نور خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
Air Marshal

ملک نور خان
Noor khan.jpg
LGen (AM) Nur Khan, 1923–2011.
8ویں گورنر مغربی پاکستان
عہدہ سنبھالا
1 ستمبر، 1969 – 1 فروری، 1970
صدر جنرل یحییٰ خان
وزیر اعظم نور الامین
نائب صدر نور الامین
نائب وزیر اعظم نور الامین
پیشرو لیفٹیننٹ جنرل ٹکا خان
جانشین لیفٹیننٹ جنرل عتیق الرحمن
6واں ائیر فورس کمانڈر ان چیف
عہدہ سنبھالا
جولائی 23, 1965 – اگست 31, 1969
جانشین Air Marshal Rahim Khan
پیشرو ائیر مارشل اصغر خان
ذاتی تفصیلات
پیدائش Malick Noor Khan
2 فروری 1923(1923-02-02)
چکوال، برطانوی پنجاب، برطانوی ہندوستان (اب پاکستان)
وفات 15 دسمبر 2011(2011-12-15) (عمر  88 سال)
شہریت British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہندوستان
Flag of Pakistan.svg پاکستان
قومیت ہندوستانی (1923–1947)
پاکستانی (1947–2011)
سیاسی جماعت کوئی نہیں (عسکری گورنری)
رہائش ائیر ہیڈکوارٹر (اے ایچ کیو)، تلہ گنگ
مادر علمی ہندوستانی فوجی اکادمی
ذریعہ معاش Military administrator
کابینہ جنرل یحیی خان ایڈمنسٹریشن
مذہب اسلام
اعزازات ہلال جرأت
ہلال شجاعت
ہلال قائد اعظم
نشان پاکستان
فوجی خدمات
عرفیت General Khan
تابعداری British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہندوستان
Flag of Pakistan.svg پاکستان (1947–1971)
سروس/شاخ Indian Triservices Crest.jpg بھارتی فضائیہ
 پاکستان فضائیہ
سالہائے خدمات 1941–1971
عہدہ US-O9 insignia.svg ائیر مارشل (لیفٹیننٹ جنرل)
کماندز چکلالہ ائیر بیس
پاکستان ائیر فورس اکیڈمی
اسسٹنٹ چیف (ائیر آپریشن)
پشاورائیر بیس
Masroor Air Base
No.1 Tactical Operations Group
پی آئی اے
Commander-in-Chief Pakistan Air Force
لڑائیاں/جنگیں World war II (Burmese air operations)|
پاک بھارت جنگ 1947
پاک بھارت جنگ 1965
پاک بھارت جنگ 1971
ایڈمنسٹریٹر صدر پاکستان ہاکی فیڈریشن
صدر پاکستان کرکٹ بورڈ

پاکستان فضائیہ کے ائیر مارشل نور خان 1941ء سے 1971ء تک فوج میں خدمت انجام دی اور فضائیہ کے سربراہ رہے۔ 1965ء کی جنگ میں دادِ شجاعت دی۔ بعد میں کئی منتظمی عہدوں پر فائز رہ کر ان شعبوں میں اپنا لوہا منوایا۔ ملک نور خان کا تعلق تلہ گنگ کے گاؤں ٹمن سے ہے۔[1]

1965 کی جنگ میں کردار[ترمیم]

ائیر مارشل نور خان سے پہلے ائیرمارشل اصغر خان پاک فضائیہ کے سربراہ تھے۔ انہوں نے پاک فوج کے طیارے اور سازوسامان حاصل کرنے کی بھرپور اور کامیاب کوشش کی۔ انہوں نے پائلٹوں کی تربیت کے لیے بھی بہت محنت کی لیکن اپریل، مئی 1965 میں پاکستان اور بھارت کے درمیان میں رن آف کچھ کے تنازعے پر انہوں نے بھارتی فضائیہ کے سربراہ کو فون کر کے دونوں ممالک کی ائر فورسز کو اس تنازعے سے دور رکھنے کا اہتمام کیا۔ بادی النظر میں یہ اقدام معمولی نظر آتا ہے لیکن اس سے فضائیہ کے مورال پر بہر طور منفی اثرات مرتب ہوئے۔ اصغر خان کے اس طرز عمل پر 23 جولائی 1965 کو آنے والے ائر چیف نور خان نے شدید تنقید کی تھی اور فوری طور فضائیہ کو الرٹ پر ڈال کر کشمیر اور ملحقہ علاقوں میں پروازیں شروع کرادی تھیں۔ جس سے پاک فضایہ جنگ کے لیے تیار ہو گئی اور اس نے جنگ میں بہترین مہارت کا ثبوت دیا۔

وفات[ترمیم]

انہوں نے 12 دسمبر 2011ء کو وفات پائی۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. صاد شفقت (18 دسمبر 2011ء)۔ "The air-force man who got Pakistan cricket soaring"۔ espn۔ 
  2. "Malik Nur Khan"۔ ڈان۔ 17 دسمبر 2011ء۔ اخذ کردہ بتاریخ 17 دسمبر 2011۔