مندرجات کا رخ کریں

انڈر گیم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
انڈر گیم
(روسی میں: Андрей Константинович Гейм ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
 

معلومات شخصیت
پیدائش 21 اکتوبر 1958ء (66 سال)[1][2][3][4][5]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سوچی [6][7][8]  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش مانچسٹر, England
شہریت سوویت اتحاد
مملکت نیدرلینڈز
مملکت متحدہ [9][10]  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکن رائل سوسائٹی ،  قومی اکادمی برائے سائنس [11]،  رائل نیدرلینڈ اگیڈمی برائے سائنس اور فنون ،  چائنیز اکیڈمی آف سائنسز [12]  ویکی ڈیٹا پر (P463) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مقام_تدریس
مقالات Investigation of mechanisms of transport relaxation in metals by a helicon resonance method
مادر علمی جامعہ مانچسٹر
ماسکو انسٹی ٹیوٹ آف فزکس اینڈ ٹیکنالوجی   ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ڈاکٹری مشیر Victor Petrashov[18][19]
ڈاکٹری طلبہ
تلمیذ خاص کونسٹاٹن نوسکلو   ویکی ڈیٹا پر (P802) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ طبیعیات دان [27][28][29]،  موجد ،  پروفیسر [30][31]،  سائنس دان [32][33]  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی ،  روسی [34]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل سالڈ سٹیٹ فزکس ،  قزمہ طرزیات   ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ملازمت جامعہ مانچسٹر   ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
کاپلی میڈل (2013)[35]
 نائٹ بیچلر   (2011)[36]
 نوبل انعام برائے طبیعیات   (2010)[37][38]
ہیگس میڈل (2010)
رائل سوسائٹی فیلو   (2007)[39]
اگ نوبل انعام (2000)  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

