ابن اسحاق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش


مسلم تاریخ دان
نام: محمد بن اسحاق بن یسار
لقب: ابن اسحاق
پیدائش: 85ھ (704ء) [1]
وفات: 150ھ (767ء)[2]
قومیت: عرب
شعبۂ عمل: سیرت النبی
متاثر: ابن ہشام اور طبری


محمد بن اسحاق بن یسار بن خیار المدنی (704ء تا 767ء) آٹھویں صدی کے قدیم ترین سیرت نگار ہیں جن کی مشہور کتاب سیرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم سیرت ابن اسحاق کے نام سے مشہور ہے۔ یہ کتاب اب ناپید ہو چکی ہے مگر اس کتاب کا نثری حصہ سیرت ابن ہشام میں لیا گیا ہے۔ ان کی تاریخ اسلامی تاریخ کی قدیم ترین کتاب ہے۔

حالات زندگی[ترمیم]

محمد ابن اسحاق 85ھ (704ء) میں مدینہ منورہ میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم وہیں ہوئی۔ تیس برس کی عمر میں وہ مصر چلے گئے۔ بعد میں ابن اسحاق بغداد چلے گئے جہاں بنو عباس نے بنو امیہ کا تختہ الٹ کر بغداد کو مرکزی شہر بنایا تھا ۔ وہاں85 ھ بمطابق 767ء میں انتقال کیا۔

تصانیف[ترمیم]

ابن اسحاق کی کئی تصانیف تھیں جو اب اپنی اصل حالت میں نہیں ملتیں مگر ان کے حصے کچھ اور تصانیف میں ملتے ہیں۔ مثلاً سیرت ابن ہشام، جو ایک مشہور اور قدیم تاریخ کی کتاب ہے اصل میں ابن اسحاق کے شاگرد البقائی نے ترتیب دی اور بعد میں ابن ہشام نے مرتب کی۔ اس کتاب میں ابن اسحاق کے نثری حصے موجود ہیں۔ ابن اسحاق نے عربی شاعری بھی شامل کی تھی کیونکہ اس کو تبدیل کرنا اوزان کی وجہ سے قدرے مشکل ہوتا ہے اور تاریخ کے اصل واقعات محفوظ رہتے ہیں۔ اس کے علاوہ ابن اسحاق کے شاگرد سلامہ ابن فضل الانصاری نے ابن اسحاق کی سیرت کو مرتب کیا تھا۔ یہ کتاب خود تو باپید ہو چکی ہے مگر اس کے حصے مشہور تاریخ طبری میں ملتے ہیں۔ دیگر کتب میں بھی بکھرے ہوئے حصے موجود ہیں مگر وہ کچھ زیادہ نہیں۔


حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ Mustafa al-Suqa, Ibrahim al-Ibyari and Abdu l-Hafidh Shalabi, Tahqiq Kitab Sirah an-Nabawiyyah, Dar Ihya al-Turath, p. 20
  2. ^ Ibid, p. 20