میری ذات ذرہ بے نشاں

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
ميرى ذات ذرّۀِ بے نشاں
ميرى ذات ذرّۀِ بے نشاں.jpg
ہدایات بابر جاوید
تخلیق عبدللہ کادوانی
ہمایوں سعید
تحریر عمیرہ احمد
ستارے فیصل قریشی
سمیعہ ممتاز
ثروت گیلانی
ثمینہ پیرزادہ‎
موسیقی صابر ظفر
عکسبندی الیاس کاشمیری
ادارت فیصل گلزار
تقسیم کاری جیو ٹی وی
ملک پاکستان
زبان اردو


تعارفی گیت[ترمیم]

اس کا تعارفی گیت جوکہ راحت فتح علی خان کی آواز میں ہے، بےحد مقبول ہوا- گانے کے ابتدائی بول کچھ یو ہیں:

تیرے سوا کیا جانے کوئی دل کی حالت ربّا
سامنے تیرے گزری مجھ پر کیسی قیامت ربّا
میں وہ کس طرح سے کروں بیاں
جو کیے گئے ہیں ستم یہاں
سنے کون میری یہ داستاں
کوئی ہم نشین ہیں نہ رازداں
جو تھا جھوٹ وہ بنا سچ یہاں
نہیں کھولی میں نےمگر زباں
یہ اکیلا پن یہ اداسیاں
میری زندگی کی ہے ترجماں
میری ذات ذرّہ بے نشاں