گلگت بلتستان میں سیاحت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
بوریت جھیل

گلگت بلتستان پاکستان کی ایک انتظامی اکائی ہے جو ملک کے شمالی حصے میں واقع ہے۔گلگت بلتستان پاکستان کے خوبصورت ترین علاقوں میں سے ایک ہے جو زیادہ تر پہاڑی علاقہ ہے۔ گلگت بلتستان پاکستان میں سیاحت کا مرکز ہے خاص کر دنیا کا دوسرا بڑا پہاڑ کے ٹو بھی اسی خطے میں واقع ہے۔ اس کے علاوہ اس خطے میں مختلف جھیل،پہاڑ،وادیاں،ندیاں ،کھیل کے میدان،تاریخی عمارتیں،وغیرہ موجود ہیں۔

تاریخ[ترمیم]

گلگت بلتستان کے متعلق کہا جاتا ہے کہ فاہیانگ نامے ایک چینی سیاح گلگت بلتستان آیا تو گلگت بلتستان میں اس وقت پلولا نامی ریاست قائم تھی جو پورے گلگت بلتستان پے پھیلی ہوئی تھی اور اس کا صدر مقام موجودہ خپلو کا علاقہ ہوا کرتا تھا، پھر ساتھویں صدی میں اس کے بعض حصے تبت کی شاہی حکومت میں چلے گئے پھر 9 صدی میں یہ مقامی ریاستوں میں بٹ گئی جن میں سکردو کے مقپون اور ہنزہ کے ترکھان خاندان مشہور ہیں مقپون خاندان کے راجاؤں نے بلتستان سمیت لداخ،گلگت اور چترال تک کے علاقوں پر حکومت کی احمد شاہ مقپون اس خاندان کا آخری راجا تھا۔1947ء سے قبل گلگت بلتستان ریاست جموں و کشمیر کا حصہ رہا۔ بعد میں یہ بھارت کے زیر تسلط بھی کچھ ایام تک رہا لیکن پاک بھارت افواج میں جھڑپ کے بعد خطے کا کمان پاکستان نے سنبھال لیا۔

اہم سیاحی مقامات[ترمیم]

کچورہ جھیل
دیوسائی پارک
بلتورو
قلعہ التیت
بلتیت قلعہ

مزید[ترمیم]