انڈر گیم نیدرلینڈ/برطانیہ کے ایک نوبل انعام یافتہ طبیعیات دان ہیں جنھیں 2009 میں طبیعیات کا نوبل انعام برطانیہ کے ایک طبیعیاتدان ڈیوڈ جے ونلینڈکے ساتھ مشترکہ طور پر گرافین لے حوالے سے گراونڈ بریکنگ تجربہ کرنے کے سبب دیا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ربط : https://d-nb.info/gnd/142740683  — اخذ شدہ بتاریخ: 26 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. http://www.britannica.com/EBchecked/topic/1715369/Sir-Andre-Geim
  3. http://www.jewage.org/wiki/he/Article:Andre_Geim_-_Biography
  4. http://www.nobelprize.org/nobel_prizes/physics/laureates/2010/geim-facts.html
  5. Brockhaus Enzyklopädie online ID: https://brockhaus.de/ecs/enzy/article/geim-andre — بنام: Andre Geim — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. http://www.deccanherald.com/content/104044/promise-graphene.html
  7. http://www.reuters.com/article/idUSTRE6AB2JE20101112
  8. http://www.themoscowtimes.com/sitemap/free/2010/10/article/nobel-winners-tell-why-russia-lacks-allure/420700.html
  9. http://news.bbc.co.uk/2/hi/sci/tech/959453.stm
  10. http://www.independent.co.uk/news/uk/politics/nobel-winner-slates-britains-stupid-immigration-reforms-8433324.html?action=gallery
  11. ربط : این این ڈی بی شخصی آئی ڈی 
  12. http://casad.cas.cn/sourcedb_ad_cas/zw2/ysxx2022/wjysmd/201711/t20171130_4625315.html
  13. A. K. Geim، P. Kim (2008)۔ "Carbon Wonderland"۔ Scientific American۔ 298 (4): 90–97۔ PMID 18380146۔ doi:10.1038/scientificamerican0408-90 
  14. A. K. Geim، A. H. MacDonald (2007)۔ "Graphene: Exploring Carbon Flatland" (PDF)۔ Physics Today۔ 60 (8): 35۔ Bibcode:2007PhT....60h..35G۔ doi:10.1063/1.2774096 
  15. K. S. Novoselov، A. K. Geim، S. V. Morozov، D. Jiang، Y. Zhang، S. V. Dubonos، I. V. Grigorieva، A. A. Firsov (2004)۔ "Electric Field Effect in Atomically Thin Carbon Films" (PDF)۔ Science۔ 306 (5696): 666–669۔ PMID 15499015۔ doi:10.1126/science.1102896۔ 24 دسمبر 2018 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 ستمبر 2015 
  16. M. V. Berry، A. K. Geim (1997)۔ "Of flying frogs and levitrons"۔ European Journal of Physics۔ 18 (4): 307۔ Bibcode:1997EJPh...18..307B۔ doi:10.1088/0143-0807/18/4/012۔ 24 دسمبر 2018 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 ستمبر 2015 
  17. A. K. Geim، S. V. Dubonos، I. V. Grigorieva، K. S. Novoselov، A. A. Zhukov، S. Y. Shapoval (2003)۔ "Microfabricated adhesive mimicking gecko foot-hair" (PDF)۔ Nature Materials۔ 2 (7): 461–463۔ Bibcode:2003NatMa...2..461G۔ PMID 12776092۔ doi:10.1038/nmat917 
  18. ^ ا ب "BBC Radio 4 – Andre Geim Profile by Helen Grady, first broadcast 27 July 2013"۔ 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ 
  19. "Mentor of two Nobel Prize winners teaches at Royal Holloway"۔ 31 جولا‎ئی 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 ستمبر 2015 
  20. Soeren Neubeck (2010)۔ Scanning probe investigations on graphene (مقالہ)۔ University of Manchester 
  21. Konstantin S. Novoselov (2004)۔ Development and applications of mesoscopic hall microprobes (مقالہ)۔ Radboud University Nijmegen۔ 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 ستمبر 2015  ISBN 90-901836-6-3
  22. Rashid Jalil (2012)۔ Novel Substrates for Graphene based Electronics (مقالہ)۔ University of Manchester 
  23. Da Jiang (2006)۔ Fabrication, characterization and measurement of atomically thin carbon devices (مقالہ)۔ University of Manchester 
  24. Rahul Raveendran-Nair (2010)۔ Atomic structure and properties of graphene and novel graphene derivatives (مقالہ)۔ University of Manchester۔ 05 مارچ 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 ستمبر 2015 
  25. Ibtsam Riaz (2012)۔ Graphene and Boron Nitride : Members of Two Dimensional Material Family (مقالہ)۔ University of Manchester 
  26. Gareth Young (2005)۔ Investigation into the ferromagnetic properties of graphite (مقالہ)۔ University of Manchester 
  27. http://www.nature.com/naturejobs/science/articles/10.1038/nj7323-589a
  28. http://www.nature.com/news/2009/090325/full/458390a.html
  29. http://www.nndb.com/honors/114/000104799/
  30. http://www.manchestereveningnews.co.uk/business/property/special-video-featuring-story-wonder-1738613
  31. http://www.manchestereveningnews.co.uk/news/uk-news/future-is-clear-for-graphene-956767
  32. http://www.cbc.ca/technology/story/2010/10/05/nobel-prize-physica.html
  33. http://www.independent.co.uk/news/uk/politics/youre-on-professor-brian-cox-george-osborne-pledges-to-make-britain-world-leader-in-science-8301193.html
  34. https://www.youtube.com/watch?v=x01LmkcluvM
  35. Award winners : Copley Medal — اخذ شدہ بتاریخ: 30 دسمبر 2018 — ناشر: رائل سوسائٹی
  36. http://www.bbc.co.uk/news/science-environment-16362899
  37. http://www.nobelprize.org/nobel_prizes/physics/laureates/2010/
  38. https://www.nobelprize.org/nobel_prizes/about/amounts/
  39. https://web.archive.org/web/20071212013316/http://royalsociety.org/page.asp?tip=1&id=6616 — اخذ شدہ بتاریخ: 1 مئی 2022
  40. ^ ا ب GEIM, Sir Andre (Konstantin)۔ Who's Who۔ 2014 (online edition via اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس ایڈیشن)۔ A & C Black, an imprint of Bloomsbury Publishing plc  (رکنیت درکار)
  41. "BBC iPlayer – Beautiful Minds: Series 2: Professor Andre Geim"۔ 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 اپریل 2012 
  42. "Dr Irina V. Grigorieva, research profile – personal details (The University of Manchester)"۔ 19 اپریل 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 ستمبر 2015 
  43. "The Nobel Prize in Physics 2010"۔ 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 07 فروری 2014