakistani to score 500 T20I runs in calendar year". GEO Tv. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2018. 
  33. "Fakhar Zaman becomes first Pakistani to score a double ton in ODIs". Ary News. اخذ شدہ بتاریخ 20 جولا‎ئی 2018. 
  34. "Fakhar Zaman becomes first Pakistani to hit ODI Double century". جیو ٹی وی. اخذ شدہ بتاریخ 20 جولا‎ئی 2018. 
  35. "Fakhar Zaman, Imam-Ul-Haq Break All-Time Opening Partnership Record In ODIs". NDTV. اخذ شدہ بتاریخ 20 جولا‎ئی 2018. 
  36. "Records galore as Pakistan rewrite history in Bulawayo". The Express Tribune. اخذ شدہ بتاریخ 20 جولا‎ئی 2018. 
  37. "Fakhar Zaman is the quickest to 1000 runs in ODIs". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 22 جولا‎ئی 2018. 
  38. ^ ا ب "Fakhar Zaman, Imam-ul-Haq march into the record books". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 22 جولا‎ئی 2018. 
  39. "Fakhar Zaman: All the records broken by Pakistan's star opener during 5th ODI against Zimbabwe". Times Now. اخذ شدہ بتاریخ 22 جولا‎ئی 2018. 
  40. "Mohammad Amir dropped for two-Test series against Australia". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 27 ستمبر 2018. 
  41. "2nd Test, Australia tour of United Arab Emirates at Abu Dhabi, Oct 16-20 2018". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 16 اکتوبر 2018. 
  42. "Mohammad Amir left out of Pakistan's World Cup squad". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2019. 
  43. "Amir left out of Pakistan's World Cup squad". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2019. 
  44. "England vs Pakistan, 2019: 2nd ODI – Statistical Highlights". CricTracker. اخذ شدہ بتاریخ 12 مئی 2019. 
  45. "Imam century powers Pakistan to 358-9 in third ODI against England". Yahoo! Sports. اخذ شدہ بتاریخ 14 مئی 2019. 
  46. "Haider Ali the new face as Pakistan name 29-man touring party for England". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 12 جون 2020. 
  47. "Haider Ali named in 29-player squad for England tour". Pakistan Cricket Board. اخذ شدہ بتاریخ 12 جون 2020. 
  48. "Seven more Pakistan players test positive for Covid-19". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 23 جون 2020. 
  49. "Fakhar Zaman's 193 in vain as all-round show helps South Africa beat Pakistan by 17 runs and level ODI series 1-1". Inside Sport. اخذ شدہ بتاریخ 04 اپریل 2021. 
  50. "Fakhar Zaman run out on 193 after 'fake fielding' by Quinton de Kock". The Indian Express. اخذ شدہ بتاریخ 04 اپریل 2021. 
  51. "2nd ODI: Fakhar Zaman hits record-breaking 193 but Pakistan lose to South Africa by 17 runs". اخذ شدہ بتاریخ 04 اپریل 2021. 
  52. "ICC Men's Player of the Month nominations for April". بین الاقوامی کرکٹ کونسل. 5 May 2021. اخذ شدہ بتاریخ 05 مئی 2021. 
  53. "Sharjeel Khan dropped from T20 World Cup squad; Asif Ali, Khushdil Shah make 15-man cut". ESPN Cricnfo. اخذ شدہ بتاریخ 06 ستمبر 2021. 
  54. "ICC Men's ODI Team of the Year revealed". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 21 جنوری 2022. 
  55. "Fakhar Zaman smashes 106 in 171 chase to knock over Karachi Kings". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 30 جنوری 2022.